ہاتھرس حادثہ کی جانچ مکمل، پروگرام آگنائزر اصل ذمہ دار

Source: S.O. News Service | Published on 9th July 2024, 6:04 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ ، 9/جولائی (ایس او نیوز /ایجنسی)  ہاتھرس کے سکندراراؤ میں گذشتہ دو جولائی کو ستسنگ پروگرام کے دوران ہوئی بھگدڑ کے لئے پروگرام آرگنائزر کا اصل خاطی ٹھہرایا گیا ہے وہیں ضلع انتظامیہ کی بھی جوابدہی طے کی گئی ہے۔

حادثے کے فوران بعد تشکیل اے ڈی جی زون آگرہ اور ڈویژنل کمشنر علی گڑھ کی ایس آئی ٹی نے 3،2اور5 جولائی کو موقع واردات کا معائنہ کیا تھا۔ جانچ کے دوران کل 125افراد کا بیان لیا گیا۔ جس میں انتظامیہ اور پولیس افسران کے ساتھ عوام الناس اور چشم دیدوں کے بیانات شامل ہیں۔ اس کےعلاوہ واقعہ کے ضمن میں شائع اخبارات کی کاپیاں، مقامی فوٹو گرافی، ویڈیو کلپنگ کا بھی نوٹس لیا گیا ہے۔

ایس آئی ٹی نے ابتدائی جانچ میں چشم دید گواہوں و دیگر شواہد کی بنیاد پر حادثے کے لئے پروگرام آرگنائزرس کو اصل ذمہ دار مانا ہے۔ جانچ کمیٹی نے اب تک ہوئی جانچ و کاروائی کی بنیاد پر حادثے کے پیچھے کسی بڑی سازش سے بھی انکار نہیں کیا ہے اور باریک بینی سے جانچ کی ضرورت پر زور دیا ہے۔

جانچ کمیٹی نے پروگرام آرگنائزر اور تحصیل سطح کے پولیس و انتظامیہ کو بھی خاطی پایا ہے۔ مقامی ایس ڈی ایم، سی او ، تحصیل دار، انسپکٹر، چوکی انچارج کے ذریعہ اپنی ذمہ داریوں کی ادائیگی میں لاپرواہی کے ذمہ دار ہیں۔

رپورٹ کے مطابق ایس ڈی ایم سکندراراؤ کے ذریعہ بغیر جائے پروگرام کا معائنہ کئے انعقاد کی اجازت دی گئیہ ے اور سینئر افسران کو آگاہ تک نہیں کیا گیا۔ ان افسران کے ذریعہ پروگرام کو سنجیدگی سے نہیں لیا گیا اور سینئر افسران کو آگاہ بھی نہیں کیا گیا۔ ایس آئی ٹی نے متعلقہ افسران کے خلاف کاروائی کی سفارش کی ہے۔

اسی ضمن میں ایس ڈی ایم، سکندرا راؤ، پولیس سرکل افسر سکندراراؤ، تھانہ انچارج سکندراراؤ، تحصیل دار سکندراراؤ، چوکی انچارج کچورا اور چوکی انچارج پورا کو حکومت کے ذریعہ معطل کردیا گیا ہے۔

آرگنائزرس نے حقائق کو چھپا کر پروگرام کے انعقاد کی اجازت لی۔ اجازت کے لئے شرائط پر عمل نہیں کیا گیا۔ آرگنائزر کے ذریعہ غیر متوقع بھیڑ کو مدعو کر وافر اور بہتر انتظام نہیں کیا گیا۔ نہ ہی پروگرام کے لئے مقامی انتظامیہ کے ذریعہ دی گئی اجازت کے شرائط پر عمل کیا گیا۔

آرگنائزنگ بورڈ سے جڑے لوگ بدنظمی پھیلانے کے خاطی پائے گئے ہیں۔ ان کے ذریعہ جن افراد کو بغیر پولیس تصدیق کے جوڑا گیا ان سے بدنظمی پھیلی۔آرگنائزنگ بورڈ کے ذریعہ پولیس کے ساتھ بدسلوکی کی گئی۔ مقامی پولیس کو جائے پروگرام کا معائنہ کرنے سے روکنے کی کوشش کی گئی۔

