صرف ذات کا نام لینا جرم نہیں: کرناٹک ہائی کورٹ

Source: S.O. News Service | Published on 31st January 2023, 1:44 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 31؍جنوری (ایس او نیوز؍ایجنسی ) درج فہرست ذات و قبائل (انسداد مظالم) قانون 1989ء پر کرناٹک ہائی کورٹ نے بڑا فیصلہ کیا ہے۔ ہائی کورٹ نے کہا کہ صرف ذات سے مخاطب کرنا جرم نہیں ہوگا جب تک کہ وہ اس ذات سے تعلق رکھنے والے شخص کی توہین کرنے کے ارادہ سے نہ ہو۔

مظالم قانون کی دفعات سے متعلق ایک ملزم کے خلاف مقدمہ کو خارج کرتے ہوئے ہائی کورٹ نے یہ بھی کہا کہ قاعدہ7 کے تحت کیس کی تحقیقات ایک ڈپٹی ایس پی کے درجہ کے حامل پولیس عہدیدار کو کرنی چاہیے نہ کہ سب انسپکٹر درجہ کے عہدیدار کو۔

بنگلورو دیہی ضلع کے بنڈیسنڈرا گاؤں کے ساکن وی شیلیش کمار کی دائر عرضی کو جزوی طور پر قبول کرتے ہوئے جسٹس ایم ناگاپرسنا نے کہا کہ درخواست گزار کو آئی پی سی کے تحت جرائم جیسے مار پیٹ، مجرمانہ دھمکی وغیرہ کے کیس میں مقدمہ کا سامنا کرنا ہوگا۔

کیس کرکٹ میچ  کے بعد دو ٹیموں کے درمیان ہوئے تنازعہ کا ہے۔ 14/ جون2020 کو اگلورو گاؤں کی جیہ اماں نے شکایت درج کرائی۔ اس نے الزام عائد کیا کہ اس کے بیٹے منوج کو اس کے دوست اور اس کے ساتھیوں نے جھگڑے کے بعد گالیاں دیں اور مارپیٹ کی۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی نے کانگریس ایم ایل اے کو 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی؛ سدارامیا کا الزام

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے ہفتہ کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس کے اراکین اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے کے لیے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کرکے 'آپریشن لوٹس' کے ذریعے انکی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں ملوث ہے۔

لوک سبھا انتخاب 2024: کرناٹک میں کانگریس کو حاصل کرنے کے لیے بہت کچھ ہے

کیا بی جے پی اس مرتبہ اپنی 2019 لوک سبھا انتخاب والی کارکردگی دہرا سکتی ہے؟ لگتا تو نہیں ہے۔ اس کی دو بڑی وجوہات ہیں۔ اول، ریاست میں کانگریس کی حکومت ہے، اور دوئم بی جے پی اندرونی لڑائی سے نبرد آزما ہے۔ اس کے مقابلے میں کانگریس زیادہ متحد اور پرعزم نظر آ رہی ہے اور اسے بھروسہ ہے ...

تعلیمی میدان میں سرفہرست دکشن کنڑا اور اُڈپی ضلع کی کامیابی کا راز کیا ہے؟

ریاست میں جب پی یوسی اور ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیاجاتا ہے تو ساحلی اضلاع جیسےدکشن کنڑا  اور اُ ڈ پی ضلع سر فہرست ہوتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ ساحلی ضلع جسے دانشوروں کا ضلع کہا جاتا ہے نے ریاست میں بہترین تعلیمی کارکردگی حاصل کی ہے۔

این ڈی اے کو نہیں ملے گی جیت، انڈیا بلاک کو واضح اکثریت حاصل ہوگی: وزیر اعلیٰ سدارمیا

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے ہفتہ کے روز اپنے بیان میں کہا کہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو اکثریت نہیں ملنے والی اور بی جے پی کا ’ابکی بار 400 پار‘ نعرہ صرف سیاسی اسٹریٹجی ہے۔ میسور میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے یہ اظہار خیال کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ...