بھٹکل پولیس گراونڈ میں راستے پر لگے بیریکیڈس - اسسٹنٹ کمشنر نے دیا 'جوں کی توں حالت' برقرار رکھنے کا حکم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th June 2024, 8:23 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 14 / جون (ایس او نیوز) پولیس میدان سے گزرنے والے عام پیدل راستے پر پولیس کی طرف سے لگائی گئی رکاوٹوں کے سلسلے میں بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر ڈاکٹر نئینا نے اس زمین کا سروے مکمل ہونے تک 'جوں کی توں حالت' برقرار رکھنے کے احکام جاری کیے ہیں۔ 

اسسٹنٹ کمشنر کے دفتر میں اس مسئلے پر بات چیت کے لئے منعقدہ میٹنگ میں جالی پٹن پنچایت کے رکن رمیش نائک نے اپنی بات رکھتے ہوئے کہا :" گزشتہ چالیس سال سے اسی راستے پر عام لوگوں کا آنا جانا رہا ہے۔ اب اچانک اس راستے کو بند کر دینا قابل مذمت ہے۔ اس علاقے میں ایمبولینس سمیت چھوٹی بڑی گاڑیوں کے گزرنے کا یہ واحد راستہ ہے جسے پولیس والوں نے بند کر دیا ہے۔ یہ ایک غلط اقدام ہے۔ ڈی پی کالونی، ہورلیسال اور کڈوین کٹَے گرام میں رہنے والے عام لوگوں کے علاوہ اسکولی بچوں کو آنے جانے میں اس راستے کی وجہ سے آسانی ہوتی ہے۔ اس لئے اس تنازعہ کا حل نکلنے تک وہاں سے بیریکیڈس ہٹا دئے جائیں۔"

 اس مطالبے کو قبول نہ کرتے ہوئے اے سی ڈاکٹر نئینا نے کہا کہ "پولیس کا دعویٰ ہے کہ یہ ان کی جگہ ہے ۔ پولیس کوارٹرس کی تعمیر کے لئے محکمہ جنگلات کی طرف سے پانچ ایکڑ جگہ منظور بھی کی گئی ہے۔ اس معاملے پر فوری فیصلہ کرنا ممکن نہیں ہے ۔ اس لئے اس جگہ کا سروے کروانے اور اس کی ملکیت طے ہو جانے کے بعد ہی فیصلہ کیا جائے گا۔ اُس وقت تک 'جوں کی توں حالت' برقرار رکھنا ہوگا۔"

 اے سی کی اس بات سے اتفاق نہ کرتے ہوئے جالی پٹن پنچایت رکن شاہینہ شیخ اور اس علاقے کے لیڈر ناگراج نائک، ناگیندرا نائک وغیرہ نے کہا کہ "عوام کے مسائل کو حل کرنے کے بجائے پولیس کے دباو میں اسسٹنٹ کمشنر کی طرف سے ایسی بات کہنا صحیح نہیں ہے۔ ہم لوگ اس جگہ پر کوئی نیا راستہ نہیں مانگ رہے ہیں۔ بلکہ ایک زمانے سے آمد و رفت کے لئے استعمال کیے جا رہے راستے کو بند نہ کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔ اگر محکمہ پولیس اور محکمہ مالگزاری اس پر راضی نہیں ہوتے تو پھر ہمارے لئے عدالت کا دروازہ کھٹکھٹانے کے سوا کوئی چارہ نہیں رہے گا۔"

 اس میٹنگ میں بھٹکل ڈی وائی ایس پی مہیش، بھٹکل آر ایف او شرت شیٹی، جالی پٹن پنچایت چیف آفیسر منجپّا موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

دکشن کنڑا میں 83 مقامات پر بج رہی خطرے کی گھنٹی - موسلا دھار برسات سے کھسک سکتی ہیں چٹانیں 

کئی دنوں سے چل رہی مسلسل برسات کی وجہ سے جگہ جگہ چٹانیں کھسکنے کے واقعات پیش آ رہے ہیں ۔ اس وقت دکشن کنڑا میں 83 ایسے مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں چٹانیں کھسکنے کا خطرہ سر پر منڈلا رہا ہے ۔    

 انکولہ میں زمین کھسکنے کا معاملہ : ضلع انتظامیہ نے کی ملبے میں ٹرک دبے ہونے کی تصدیق؛ کیا زندہ برآمد ہوگا لاری ڈرائیور ؟

انکولہ تعلقہ کے شیرور میں پیش آئے چٹان کھسکنے کے المیہ کے بارے میں مزید کچھ اہم باتیں سامنے آ رہی ہیں، جس سے یقین ہوگیا ہے کہ ملبے کے اندر ایک بینز ٹرک دبا ہے ۔ اس وجہ سے ملبے کے اندر ٹرک کا لا پتہ ڈرائیور بھی موجود ہونے کا قوی امکان ہے۔

کمٹہ تعلقہ میں بھاری برسات کے بعد چٹان کھسک گئی  

اتر کنڑا میں موسلا دھار برسات کے نتیجے میں انکولہ تعلقہ کے  شیرور میں بڑے پیمانے پر چٹان کھسکنے کا جان لیوا حادثہ پیش آنے کے بعد اب کمٹہ تعلقہ میں الورومٹھ  کے قریب بھی ایک بڑی چٹان کھسک گئی ۔ اس سے کمٹہ سداپور شاہراہ مکمل طور پر بند ہوگئی ہے ۔

اڈپی میں ڈینگی کے بڑھتے معاملے - ڈاکٹری نسخے کے بغیر پیراسیٹامول گولی کی فروخت پر لگی پابندی

ضلع میں ڈینگی اور دوسرے متعدی امراض میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور زیادہ تر مریض خود ہی اپنا علاج (سیلف میڈیکیشن) کرنے لگے ہیں ۔ اس کی وجہ سے امراض کی نامناسب تشخیص اور نامکمل علاج کا سلسلہ چل پڑا ہے جس کا نتیجہ کبھی کبھی جان لیوا ثابت ہوتا ہے ۔