ایم سی ڈی انتخاب میں امیروں اور زورآور لیڈروں کا بول بالا، بی جے پی کے 65 فیصد امیدوار کروڑپتی

Source: S.O. News Service | Published on 26th November 2022, 11:50 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،26؍نومبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) ایم سی ڈی انتخاب میں مجموعی امیدواروں میں سے تقریباً 10 فیصد نے 2017 میں گزشتہ ایم سی ڈی انتخاب میں 7 فیصد کے مقابلے خود کے خلاف مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا ہے۔ اے ڈی آر (ایسو سی ایشن آف ڈیموکریٹک ریفارمس) کی ایک رپورٹ نے ہفتہ کے روز انکشاف کیا کہ تجزیہ کیے گئے 1336 امیدواروں میں سے 139 (10 فیصد) امیدواروں نے اپنے خلاف مجرمانہ معاملے اعلان کیے ہیں۔ 2017 کے ایم سی ڈی انتخابات میں تجزیہ کیے گئے 2315 امیدواروں میں سے 173 (7 فیصد) نے اپنے خلاف مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا تھا۔

ان ایم سی ڈی انتخابات میں 76 (6 فیصد) امیدواروں نے اپنے خلاف سنگین مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا ہے، جبکہ 2017 کے ایم سی ڈی انتخابات میں 116 (5 فیصد) امیدواروں نے اپنے خلاف سنگین مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا تھا۔ اہم پارٹیوں میں عآپ سے تجزیہ کیے گئے 248 امیدواروں میں سے 45 (18 فیصد)، بی جے پی سے تجزیہ کیے گئے 249 امیدواروں میں سے 27 (11 فیصد) اور کانگریس سے تجزیہ کیے گئے 245 امیدواروں میں سے 25 (10 فیصد) نے اپنے حلف ناموں میں خود کے خلاف مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا ہے۔

اہم پارٹیوں میں عآپ کے تجزیہ کیے گئے 248 امیدواروں میں سے 19 (8 فیصد)، بی جے پی کے تجزیہ کیے گئے 249 امیدواروں میں سے 14 (6 فیصد) اور کانگریس کے تجزیہ کیے گئے 245 امیدواروں میں سے 12 (5 فیصد) نے اپنے حلف ناموں میں اپنے خلاف سنگین مجرمانہ معاملوں کا اعلان کیا ہے۔

اے ڈی آر کی رپورٹ ظاہر کرتی ہے کہ جہاں ایک امیدوار نے اپنے خلاف قتل (آئی پی سی کی دفعہ 302) سے متعلق معاملوں کا اعلان کیا ہے، وہیں چھ امیدواروں نے اپنے خلاف قتل کی کوشش (آئی پی سی کی دفعہ 307) سے متعلق معاملوں کا اعلان کیا ہے۔ ایم سی ڈی انتخاب میں دولت کا کردار اس بات سے ظاہر ہوتا ہے کہ سبھی اہم سیاسی پارٹیاں دولت مند امیدواروں کو ٹکٹ دیتی ہیں۔ 1336 امیدواروں میں سے اس بار 556 (42 فیصد) کروڑپتی ہیں۔ 2017 کے ایم سی ڈی انتخاب میں 2315 امیدواروں میں سے 697 (30 فیصد) کروڑپتی تھے۔

اہم پارٹیوں میں بی جے پی کے 249 امیدواروں میں سے 162 (65 فیصد(، عآپ کے 248 امیدواروں میں سے 148 (60 فیصد) اور کانگریس کے 245 امیدواروں میں سے 107 (44 فیصد) نے ایک کروڑ روپے سے زیادہ کی ملکیت کا اعلان کیا ہے۔ ایم سی ڈی انتخاب 2022 میں انتخاب لڑنے والے فی امیدوار کی اوسط ملکیت 2.27 کروڑ روپے ہے۔ 2017 کے ایم سی ڈی انتخاب میں 2315 امیدواروں کی فی امیدوار اوسط ملکیت 1.61 کروڑ روپے تھی۔