ستسنگ اور بھیڑ کو بغیر سیکورٹی انتظامات کے آپس میں ملنے کی چھوٹ د ے دی گئی۔ بھاری بھیڑ کے پیش نظر یہاں کسی طرح کی بیریکیٹنگ یا پیسج کا انتظام نہیں کیاگیا تھا۔اور حادثہ ہونے پر آرگنائزنگ بورڈ کے اراکین موقع واردات سے فرار ہوگئے۔

قابل ذکر ہے کہ اس حادثے میں 121 افراد کی موت ہوئی تھی۔ اس سلسلے میں پروگرام کے مین آرگنائز کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کووڈ میں شرح اموات ظاہر کرنے والی رپورٹس غیر مصدقہ اور گمراہ کن

صحت اور خاندانی بہبود کی مرکزی وزارت نے کہا ہے کہ سائنس جریدے سائنس ایڈوانسز میں شائع مطالعہ سے کووڈ کی مدت کے دوران 2020 میں سب سے زیادہ اموات کو ظاہر کرنے والی رپورٹ غیر مصدقہ اور ناقابل قبول اندازوں پر مبنی ہیں۔

علاقائی سیاسی پارٹیوں کمائی اور خرچ کی رپورٹ جاری

ایسوسی ایشن فار ڈیموکریٹک ریفارمز نے اپنی حالیہ جاری کردہ رپورٹ میں ملک کی 57 علاقائی جماعتوں میں سے 39 علاقائی جماعتوں کی آمدنی اور اخراجات کی رپورٹ جاری کی ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ سال 2022-23 کی آمدنی اور اخراجات کے لحاظ سے کون سی پارٹی اوپر اور نیچے ہے۔ کس نے کتنا عطیہ وصول ...

جیتن سہنی قتل کے سلسلے میں مزید 3 ملزمان گرفتار، ایس ایس پی کے مطابق جائے وقوعہ سے اہم دستاویزات برآمد

  وکاسشیل انسان پارٹی (وی آئی پی) کے سربراہ مکیش سہنی کے والد کے قتل کیس میں پولیس نے مزید 3 ملزمان کو گرفتار کیا ہے۔ یہ گرفتاری کلیدی ملزم کاظم انصاری کی نشان دہی پر کی گئی ہے۔ دربھنگہ کے سینئر سپرنٹنڈنٹ آف پولیس جگوناتھ ریڈی نے یہ اطلاع دی۔

آئی اے ایس پوجا کھیڈکر تنازعہ کے درمیان یو پی ایس سی کے چیئرمین منوج سونی عہدے سے مستعفی

  یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کے چیئرمین منوج سونی نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا ہے۔ دلچسپ بات یہ ہے کہ انہوں نے اپنی مدت ملازمت پوری ہونے سے قبل ہی اپنا استعفی صدر کو ارسال کر دیا ہے۔

کیجریوال جان بوجھ کر کم کیلوری والا کھانا لے رہے ہیں، ایل جی کا الزام، عآپ کا شدید ردعمل

عام آدمی پارٹی کے رکن پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی صحت سے متعلق لیفٹیننٹ گورنر ونے سکسینہ کے چیف سکریٹری کو لکھے گئے خط پر ردعمل ظاہر کیا ہے۔ ایل جی کو نشانہ بناتے ہوئے سنجے سنگھ نے کہا کہ ایل جی یہ کیا مذاق کر رہے ہیں؟ کیا کوئی آدمی رات کو شوگر کم ...

نیٹ پر سپریم کورٹ کے حکم کے بعد این ٹی اے نے آن لائن اپ لوڈ کئے مرکز اور شہر وار نتائج

نیٹ پر سپریم کورٹ کے حکم کے بعد این ٹی اے نے نیٹ یو جی طلباء کے مرکز اور شہر وار نتائج کو آن لائن اپ لوڈ کر دیا ہے۔ نتائج اپلوڈ کرنے کے لئے ہفتہ کی دوپہر 12 بجے تک کا وقت دیا گیا تھا۔ تاہم، سی جے آئی ڈی وائی چندرچوڑ، جسٹس جے بی پاردیوالا اور جسٹس منوج مشرا کی بنچ نے واضح کیا تھا کہ ان ...