منگلورو: نیشنل ایجوکیشن پالیسی 'ہندوتوا راشٹرا' بنانے کا ٹوُل کِٹ ہے؛ ماہر تعلیم ڈاکٹر نرنجنارادھیا 

Source: S.O. News Service | Published on 7th February 2023, 12:31 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو،6 / جنوری (ایس او نیوز) کمیونسٹ پارٹی آف انڈیا کی آل انڈیا یوتھ فیڈریشن (اے آئی وائی ایف) جنوبی کینرا و اڈپی، سمدرشی ویدیکے منگلورو، کرناٹکا تھیولوجیکل ریسرچ انسٹی ٹیوٹ منگلورو کے اشتراک سے 'نیشنل ایجوکیشن پالیسی (این ای پی) اور اسکولی تعلیم' کے عنوان پر شہر میں منعقدہ  سیمینار میں اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے ماہر تعلیم ڈاکٹر نرنجنارادھیا نے کہا کہ یہ تعلیمی پالیسی ملک کو ہندوتوا راشٹرا بنانے کے لئے ضروری ٹوُل کٹ (اوزار کا بیگ) ہے۔
    
ڈاکٹر نرنجنارادھیا نے کہا کہ ملک کو اصل میں دستوری ضروریات کے مطابق تعلیمی پالیسی کی ضرورت ہے ، لیکن 2020 میں جو قومی تعلیمی پالیسی وضع کی گئی ہے وہ دستوری تقاضوں کے منافی ہے ۔ اس کا خفیہ ایجنڈہ ہے ۔ عوام کی رائے جانے بغیر ہی تیاری کی گئی این ای پی کو ہندوتوا راشٹرا بنانے کے مقصد سے لایا گیا ہے ۔ اس کا مقصد عوام کو گمراہ کرنا ہے ۔ اس میں اہم تعلیمی مسائل کا کوئی حل نہیں ہے ۔ 1986 میں بنائی گئی تعلیمی پالیسی اگر دور اندیشی پر مبنی ہے تو 2020 میں بنائی پالیسی دستور مخالف ہے ۔ اس کو تشکیل دینے والی کمیٹی میں ماہرین تعلیم ہی شامل نہیں تھے ۔ اس پر عوامی سطح پر بحث کا موقع بھی نہیں دیا گیا ہے ۔ 
    
انہوں نے کہا کہ اسکول کے کمروں کو زعفرانی رنگ لیپنا، حجاب کے مسئلہ پیدا کرنا ، یہ سب فسطائی کلچر اور ہٹلر کی ذہنیت کی عکاسی کرتے ہیں۔ 
    
'قومی تعلیمی پالیسی اور بھارتی زبانیں' کے موضوع پر بولتے ہوئے ریٹائرڈ پروفیسر ڈاکٹر پروشوتم بلیملے نے کہا کہ 2020 کی نیشنل ایجوکیشن پالیسی کرناٹکا کے سوا ملک کی کسی اور ریاست میں لاگو نہیں کی گئی ہے ۔ اس پالیسی میں علاقائی زبان میں تعلیم پانے کا موقع تو موجود ہے مگر اس کا فائدہ اٹھانے کی گنجائش صرف انتہائی کم تعداد میں بولی جانے والی سنسکرت زبان کے لئے رکھا گیا ہے ۔ سنسکرت زبان کی ترقی کے لئے کروڑوں روپے فنڈ مختص کیا گیا ہے ۔ یہ آر ایس ایس کو فائدہ پہنچانے کی چال ہے۔ 
    
انہوں نے کہا کہ ریاست کرناٹکا میں کنڑا کے علاوہ 72 زبانیں بولنے والے لوگ موجود ہیں ۔ انہیں فروغ دینے میں حکومت کو کوئی دلچسپی نہیں ہے ۔ اردو، بیاری زبانوں کو ترقی دینے میں بھی حکومت کی دلچسپی نظر نہیں آتی ۔ تُولو جیسی معروف زبان اور اس کے کلچر اور ادب کو دیکھتے ہوئے تُولو یونیورسٹی قائم کی جانی چاہیے تھی ۔ لیکن ہمارے ریاستی لیڈر مرکزی لیڈروں کو خوش کرنے کے لئے ہندی کی ترقی کے لئے کام کر رہے ہیں ۔ ابھی حال ہی میں تُولو زبان کو سرکاری زبان کا درجہ دینے پر غور کرنے کے لئے کمیٹی تشکیل دی گئی ہے، مگر یہ صرف انتخابی حربہ ہے۔ 
    
