منگلورو: مورل پالیسنگ کے معاملے میں ساحلی پٹی کے سماجی جہدکار پر امید؛ موجودہ کانگریس حکومت موثر کارروائی کرے گی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 26th May 2023, 1:27 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

منگلورو: 25؍ مئی (ایس اؤ نیوز ) ریاست کے وزیرا علیٰ سدرامیا اور نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیوکمار کی کانگریس حکومت کی طرف سے  مارل پولسنگ کو ختم کئے جانے والے بیان کا ساحلی پٹی کے سماجی کارکنوں نے استقبال کرتےہوئے امید ظاہر کی ہے کہ موجودہ کانگریس کی حکومت سال 2013اور2018سے بھی زیادہ کارگر کارروائی کرے گی۔

ریاستی اعلیٰ پولس افسران کے ساتھ منعقدہ ایک میٹنگ میں وزیر اعلیٰ اور نائب وزیر اعلیٰ نے کہاتھا کہ ہم ریاست میں مارل پولسنگ کو برداشت نہیں کریں گے چاہے وہ کسی بھی مذہب کی طرف سے ہو۔ میٹنگ میں وزیر اعلیٰ سدرامیا نے کہاتھا کہ ہم ریاست سے مارل پولسنگ کو ختم کردیں گے۔ دونوں نے لیڈران واضح طورپر کہاتھا کہ ہماری حکومت سوشیل میڈیا کے ذریعے امن میں خلل ڈالنے والے  فرقہ پرست عناصر کے خلاف سخت کارروائی کرے گی۔

ساحلی پٹی کے مشہور و معروف کالم نگار اور سماجی کارکن سریش بھٹ باکرابائیل نے کانگریس لیڈران کے بیانات کے متعلق کہاکہ  دونوں کے بیانات نے امید جتائی ہے کہ  اب کی کانگریس حکومت مارل پولسنگ کے خلاف سخت کارروائی کرے گی۔اب آئندہ دنوں میں حکومت فرقہ پرست عناصر کے ساتھ کیسے کارروائی کرتی ہے اسی سے پتہ چلے گا کہ وہ ان معاملات کو کتنا سنجیدگی سے لیتی ہے۔  اس موقع پرا نہوں نے  دکشن کنڑا اور اُڈپی اضلاع میں پیش آنے والے مارل پولسنگ ، گئو رکشا اور فرقہ وارانہ فسادات کو تاریخی ترتیب سے بتایا ۔سریش بھٹ نے بتایا کہ سال 2013اور2018کے درمیان کانگریس حکومت نے  مارل پولسنگ کو نظر انداز کیا، جس کا نتیجہ مارل پولسنگ میں اضافہ اور فرقہ وارانہ فسادات کی صورت میں ظاہر ہوا۔

ٹیموکرٹیک یوتھ فیڈریشن کے ریاستی صدر اور سماجی جہدکار منیر کاٹی پالیا (جو اکثر مارل پولسنگ کے خلاف آواز اٹھاتے رہتے ہیں )نے کہاکہ صرف پولس کے ذریعے مارل پولسنگ کو ختم نہیں کیاجاسکتا۔ وقت کا تقاضا ہے کہ کانگریس فرقہ پرست قوتو ں اور کے خلاف نظریاتی سطح  پر اس کے نسداد اور سیاسی سطح پر موثر جدوجہد کی شروعات کرے۔ کیونکہ ان سب کے پیچھے یہی قوتیں کارفرما ہیں۔ کانگریس کی یہ جدوجہد اپنے زمینی کارکنان کی شمولیت کے ساتھ ہو۔ کاٹی پالیا نےکہاکہ صرف ان دونوں لیڈران کے بیانات سے کچھ ہونےوالا نہیں ہے، جیسے ماضی میں ہواہے۔ فرقہ پرست قوتیں اپنی مارل پولسنگ جاری رکھتےہوئے ایک مخصوص طبقہ پر اثر اندا ز ہوتے رہیں گے کہ وہی ہندوتوا کے محافظ ہیں۔ کانگریس کے لئے خاص کر سیاسی جدوجہد بہت ضروری ہے کیونکہ دکشن کنڑا اور اُڈپی اضلا ع کے 13 میں سے 11 ارکان اسمبلی بی جےپی سے منتخب ہوئے ہیں اوربی جے پی متعلقہ علاقے میں آئندہ آنے والے  لوک سبھا انتخابات کی تیاری کے پیش نظر یقینی طورپر  فرقہ وارانہ ماحو ل سے فائد ہ اٹھائے گی۔ اسی دوران علاقے کے  ایک سنئیر پولس آفیسر نے بتایا کہ جو کوئی قانون کو ہاتھ میں لے گا اور فرقہ وارانہ  بدامنی پیدا کرنے کی کوشش کرے گا پولس اس کے ساتھ سختی کے ساتھ برتاؤ کرے گی۔

