فرانس میں پنشن اصلاحات کے خلاف مظاہروں کے دوران 850 سے زائد افراد کو حراست میں لیا گیا: وزارت داخلہ

Source: S.O. News Service | Published on 22nd March 2023, 12:51 PM | عالمی خبریں |

پیرس،22/مارچ (ایس او نیوز/ایجنسی)  فرانس کے وزیر داخلہ جیرالڈ ڈارمنین نے کہا ہے کہ ملک میں حال ہی میں منظور شدہ پنشن اصلاحات کے خلاف احتجاج کے دوران 850 سے زیادہ مظاہرین کو حراست میں لیا گیا ہے۔ دارمینن نے بی ایف ایم ٹی وی کو بتایا: "جمعرات سے، فرانس میں 855 افراد کو حراست میں لیا گیا ہے، جن میں پیرس میں زیر حراست 729 افراد بھی شامل ہیں۔ تقریباً 843 افراد کو حراست میں رکھا گیا ہے۔

اخبار کی رپورٹ کے مطابق، اس سے پہلے دن میں، ملک کے جنوب میں فرانس کے شہر فوس-سر-میر میں ایک آئل ریفائنری میں پولیس نے مظاہرین کے خلاف آنسو گیس کا استعمال کیا۔ مظاہرین آئل ڈپو کی طرف جانے والی سڑک کو بلاک کرنے کی کوشش کر رہے تھے۔ مظاہرین مبینہ طور پر کام پر جانے والے ملازمین کو جبراً مظاہرہ کرنے والوں کی حمایت کے لیے جمع ہوئے تھے۔ اخبار نے بتایا کہ جھڑپ میں تین پولیس اہلکار زخمی ہوئے۔

دارمنین کے مطابق، 23 مارچ کو فرانس میں نواں ملک گیر مظاہرہ ہوگا۔ اس کے پیش نظر ملک بھر میں 12 ہزار پولیس اہلکار تعینات کیے جائیں گے جن میں سے پانچ ہزار اہلکار پیرس میں تعینات کیے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اصلاحات کے خلاف دو ماہ کے احتجاج کے دوران 300 سے زائد پولیس اہلکار زخمی ہوئے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایران میں نئے صدر کا انتخاب 28 جون کو، رئیسی ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقات شروع

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے انتقال کے بعد ایران میں نئے صدر کے انتخاب کی تاریخ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ نئے صدر کا  انتخاب 28 جون کو کیا جائے گا۔ ایرانی حکومت نے صدارتی ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقات کے لیے اعلیٰ حکام کی ایک ٹیم بھی تشکیل دی ہے۔

ایرانی صدرابراہیم رئیسی اور وزیر خارجہ حُسین امیر عبداللہیان ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق

ایرانی  صدر ابراہیم رئیسی اور ایرانی وزیرخارجہ حسین امیر عبداللہیان ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق ہوگئے۔ بتایا گیا ہے کہ پیر  صبح حادثے کا شکار ہیلی کاپٹر کا ملبہ مل گیا جس کے بعد ایرانی صدر اور ہیلی کاپٹر پر سوار افراد کے بچ جانے کی امیدیں دم توڑ گئیں ۔

افغانستان: سیلابی صورتحال، 300؍ افراد ہلاک، سیکڑوں لاپتہ

بغلان میں نیچرل ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے صوبائی ڈائریکٹر ہدایت اللہ ہمدرد کے مطابق، سیلاب نے کئی اضلاع میں گھروں اور املاک کو نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مرنے والوں کی تعداد ابتدائی تھی اور بہت سے لوگ لاپتہ ہونے کی وجہ سے اس میں اضافہ ہو سکتا ہے۔