'قومی تعلیمی پالیسی اور میڈیکل تعلیم' کے عنوان پر بولتے ہوئے مشہور ماہر تعلیم ڈاکٹر بی شرینواس ککیلّائی نے کہا کہ کووڈ وباء کے دوران جب عوام خوف و ہراس میں جی رہے تھے ، اس وقت اس پالسی کو لاگو کیا گیا ۔ میں شروع میں ہی کہا تھا کہ طبی تعلیم پر اس پالیسی کے برے اثرات پڑیں گے ۔ اس پالیسی کی پرزور مخالفت ہونی چاہیے تھی مگر اُس وقت انڈین میڈیکل ایسو سی ایشن بھی منھ بند کرکے بیٹھ گئی ۔ کچھ دنوں بعد 'مِکسو پیتھی' کے خلاف ایک بیان دے کر چپ ہوگئی ۔ آر ایس ایس کے کارکنان سے بھرے 'نیشنل میڈیکل کمیشن' کے ذریعہ پوری میڈیکل تعلیم اور نظام پر قبضہ جمانے کی کوشش ہو رہی ہے۔ 
 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں نیشنل ہائی وے ادھورے کاموں کو جلد مکمل کرنے کا مطالبہ: پندرہ دن میں کام شروع نہیں ہوا تو شیرور ٹول ناکہ بند کرکے کیا جائے گا احتجاج

قومی شاہراہ کی تعمیر کےد وران ہورہی دیری اور خامیوں کو  لےکر آج بھٹکل تعلقہ ناگریک ہِتا رکشھنا سمیتی کا ایک وفد بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر ڈاکٹر نینا سے ملاقات کیا۔ اور  شاہراہ کاتعمیری کام جلد  مکمل کرنے کا مطالبہ کیا۔  وفد نے اسسٹنٹ کمشنر کو منتبہ کیا کہ پندرہ دن کے اندر اگر کام ...

یلاپور ایم ایل اے ہیبار نے دیا بی جے پی کو شاک ؛ کیا ہیبّار کانگریس میں شامل ہوں گے ؟

پچھلے کچھ دنوں سے یلاپور حلقہ کے ایم ایل اے شیو رام ہیبار کے تعلق سے افواہیں چل رہی تھیں کہ وہ بی جے پی سے واپس کانگریس میں لوٹنے کے لئے پر تول رہے ہیں ۔ اب شیورام ہیبار نے راجیہ سبھا کے لئے اراکین کے انتخاب کے موقع پر اسمبلی سے غیر حاضر رہتے ہوئے بی جے پی کو براہ راست شاک دے دیا ہے ...

اُڈپی : پڈوبیدری میں میاں بیوی کی جوڑی نے نقلی سونا گروی رکھتے ہوئے  کوآپریٹیو سوسائٹیوں کو لگایا 33 لاکھ روپے کا چونا !

میاں بیوی کی ایک جوڑی کی طرف سے  اصلی سونے کی جگہ پر نقلی سونا گروی رکھتے ہوئے کوآپریٹیو سوسائٹیوں کو 33 لاکھ روپے سے زائد رقم کا چونا لگانے کا معاملہ سامنے آیا ہے  جس کے بارے میں پڈوبیدری پولیس اسٹیشن میں الگ الگ شکایتیں درج کروائی گئی ہیں ۔

منگلورو: بھارت کو ہندو راشٹر بنانے چلےہیں، اس کے بعد برہمن، چھتری کا معاملہ شروع ہوگا، بچوں کی پڑھائی میں نہیں ہے کوئی  دلچسپی ؛ فلم اداکار پرکاش راج کی مودی پر تنقید

