بریکنگ نیوز

گلوکار لکی علی کی کرناٹک میں موجود زمین پر قبضہ، آئی اے ایس افسر کے شوہر پر الزام عائد

Source: S.O. News Service | Published on 5th December 2022, 10:31 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 5؍دسمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) مشہور گلوکار لکی علی نے کرناٹک کے ڈیجی اور آئی جی پی پروین سود سے اراضی مافیہ کے ذریعہ ان کے کھیت پر مبینہ طور سے قبضہ کیے جانے کی شکایت کی ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ اس قبضہ معاملے میں ریاست کی آئی اے ایس افسر روہنی سندھوری کے شوہر شامل ہیں۔ شکایت کے بعد پولیس نے جانچ شروع کر دی ہے۔ لکی علی کا الزام ہے کہ روہنی سندھوری اس وقت ہندو مذہبی اداروں اور مذہبی امور کے محکمہ کی کمشنر کی شکل میں کام کر رہی ہیں، وہ اراضی مافیا کی مدد کر رہی ہیں اور ریاستی وسائل کا غلط استعمال کر رہی ہیں۔

لکی علی نے اپنی شکایت میں کہا کہ ’’میں مقصود محمود علی ہوں۔ آنجہانی اداکار اور کامیڈین محمود علی کا بیٹا۔ میں اس وقت کام کے سلسلے میں دبئی میں ہوں۔ میرا کھیت کینچیناہلی یلہنکا میں واقع ہے۔ اس میں سدھیر ریڈی اور مدھو ریڈی کے ذریعہ غیر قانونی طور سے بنگلور اراضی مافیا کے ذریعہ قبضہ کیا جا رہا ہے، ان کی بیوی بھی اس میں شامل ہیں جو ان کی مدد کر رہی ہیں، ان کا نام روہنی سندھوری ہے۔‘‘

اپنی شکایت میں لکی علی نے مزید کہا ہے کہ ’’میرے قانونی مشیر نے مجھے مطلع کیا ہے کہ انھوں نے ملکیت پر قبضہ کر رکھا ہے۔ ہم گزشتہ 50 سالوں سے وہاں رہ رہے ہیں۔ میں دبئی جانے سے پہلے آپ سے ملنا چاہتا تھا، لیکن چونکہ آپ موجود نہیں تھے اس لیے ہم نے جیوڈیشیل اے سی پی کو شکایت درج کی ہے۔‘‘ وہ آگے کہتے ہیں ’’مجھے ابھی تک کوئی مثبت رد عمل نہیں ملا ہے۔ میرا کنبہ اور چھوٹے بچے وہاں تنہا ہیں۔ مجھے مقامی پولیس سے کوئی مدد نہیں مل رہی ہے، جو تجاوزات کرنے والوں کی حمایت کر رہے ہیں اور ہماری حالت اور ہماری زمین کی قانونی حالت کے تئیں بے فکر ہیں۔

لکی علی نے اپنے سوشل میڈیا اکاؤنٹ پر شکایت کی کاپی پوسٹ کی ہے اور اسے توجہ میں لانے کے لیے کہا ہے۔ قابل ذکر ہے کہ روہنی سندھوری کو ایک ایماندار افسر کی شکل میں جانا جاتا ہے اور وہ کئی طاقتور سیاسی لیڈروں کا سامنا کرنے کے لیے سرخیاں بٹور چکی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹکا اردو چلڈرنس اکادمی کا یادگار مشاعرہ

سہ روزہ جشن اطفال کی اگلی کڑی کل ہند مشاعرہ ۲۶؍جنوری ۲۰۲۳ء؁ کی شب میں منعقد ہوا۔ لطف کی بات یہ ہوئی کہ مشاعرے کے باضابطہ آغاز سے پہلے ایک افتتاحی نشست ہوئی جس میں پروفیسر ارتضیٰ کریم، پروفیسر اعجاز علی ارشد، پروفیسر دبیر احمد، پروفیسر مشتاق عالم قادری، ڈاکٹر مشتاق حیدر، ...

مینگلور: منشیات کے استعمال کے کیس میں میڈیکل کالج سے وابستہ 13 ملزم کو عدالت سے ملی ضمانت

میڈیکل کالجوں سے وابستہ جن ڈاکٹروں اور طلبہ کو سٹی پولیس نے گانجہ نوشی / فروشی کے الزام میں گرفتار کیا تھا ان میں سے 13 ملزمین کو پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنس جج اور این ڈی پی ایس ایکٹ میں گرفتار کیے گئے ملزمین کے لئے خصوصی جج راگھویندرا ایم جوشی نے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم سنایا  ہے۔

منڈیا میں گو بیک آراشوک: بی جے پی کارکنان کی برہمی میں ہورہا ہے اضافہ

ریاست کرناٹک میں اسمبلی انتخابات کے دن جیسے جیسے قریب آرہےہیں، بی جے پی کے اندر ہی کارکنان میں بی جے کے ارکان اسمبلی اور وزراء کے خلاف ناراضگی میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ تازہ واردات منڈیا میں پیش آئی جہاں کابینی وزیر آراشوک کے خلاف گو بیک کی تحریریں دیکھی گئی ہیں۔ میڈیا میں ...

کرناٹک کے وزیراعلیٰ بومئی نے مسلمانوں کے تعلق سے کہا؛ بی جے پی کے اتنے برے دن نہیں کہ مسلمانوں کی خوشامد کرے

وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے مسلمانوں کے تئیں اپنے تعصب کا ایک بار پھر کھل کر اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی کو مسلمانوں کی خوشامد کرنے کی کوئی ضرورت نہیں - مسلمانوں کو سرپر بٹھا کر ناچنے کا کام کانگریس کر رہی ہے وہ چاہے تو اس کام کو جاری رکھے، بی جے پی یہ سب کرنے والی نہیں -