خیال رہے کہ سال رواں کے ان 5مہینوں  میں دکشن کنڑا ضلع میں   اب تک تین مارل پولسنگ کے معاملات پیش آچکےہیں۔ 5جنوری کو سبرامنیا کے ایس آرٹی سی بس اسٹانڈ پر 12افراد پر مشتمل  ایک گروہ( جس میں ایک پی یو سکینڈ کا متعلم بھی شامل تھا )ایک 20سالہ مسلم کو 17سالہ ہندولڑکی سے بات کرنے کے معاملے کو لے کر حملہ کیا تھا۔ 12جنوری کو  ایک سرکاری بس میں 19سالہ بنٹوال کے ایک  مسلم لڑکے کو اپنے قریب بیٹھی ایک ہندو لڑکی کو چاکلیٹ پیش کئےجانے پر 6افراد نے مارپیٹ کی تھی۔ اسی طرح 2مئی کو کبکا میں مسلم طالب علم کی مارپیٹ کی گئی کیونکہ وہ اپنی کلاس میٹ ہندولڑکی کے ساتھ جوس پی رہاتھا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں نیشنل ہائی وے ادھورے کاموں کو جلد مکمل کرنے کا مطالبہ: پندرہ دن میں کام شروع نہیں ہوا تو شیرور ٹول ناکہ بند کرکے کیا جائے گا احتجاج

قومی شاہراہ کی تعمیر کےد وران ہورہی دیری اور خامیوں کو  لےکر آج بھٹکل تعلقہ ناگریک ہِتا رکشھنا سمیتی کا ایک وفد بھٹکل اسسٹنٹ کمشنر ڈاکٹر نینا سے ملاقات کیا۔ اور  شاہراہ کاتعمیری کام جلد  مکمل کرنے کا مطالبہ کیا۔  وفد نے اسسٹنٹ کمشنر کو منتبہ کیا کہ پندرہ دن کے اندر اگر کام ...

یلاپور ایم ایل اے ہیبار نے دیا بی جے پی کو شاک ؛ کیا ہیبّار کانگریس میں شامل ہوں گے ؟

پچھلے کچھ دنوں سے یلاپور حلقہ کے ایم ایل اے شیو رام ہیبار کے تعلق سے افواہیں چل رہی تھیں کہ وہ بی جے پی سے واپس کانگریس میں لوٹنے کے لئے پر تول رہے ہیں ۔ اب شیورام ہیبار نے راجیہ سبھا کے لئے اراکین کے انتخاب کے موقع پر اسمبلی سے غیر حاضر رہتے ہوئے بی جے پی کو براہ راست شاک دے دیا ہے ...

اُڈپی : پڈوبیدری میں میاں بیوی کی جوڑی نے نقلی سونا گروی رکھتے ہوئے  کوآپریٹیو سوسائٹیوں کو لگایا 33 لاکھ روپے کا چونا !

میاں بیوی کی ایک جوڑی کی طرف سے  اصلی سونے کی جگہ پر نقلی سونا گروی رکھتے ہوئے کوآپریٹیو سوسائٹیوں کو 33 لاکھ روپے سے زائد رقم کا چونا لگانے کا معاملہ سامنے آیا ہے  جس کے بارے میں پڈوبیدری پولیس اسٹیشن میں الگ الگ شکایتیں درج کروائی گئی ہیں ۔

منگلورو: بھارت کو ہندو راشٹر بنانے چلےہیں، اس کے بعد برہمن، چھتری کا معاملہ شروع ہوگا، بچوں کی پڑھائی میں نہیں ہے کوئی  دلچسپی ؛ فلم اداکار پرکاش راج کی مودی پر تنقید

