بریکنگ نیوز

مرکزی حکومت کی طرف سے دلت، پسماندہ اور اقلیتی طلباء کا اسکالرشپ ختم کیا جانا انہیں تعلیمی حقوق سے بتدریج محروم کرنے کی حکمت عملی ہے: ایس ڈ ی پی آئی

Source: S.O. News Service | Published on 4th December 2022, 8:42 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بنگلورو،4؍دسمبر(ایس او نیوز؍پریس ریلیز) سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کرناٹک کے ریاستی صدر عبدالمجید نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں کہا ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے تعلیمی سال 23۔2022سے ایس سی، ایس ٹی، پسماندہ طبقات، اور اقلیتی برادریوں سے تعلق رکھنے والے پہلی سے آٹھویں جماعت کے تمام طلباء کو کوئی اسکالرشپ ختم کردیا گیا ہے۔ مودی کی قیادت والی بی جے پی حکومت کا طلباء کے لیے اسکالرشپ کی منسوخی کا یہ اقدام ان کمیونٹیوں کو بتدریج تعلیمی سہولیات اور حقوق سے محروم کرنے کی حکمت عملی کا حصہ ہے۔

ہندوستان تعلیم پر سب سے کم خرچ کرنے والے ممالک میں شامل ہے۔ حکومت کی طرف سے قائم کردہ NEP نے تعلیم پر جی ڈی پی کا کم از کم 6 فیصدخرچ کرنے کی سفارش کی ہے۔ عبدالمجید نے الزام لگایا کہ یہ حکومت تعلیم کے شعبے کو اس کا نصف بھی فراہم نہیں کر رہی ہے۔سال 2019/20میں صرف 2.8 فیصداور سال 2020/21 میں 3.1 فیصد اورسال 2021/22 میں 3.1 فیصد تعلیم کے لیے مختص ہیں۔ اپنے بیان میں عبدالمجیدنے کہا کہ ایس ڈی پی آئی پارٹی اس بات کی سختی سے مخالفت کرتی ہے کہ ضرورت مند بچوں کے ساتھ ناانصافی کی جا رہی ہے اور ان سے اسکالرشپ چھین لیے جا رہے ہیں۔ ایس ڈی پی آئی ریاستی صدر عبدالمجید نے کہا ہے کہ مودی حکومت جو اپنے جھوٹ کو پروپیگنڈہ کرنے کے لیے ہزاروں کروڑ خرچ کر رہی ہے، اس قسم کی دھوکہ دہی میں ملوث نہ ہو اور تمام درجات کے بچوں کے لیے فوری طور پر اسکالرشپ جاری کرے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کپڑا بینک کے زیرانتظام منعقد ہوا دانتوں کےمفت علاج کا کیمپ؛ 300 لوگوں نے کیا استفادہ

ھیل ہیومینٹی سروس المعروف کپڑا بینک کے زیرانتظام بھٹکل کی پرانی شفاء نرسنگ ہوم کی عمارت میں آج اتوار کو دانتوں کے علاج کا مفت کیمپ منعقد ہوا جس میں 300 سے زائد لوگوں نے شرکت کرتے ہوئے اپنے اپنے دانتوں کا علاج معالجہ کرایا۔

بھٹکل: آسارکیری مندر میں شادی کی رسم ادا کرنے سے برہمن پجاری نے کیا انکار؛ نامدھاری سماج کے نائب صدر نے کیا تشویش کا اظہار

ہم 21ویں صدی  میں ہیں لیکن 18ویں اور19ویں صدی کی  طرح دھرم اور ذات کے نام پر  ظلم وہراسانی کا سلسلہ  آج بھی  جاری ہے۔ 21ویں صد ی میں بھی اسی ذات پات اور چھوت چھات کا نظام ہرجگہ چھایا ہواہے۔ اس کےلئے آسارکیری کی نچل مکی شری وینکٹ رمن مندر اس کا منہ بولتا  ثبوت ہے، جہاں ں  شادی کی ...

بھٹکل : آسارکیری میں تعمیر کردہ مہادوار کا رکن اسمبلی کے ہاتھوں افتتاح

تعلقہ کی مشہور آسارکیری نامدھاری سماج کی نچل مکی شری ترومل وینکٹ رمن مندر تجدید کردہ مورتی کی نصب کاری ، پالکی مہوتسومذہبی پروگرام سمیت  رکن اسمبلی سنیل کی جانب سے مندر کے لئے تعمیر کردہ مہا دوار(صدردروازہ) کی افتتاحی تقریب کاانعقاد ہوا۔  شری رام اکشھتر کے شری برہمانند ...

