اڈپی: مسلمانوں کے خلاف زہر اگلنے والے متالک اب ہوگئے بی جے پی کے خلاف؛ ریاستی حکومت کو گلی گلی میں بے عزت کرنے کی دی دھمکی

Source: S.O. News Service | Published on 21st September 2022, 10:01 PM | ریاستی خبریں | ساحلی خبریں |

اڈپی،21 / ستمبر (ایس او نیوز) مسلمانوں کے خلاف زہر اگلنے میں بدنام اور اشتعال انگیز بیانات دینے میں ماہر، شری رام سینا کے چیف پرمود متالک نے اب ریاست کی بی جے پی حکومت کی مخالفت کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ میڈیا میں آئی ایک رپورٹ سے پتہ چلا ہے کہ کلبرگی میں گنیش اتسوا کے دوران اپنے داخلے پر پابندی لگانے سے ناراض پرمود متالک نے ریاستی بی جے پی حکومت کے خلاف اپنی برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ  میں  گلی گلی اور گھر گھر جا کر اس حکومت کو بے عزت کرکے رکھ دوں گا۔
    
پرمود متالک نے کہا کہ میرے کلبرگی میں داخلے پر پابندی لگانے کا حکم ضلع ڈپٹی کمشنر کا نہیں بلکہ حکومت کا ہے اور حکومت کا مطلب بی جے پی ہے ۔ بار بار مجھ پر پابندی لگانا بی جے پی کو زیب نہیں دیتا ۔ انہوں نے بی جے پی قیادت کو مخاطب کرکے کہا : تمہیں سمجھنا چاہیے کہ تم لوگ یہ پابندی مجھ پر نہیں بلکہ ہندوتوا پر پابندی لگا رہے ہو، جہاں ہندو طاقتوں کا مجمع لگے وہاں ان کے لیڈر کو روکنے کا کام کر رہے ہو ۔ یہ غیر آئینی رویہ ہے اور کسی کی آزادی چھیننے والی بات ہے ۔ متالک نے کہا کہ تمہیں نہیں بھولنا چاہیے کہ کانگریس کے زمانے میں جب مجھ پر پابندی لگی تھی تو تب تم لوگوں نے ہی اس کی مخالفت کی تھی۔ 
    
متالک نے بتایاکہ انہیں پروین نیٹارو کے گھر پر تعزیت کے لئے جانا تھا مگر روکا گیا ۔ گنگولی میں اجتماعی پوجا میں شرکت کی اجازت نہیں دی گئی ۔متالک نے بتایا کہ مجھے کہا جاتا ہے کہ میں بولتا ہوں تو فساد ہوتا ہے۔ فساد ہوتا ہے تو مجھ پر کیس داخل کرکے مجھے جیل بھیج دو ۔ اگر تم سے ہوسکے تو فساد کرنے والوں کو جیلوں میں ٹھونسو ۔ تم لوگوں کو معلوم ہونا چاہیے کہ ہندووں سے کبھی بھی فساد نہیں ہوتا ۔ بار بار مجھ پر پابندیاں عائد کرکے ناٹک کر رہے ہو۔  پرمود متالک نے پوچھا : کیا اپ مسلمانوں کو ، دشمنوں کو اور فسادیوں کو میرے اوپر حاوی ہونے دیں گے؟ انہوں نے کہا کہ ہندووں کا قتل ہوتا ہے تو تمہیں ہندو تنظمیوں کی پشت پناہی کرنی چاہیے اور انہیں تقویت دینا چاہیے۔ مزید کہا کہ ملناڈو کا علاقہ دہشت گردوں کا اڈہ بن رہا ہے ۔ شیموگہ کا مطلب ہندووں کے تحفظ کا قلعہ ہے ، لیکن اب یہ قلعہ کمزور اور خستہ ہوتا جا رہا ہے۔ حکومت کو اس پر چوکنا ہونا چاہیے اور اس ضمن میں سخت قدم اٹھانا چاہیے۔ ورنہ بڑی خطرناک صورتحال پیدا ہوجائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور و کے دس روزہ دسہرہ تقریبات کا افتتاح کیا

دوماہ کی تیاریوں کے بعد آج بروز پیر صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور کے چامنڈی پہاڑ پر دس روزہ دسہرہ تقریبات کا چامنڈیشوری دیوی کی مورتی پر پھول نچھاور کرکے افتتاح کیا۔ پہلے صدر جمہوریہ نے چامنڈیشوری دیوی کے درشن کئے اور اس مندر کی تاریخ کے تعلق سے تفصیل سے جانکاری حاصل کی۔

ذہنی دباؤ بیسویں صدی کا ایک مہلک مرض؛ آئیٹا گلبرگہ کے ورک شاپ سے ڈاکٹر عرفان مہا گا وی کا خطاب

نئے دور کی شدید ترین بیماریوں میں ذہنی دباؤ اور اس سے پیدا ہونے والے اثرات کو مہلک امراض میں شمار کیا جاتا ہے ۔ روز مرہ کی مشینی زندگی میں ذہنی دباؤ  میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے ۔ لیکن اس کو کیسے کم کیا جائے اس پر غور کر نے اور اس سلسلے میں کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔

پی ایف آئی پر ای ڈی اور این آئی اے کے کریک ڈاون کے بعد ایس ڈی پی آئی نے کہا؛ ایجنسیوں نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا

 سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کرناٹک یونٹ نے بنگلور میں اپنے ریاستی مرکزی دفتر میں ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ای ڈی اور این آئی اے نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا بلکہ صرف پاپولرفرنٹ آف انڈیا کو ہی نشانہ بنایا ...

بھٹکل: ایس پی کے تبادلے کی افواہوں کو ڈسٹرکٹ انچارج منسڑ نے دی مزید ہوا، کہا؛ افسران کے تبادلے کوئی نئی بات نہیں!

ایماندار افسر کے طورپر مشہور اترکنڑا ضلع ایس پی ڈاکٹر سمن پنیکر کے تبادلے کی افواہوں کو ہوا دیتےہوئے ضلع نگراں کار وزیر پجاری نے کہاکہ افسران کے تبادلے کوئی نئی بات تو نہیں ہے۔

بھٹکل: معاوضہ تقسیم میں تفریق پر رکن اسمبلی کا سخت اعتراض : وزیر شری نواس پجاری نے افسران کو کی فوری کارروائی کی تاکید

گذشتہ ماہ 2اگست کو برسی موسلا دھاربارش سےنقصان اٹھانے والےمتاثرین میں امداد تقسیم کےدوران تفریق کی گئی ہے اور غریبوں کو امداد فراہم کرنےمیں افسران پس و پیش کئے جانے پر رکن اسمبلی سنیل نائک نے سخت اعتراض جتایا ۔

ہلیال:  آوارہ کتوں کو پکڑنے کا معاملہ - چیف آفیسر کے خلاف کیس درج 

آوارہ کتوں کو پکڑ کر جنگل میں چھوڑنا ہلیال ٹی ایم سی کے چیف آفیسر پرشورام شیندے کو مہنگا پڑا کیوںکہ اس کارروائی کو ظالمانہ انداز میں انجام دئے جانے کا الزام لگاَتے ہوئے چیف آفیسر کے خلاف پولیس میں معاملہ درج کیا گیا ہے ۔