کیمرہ ڈپارٹمنٹ کے ساتھ عوام کے ٹیکس کا پیسہ خرچ کرتےہوئے تفریح کرنا مودی کا پیشہ بن گیا ہے۔  توکوٹو کلاپویونیٹی ہال میں ڈی وائی ایف کی قیادت میں منعقدہ سہ روزہ 12ویں ریاستی اجلاس میں خطاب کرتےہوئےہمہ لسانی فلم اداکار پرکاش راج نے وزیر اعظم نریندر مودی کی کڑی تنقید کی۔ 

کانگریس کارکنوں پرپاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے جانےکے الزام کے بعد مینگلور میں بی جےپی یوتھ مورچہ نے کی کانگریس دفترکا گھیراؤ کرنے کی کوشش

راجیہ سبھا انتخابات میں کانگریس کی شاندار جیت درج ہونے کے بعد میڈیا میں دکھایا گیا  تھا کہ  کانگریس کے  ناصر حُسین کے ایک حامی نے دو مرتبہ پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگایا ہے۔ اس کی مذمت کرتے ہوئے   بی جےپی  یوتھ مورچہ کارکنان نے منگلورو میں کانگریس دفتر کا گھیراؤ کرنے کی کوشش ...

پاکستان زندہ با د نعرہ کا معاملہ؛ بی جے پی شکست کی مایوسی میں توڑ مروڑ کر پیش کر رہی ہے: ڈی کے شیو کمار

ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ودھان سودھا میں کسی نے پاکستان زندہ باد کا نعرہ نہیں لگایا۔ اگر وہ پاکستان کی حمایت میں نعرہ بازی کرتے ہوئے چیختے ہیں تو پولیس انہیں لات مار کر اندر ڈال دے گی۔

سائنسی طور پر تصدیق ہوئی تو مجرم کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی، پاکستان ، یانصیرصاب زندہ باد: ایف ایس ایل سے تحقیق: پرمیشور

ریاستی وزیر داخلہ جی پرمیشور نے کہا کہ ودھان سودھا میں پاکستان زندہ بعد نعرہ بازی کے معاملہ میں پولیس نے از خود شکایت درج کرتے ہوئے کارروائی کی ہے۔ایف ایس ایل کی جانب سے سائنسی بنیاد پر تفتیش کی جارہی ہے۔

ملک کے نازک حالات میں مسلمان پاکستان زندہ کا نعرہ لگانے کی جرأت نہیں کرسکتا!یہ سب گودی میڈیا کی کارستانی ہے،دونوں ایوانوں میں ہنگامے

راجیہ سبھا انتخاب کا نتیجہ ظاہر ہونے کے بعد و دھان سودھا کے لاؤنج میں راجیہ سبھا کے لئے منتخب ہونے والے کانگریس امیدوار ڈاکٹر سید نصیر حسین کے حامیوں نے جشن منایا۔

یلاپور ایم ایل اے ہیبار نے دیا بی جے پی کو شاک ؛ کیا ہیبّار کانگریس میں شامل ہوں گے ؟

پچھلے کچھ دنوں سے یلاپور حلقہ کے ایم ایل اے شیو رام ہیبار کے تعلق سے افواہیں چل رہی تھیں کہ وہ بی جے پی سے واپس کانگریس میں لوٹنے کے لئے پر تول رہے ہیں ۔ اب شیورام ہیبار نے راجیہ سبھا کے لئے اراکین کے انتخاب کے موقع پر اسمبلی سے غیر حاضر رہتے ہوئے بی جے پی کو براہ راست شاک دے دیا ہے ...

ٹمکور ومیں سرجری کے بعد تین خواتین کی موت کا معاملہ ۔ گائنا کالوجسٹ سمیت تین افراد ملازمت سے برطرف

علاج میں کو تاہی کی پاداش میں محکمہ صحت کی کارروائی بروز منگل ایک گائنا کالوجسٹ اور عملے کے دو ارکان کو پاؤ گڑھ ٹاؤن کے ماں اور بچے کے اسپتال میں زیر علاج تین زچہ خواتین کی موت کے معاملہ میں ملازمت سے برخاست کرنے کا حکم دیا گیا۔