بھٹکل میں دس سال مکمل ہونے کے باوجود نیشنل ہائی وے کام نامکمل؛ سرکل پر سے فلائی اوور غائب؛ این ایچ ڈیولپمنٹ کمیٹی نے رکھے مطالبات؛ نہ ماننے کی صورت میں زبردست احتجاج کادیا انتباہ

  بھٹکل  میں دس سال سے جاری نیشنل ہائی وے فورلائن  کا کام مکمل ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر طرف کام کو ادھورا چھوڑا گیا ہے جس سے ہائی وے  کی خستہ حالی ظاہر ہورہی ہے۔ ایسے میں پتہ چلا ہے کہ ہائی وے کو تعمیر کرنے والی کنٹریکٹ کمپنی آئی آر بی نے  شمس الدین سرکل پر  جو فلائی اوور ...

انجمن پی یوکالج فورویمن بھٹکل میں چوہترواں جشن ِیوم جمہوریہ

26 جنوری بروز جمعرات صبح  آٹھ بجے انجمن پی یو کالج فار ویمن کے خدیجہ سید علی کیمپس  کے احاطے میں بدستِ پرنسپل ڈاکٹر فرزانہ محتشم کے رسمِ پرچم کشائی کی تقریب کاانعقاد کیا گیا۔ اس موقع پرطالبات سے خطاب کرتے ہوئے فرزانہ محتشم نے بتایا کہ 26 جنوری کی اہمیت یہ ہے کہ حکومت ہند ایکٹ ...

کرناٹکا اردو چلڈرنس اکادمی کا یادگار مشاعرہ

سہ روزہ جشن اطفال کی اگلی کڑی کل ہند مشاعرہ ۲۶؍جنوری ۲۰۲۳ء؁ کی شب میں منعقد ہوا۔ لطف کی بات یہ ہوئی کہ مشاعرے کے باضابطہ آغاز سے پہلے ایک افتتاحی نشست ہوئی جس میں پروفیسر ارتضیٰ کریم، پروفیسر اعجاز علی ارشد، پروفیسر دبیر احمد، پروفیسر مشتاق عالم قادری، ڈاکٹر مشتاق حیدر، ...

مینگلور: منشیات کے استعمال کے کیس میں میڈیکل کالج سے وابستہ 13 ملزم کو عدالت سے ملی ضمانت

میڈیکل کالجوں سے وابستہ جن ڈاکٹروں اور طلبہ کو سٹی پولیس نے گانجہ نوشی / فروشی کے الزام میں گرفتار کیا تھا ان میں سے 13 ملزمین کو پرنسپل ڈسٹرکٹ اینڈ سیشنس جج اور این ڈی پی ایس ایکٹ میں گرفتار کیے گئے ملزمین کے لئے خصوصی جج راگھویندرا ایم جوشی نے ضمانت پر رہا کرنے کا حکم سنایا  ہے۔

منڈیا میں گو بیک آراشوک: بی جے پی کارکنان کی برہمی میں ہورہا ہے اضافہ

ریاست کرناٹک میں اسمبلی انتخابات کے دن جیسے جیسے قریب آرہےہیں، بی جے پی کے اندر ہی کارکنان میں بی جے کے ارکان اسمبلی اور وزراء کے خلاف ناراضگی میں اضافہ دیکھا جارہا ہے۔ تازہ واردات منڈیا میں پیش آئی جہاں کابینی وزیر آراشوک کے خلاف گو بیک کی تحریریں دیکھی گئی ہیں۔ میڈیا میں ...

کرناٹک کے وزیراعلیٰ بومئی نے مسلمانوں کے تعلق سے کہا؛ بی جے پی کے اتنے برے دن نہیں کہ مسلمانوں کی خوشامد کرے

وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے مسلمانوں کے تئیں اپنے تعصب کا ایک بار پھر کھل کر اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بی جے پی کو مسلمانوں کی خوشامد کرنے کی کوئی ضرورت نہیں - مسلمانوں کو سرپر بٹھا کر ناچنے کا کام کانگریس کر رہی ہے وہ چاہے تو اس کام کو جاری رکھے، بی جے پی یہ سب کرنے والی نہیں -