کاروار: قانونی صلاح لےکرنیشنل ہائی وے کا ٹول بندکرانے وزیر منکال وئیدیا کی ڈی سی کو ہدایت

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 8th June 2023, 9:47 PM | ساحلی خبریں |

کاروار: 8؍جون(ایس اؤ نیوز )وزیر برائے بندرگاہ و ماہی گیر منکال وئیدیا نے ڈپٹی کمشنر کو ہدایت دی ہے کہ  جب تک قومی شاہراہ کی تعمیر مکمل نہیں ہوتی تب تک قومی شاہراہ پر آئی آر بی کمپنی کی طرف سے وصولی کی جارہی ٹول فیس کو بند کیاجائے ۔ انہوں نے ڈی سی پربھو لنگ کولیکٹی کو  اس سلسلے میں قانونی صلاح لےکر اقدام کرنے کہا ہے۔

 ڈی سی ہال میں ضلعی افسران کے ساتھ  منعقدہ جائزہ میٹنگ میں بات کرتے ہوئے وزیرموصوف نے کہاکہ آئی آر بی کمپنی کی بے وقوفی کے چلتے کئی  لوگوں  کی جانیں تلف ہو چکی ہیں۔ یہ لوگ کسی بھی حادثے کی وجہ سےہلاک نہیں ہوئےہیں بلکہ آئی آر بی کمپنی کی لاپرواہی کی وجہ سے موت کا شکار ہوئے ہیں۔منکال وئیدیا نے آئی آر بی کمپنی کے انجنئیر کو سخت ہدایت  دیتے ہوئے کہا کہ  کل سے ہی متعلقہ کاموں کو اگر عملی جامہ پہنچانا ہے تو میٹنگ میں بیٹھئے ورنہ باہر نکل جائیے ۔   

میٹنگ میں وزیر منکال وئیدیا نے آئی آر بی  کمپنی کے انجینر کو   شیرور سےلے کر گوا کی سرحد تک کتنے جگہوں پر شاہراہ کا کام پورا نہیں ہوا ہے، اس کی تفصیل پیش کرنے کہا۔ وئیدیا نے  انجنئیر سے  بھی سوال کیا کہ  منگل کو جو دو لوگ حادثے میں ہلاک ہوئےہیں، کیااس کے لئے آئی آر بی کمپنی ذمہ دار نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ  پچھلے 14برسوں سے آئی آر بی کی جانب سے جاری تعمیری کاموں کی وجہ سے کتنے ہی لوگ  اپنی جانوں کو گنواچکے ہیں۔ جن کی موت ہوئی ہے ان کے خاندان والوں کو کمپنی کی طرف سے فی کس ایک ایک لاکھ روپئے کا معاوضہ دینا تھا وہ بھی  نہیں دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جس کمپنی سے غریبوں  کو فائدہ نہیں ہے اس کی ہمیں ضرورت بھی نہیں ہے۔منکال نے کہا کہ  ٹیکسی اور آٹو ڈرائیور حقیقتاً غریب لوگ ہوتے  ہیں اس لئے  ان کو ٹول فری کرے۔

وزیر منکال وئیدیا نے  ڈی سی کو ہدایت دیتے ہوئے کہاکہ  وہ کسی  دن شیرور سے لے کر گوا تک سفر کرکے دیکھے اور نیشنل ہائی وے کا معائنہ کریں،  اگر قومی شاہراہ کی تعمیر کاکام مکمل نہیں ہواہے تو  آئی آربی ٹول فیس  کو بند کرائیں۔

ایک نظر اس پر بھی

دکشن کنڑا میں 83 مقامات پر بج رہی خطرے کی گھنٹی - موسلا دھار برسات سے کھسک سکتی ہیں چٹانیں 

کئی دنوں سے چل رہی مسلسل برسات کی وجہ سے جگہ جگہ چٹانیں کھسکنے کے واقعات پیش آ رہے ہیں ۔ اس وقت دکشن کنڑا میں 83 ایسے مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں چٹانیں کھسکنے کا خطرہ سر پر منڈلا رہا ہے ۔    

 انکولہ میں زمین کھسکنے کا معاملہ : ضلع انتظامیہ نے کی ملبے میں ٹرک دبے ہونے کی تصدیق؛ کیا زندہ برآمد ہوگا لاری ڈرائیور ؟

انکولہ تعلقہ کے شیرور میں پیش آئے چٹان کھسکنے کے المیہ کے بارے میں مزید کچھ اہم باتیں سامنے آ رہی ہیں، جس سے یقین ہوگیا ہے کہ ملبے کے اندر ایک بینز ٹرک دبا ہے ۔ اس وجہ سے ملبے کے اندر ٹرک کا لا پتہ ڈرائیور بھی موجود ہونے کا قوی امکان ہے۔

کمٹہ تعلقہ میں بھاری برسات کے بعد چٹان کھسک گئی  

اتر کنڑا میں موسلا دھار برسات کے نتیجے میں انکولہ تعلقہ کے  شیرور میں بڑے پیمانے پر چٹان کھسکنے کا جان لیوا حادثہ پیش آنے کے بعد اب کمٹہ تعلقہ میں الورومٹھ  کے قریب بھی ایک بڑی چٹان کھسک گئی ۔ اس سے کمٹہ سداپور شاہراہ مکمل طور پر بند ہوگئی ہے ۔

اڈپی میں ڈینگی کے بڑھتے معاملے - ڈاکٹری نسخے کے بغیر پیراسیٹامول گولی کی فروخت پر لگی پابندی

ضلع میں ڈینگی اور دوسرے متعدی امراض میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور زیادہ تر مریض خود ہی اپنا علاج (سیلف میڈیکیشن) کرنے لگے ہیں ۔ اس کی وجہ سے امراض کی نامناسب تشخیص اور نامکمل علاج کا سلسلہ چل پڑا ہے جس کا نتیجہ کبھی کبھی جان لیوا ثابت ہوتا ہے ۔