اہم پارٹیوں میں تجزیہ کیے گئے 249 بی جے پی امیدواروں کے لیے فی امیدوار اوسط ملکیت 4.04 کروڑ روپے ہے۔ تجزیہ کیے گئے 248 امیدواروں کے لیے 3.74 کروڑ روپے، اور 245 کانگریس امیدواروں کے پاس اوسط ملکیت 1.98 کروڑ روپے ہے۔ تجزیہ سے پتہ چلا ہے کہ 151 یا 11.5 فیصد امیدواروں نے 5 کروڑ روپے سے زیادہ کی ملکیت اعلان کردہ ہے اور 217 یا 16.2 فیصد امیدواروں نے 2 کروڑ روپے سے 5 کروڑ روپے کی درمیان ملکیت کا اعلان کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

آر بی آئی نے پھر دیا جھٹکا! ریپو ریٹ میں 0.25 فیصد کا اضافہ، مہنگی ہوگی لون کی ای ایم آئی

  مالی سال 2022-23 کے لیے ریزرو بینک آف انڈیا کی آخری کریڈٹ پالیسی کے فیصلوں کا آج اعلان کیا گیا ہے۔ آر بی آئی کے گورنر شکتی کانت داس نے صبح 10 بجے سے ایم پی سی میٹنگ کے نتائج کے بارے میں جانکاری دی ہے اور اس میں ریپو ریٹ کا اعلان کیا ہے۔

مہاراشٹر کے اورنگ آباد میں آدتیہ ٹھاکرے کے قافلہ پر پتھراؤ، شندے دھڑے پر حملہ کا الزام

مہاراشٹر کے اورنگ آباد کے بیجاپور علاقے میں شیوسینا (یو بی ٹی) کے رہنما آدتیہ ٹھاکرے کے قافلے پر پتھراؤ کیا گیا ہے۔ یہ یہ پتھراؤ شیوسینا کی ’شیو سمواد یاترا‘ کے دوران کیا گیا۔ رپورٹ کے مطابق پارٹی لیڈر آدتیہ ٹھاکرے اور امباداس دانوے کی گاڑی کے سامنے کچھ لوگوں نے ہنگامہ کیا ...

کرناٹک میں بی جے پی حکومت کے دوران ہندوؤں کا سب سے زیادہ قتل ہوا، یہی ان کا اصلی چہرہ ہے: سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس لیڈر ایس سدارامیا نے منگل کے روز ریاست میں برسراقتدار بی جے پی پر زوردار حملہ کیا۔ انھوں نے بی جے پی پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ریاست میں بی جے پی حکومت میں سب سے زیادہ ہندوؤں کا قتل کیا گیا۔ انھوں نے کہا کہ ہمارے دور میں نہ صرف ہندو، ...

’یہ آدمی عوام کو صرف ٹوپی پہناتا ہے‘، اڈانی کا نام لیے بغیر مہوا موئترا نے لوک سبھا میں لہرائی ٹوپی

ترنمول کانگریس رکن پارلیمنٹ مہوا موئترا نے منگل کے روز لوک سبھا میں مرکز کی مودی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ اڈانی کا نام لیے بغیر انھوں نے مرکز پر حملہ کیا اور لوک سبھا میں ٹوپی لہراتے ہوئے کہا کہ ’’یہ آدمی صرف ٹوپی پہنانے کا کام کرتا ہے‘‘۔ موئترا نے کہا کہ ’’یہ ...

مہاراشٹر میں صحافی کی مشتبہ حالت میں موت پر اٹھے سوال، میڈیا گروپس نے جانچ کا کیا مطالبہ

مہاراشٹر میں رتناگری ریفائنری پروجیکٹ پر کئی انکشافات کرنے والے تحقیقاتی رپورٹر ششی کانت واریشے کی ایک سڑک حادثہ میں ہوئی موت پر سوال اٹھنے لگے ہیں۔ ’منترالیہ انی ودھی منڈل وارتاہار سنگھ‘ اور ’ممبئی مراٹھی پترکار سنگھ‘ سمیت کئی میڈیا گروپوں نے حکومت سے واریشے کی موت سے ...