کیمرہ ڈپارٹمنٹ کے ساتھ عوام کے ٹیکس کا پیسہ خرچ کرتےہوئے تفریح کرنا مودی کا پیشہ بن گیا ہے۔  توکوٹو کلاپویونیٹی ہال میں ڈی وائی ایف کی قیادت میں منعقدہ سہ روزہ 12ویں ریاستی اجلاس میں خطاب کرتےہوئےہمہ لسانی فلم اداکار پرکاش راج نے وزیر اعظم نریندر مودی کی کڑی تنقید کی۔ 

کانگریس کارکنوں پرپاکستان زندہ باد کے نعرے لگائے جانےکے الزام کے بعد مینگلور میں بی جےپی یوتھ مورچہ نے کی کانگریس دفترکا گھیراؤ کرنے کی کوشش

راجیہ سبھا انتخابات میں کانگریس کی شاندار جیت درج ہونے کے بعد میڈیا میں دکھایا گیا  تھا کہ  کانگریس کے  ناصر حُسین کے ایک حامی نے دو مرتبہ پاکستان زندہ باد کا نعرہ لگایا ہے۔ اس کی مذمت کرتے ہوئے   بی جےپی  یوتھ مورچہ کارکنان نے منگلورو میں کانگریس دفتر کا گھیراؤ کرنے کی کوشش ...

پاکستان زندہ با د نعرہ کا معاملہ؛ بی جے پی شکست کی مایوسی میں توڑ مروڑ کر پیش کر رہی ہے: ڈی کے شیو کمار

ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ودھان سودھا میں کسی نے پاکستان زندہ باد کا نعرہ نہیں لگایا۔ اگر وہ پاکستان کی حمایت میں نعرہ بازی کرتے ہوئے چیختے ہیں تو پولیس انہیں لات مار کر اندر ڈال دے گی۔

سائنسی طور پر تصدیق ہوئی تو مجرم کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی، پاکستان ، یانصیرصاب زندہ باد: ایف ایس ایل سے تحقیق: پرمیشور

ریاستی وزیر داخلہ جی پرمیشور نے کہا کہ ودھان سودھا میں پاکستان زندہ بعد نعرہ بازی کے معاملہ میں پولیس نے از خود شکایت درج کرتے ہوئے کارروائی کی ہے۔ایف ایس ایل کی جانب سے سائنسی بنیاد پر تفتیش کی جارہی ہے۔

ملک کے نازک حالات میں مسلمان پاکستان زندہ کا نعرہ لگانے کی جرأت نہیں کرسکتا!یہ سب گودی میڈیا کی کارستانی ہے،دونوں ایوانوں میں ہنگامے

راجیہ سبھا انتخاب کا نتیجہ ظاہر ہونے کے بعد و دھان سودھا کے لاؤنج میں راجیہ سبھا کے لئے منتخب ہونے والے کانگریس امیدوار ڈاکٹر سید نصیر حسین کے حامیوں نے جشن منایا۔

یلاپور ایم ایل اے ہیبار نے دیا بی جے پی کو شاک ؛ کیا ہیبّار کانگریس میں شامل ہوں گے ؟

پچھلے کچھ دنوں سے یلاپور حلقہ کے ایم ایل اے شیو رام ہیبار کے تعلق سے افواہیں چل رہی تھیں کہ وہ بی جے پی سے واپس کانگریس میں لوٹنے کے لئے پر تول رہے ہیں ۔ اب شیورام ہیبار نے راجیہ سبھا کے لئے اراکین کے انتخاب کے موقع پر اسمبلی سے غیر حاضر رہتے ہوئے بی جے پی کو براہ راست شاک دے دیا ہے ...

ٹمکور ومیں سرجری کے بعد تین خواتین کی موت کا معاملہ ۔ گائنا کالوجسٹ سمیت تین افراد ملازمت سے برطرف

علاج میں کو تاہی کی پاداش میں محکمہ صحت کی کارروائی بروز منگل ایک گائنا کالوجسٹ اور عملے کے دو ارکان کو پاؤ گڑھ ٹاؤن کے ماں اور بچے کے اسپتال میں زیر علاج تین زچہ خواتین کی موت کے معاملہ میں ملازمت سے برخاست کرنے کا حکم دیا گیا۔