اُڈپی ضلع کے کارکلا میں پیش آیا غیر اخلاقی پولیس گری کا تازہ معاملہ؛ ڈاکٹروں اور پروفیسروں کا راستہ روک کر کیا گیا ہراساں، پانچ گرفتار

Source: S.O. News Service | Published on 2nd August 2023, 9:21 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

اُڈپی،2/ اگست (ایس او نیوز) ریاستی وزیر اعلیٰ اور وزیر داخلہ کی طرف سے غیراخلاقی پولیس گری کے خلاف سخت کارروائی کی وارننگ اور پولیس کی جانب سے بروقت اقدام کیے جانے کے باوجود ساحلی اضلاع اڈپی اور دکشن کنڑا میں ہندو شدت پسندوں کی طرف سے غنڈہ گردانہ سرگرمیاں رکنے کا نام نہیں لے رہی ہیں۔ 
    
غیر اخلاقی پولیس گری کا تازہ معاملہ کارکلا سے پیش آیا ہے جہاں منگلورو سے تعلق رکھنے والی ڈاکٹروں اور پروفیسروں کی کار کا پیچھا کرنے کے بعد انہیں روکنے اور ہراساں کرنے والے پانچ ملزمین کو پولیس  نے گرفتار کرلیا ہے۔
    
ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق گرفتار شدہ ملزمین کے نام سنتوش نندالکے، کارتیک پجاری، سنیل مولیا میار، سندیپ پجاری میار اور سچیت سفالیگاہیں، یہ سب ہندو جاگرن ویدیکے (ایچ جے وی) کے کارکنان ہیں۔ بتایا جاتا ہے کہ 29 جولائی کے دن ان ملزمین نے اس کار کا پیچھا کیا جس میں چار ڈاکٹرس اور دو خاتون پروفیسرس ایک ساتھ سفر کر رہے تھے۔ پھر کونٹلپاڈی کے پاس کار کا راستہ روک کر گالیاں بکنے کے ساتھ دھمکیاں دینے لگے۔ کار میں موجود خواتین نے فوراً پولیس کنڑول روم کو اس معاملے کی اطلاع دی تو ڈی وائی ایس پی اروند کلگجّے، سرکل انسپکٹر ناگراج اور کارکلا دیہی پولیس کے افسران کی ٹیم نے موقع پر پہنچ کر ملزمین کو گرفتار کر لیا۔
    
پولیس نے بتایا کہ ایچ جے وی کے کارکنان نے منگلورو سے سرینگیری جا کر واپس لوٹنے والی کار میں ہندو خواتین کے ساتھ مسلم مرد ہونے کا شبہ کرتے ہوئے ان کا پیچھا کیا تھا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ماہی گیر تنظیموں کا متفقہ فیصلہ - کاسرکوڈ میں تجارتی بندرگاہ کے خلاف ہوگی قانونی جد و جہد

) شہر کے سینٹ جوزیف ہال میں ماہی گیر تنظیموں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور کراولی ماہی گیر مزدوروں کی تنظیم کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں کاسرکوڈ میں مجوزہ نجی تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف تنظیمی اور قانونی طریقے سے جد وجہد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

بھٹکل میں ووٹر بیداری مہم؛ سرکاری افسران نے طلبہ کے ساتھ نکالی ریلی؛ سو فیصد ووٹنگ کویقینی بنانے کی کوششیں

بھٹکل میں  صد فیصد ووٹنگ کا ٹارگٹ لے کر   اُترکنڑاضلعی انتظامیہ،  ضلع پنچایت، بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور تعلقہ پنچایت کے زیراہتمام  بھٹکل کے سرکاری آفسران  نے کالج طلبہ کو ساتھ لے کر  ووٹنگ بیداری مہم  کے تحت شاندار ریلی نکالی اور عوام پر زور دیا کہ وہ  کسی بھی صورت میں اپنی ...

بھٹکل میں مسلم رپورٹروں کی طرف سے غیر مسلم رپورٹروں کوپیش کی گئی عید الفطر کی مٹھائیاں

ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن   بھٹکل  کے مسلم رپورٹروں کی طرف سے بھٹکل کے غیر مسلم رپورٹروں کو عید الفطر کی مناسبت سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور اُنہیں عید کے تعلق سے  معلومات فراہم کی گئیں۔

بی جے پی نے کانگریس ایم ایل اے کو 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی؛ سدارامیا کا الزام

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے ہفتہ کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس کے اراکین اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے کے لیے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کرکے 'آپریشن لوٹس' کے ذریعے انکی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں ملوث ہے۔

لوک سبھا انتخاب 2024: کرناٹک میں کانگریس کو حاصل کرنے کے لیے بہت کچھ ہے

کیا بی جے پی اس مرتبہ اپنی 2019 لوک سبھا انتخاب والی کارکردگی دہرا سکتی ہے؟ لگتا تو نہیں ہے۔ اس کی دو بڑی وجوہات ہیں۔ اول، ریاست میں کانگریس کی حکومت ہے، اور دوئم بی جے پی اندرونی لڑائی سے نبرد آزما ہے۔ اس کے مقابلے میں کانگریس زیادہ متحد اور پرعزم نظر آ رہی ہے اور اسے بھروسہ ہے ...

تعلیمی میدان میں سرفہرست دکشن کنڑا اور اُڈپی ضلع کی کامیابی کا راز کیا ہے؟

ریاست میں جب پی یوسی اور ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیاجاتا ہے تو ساحلی اضلاع جیسےدکشن کنڑا  اور اُ ڈ پی ضلع سر فہرست ہوتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ ساحلی ضلع جسے دانشوروں کا ضلع کہا جاتا ہے نے ریاست میں بہترین تعلیمی کارکردگی حاصل کی ہے۔

این ڈی اے کو نہیں ملے گی جیت، انڈیا بلاک کو واضح اکثریت حاصل ہوگی: وزیر اعلیٰ سدارمیا

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے ہفتہ کے روز اپنے بیان میں کہا کہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو اکثریت نہیں ملنے والی اور بی جے پی کا ’ابکی بار 400 پار‘ نعرہ صرف سیاسی اسٹریٹجی ہے۔ میسور میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے یہ اظہار خیال کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ...