پاکستان زندہ با د نعرہ کا معاملہ؛ ڈی کے شیو کمار نے کہا؛ بی جے پی شکست کی مایوسی میں توڑ مروڑ کر پیش کر رہی ہے

Source: S.O. News Service | Published on 29th February 2024, 11:34 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،29/ فروری (ایس او نیوز) ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ودھان سودھا میں کسی نے پاکستان زندہ باد کا نعرہ نہیں لگایا۔ اگر وہ پاکستان کی حمایت میں نعرہ بازی کرتے ہوئے چیختے ہیں تو پولیس انہیں لات مار کر اندر ڈال دے گی۔

 میڈیا کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بی جے پی سیاسی چاول پکانے کے لیے کانگریس کے مسلم امیدوار کی  جیت پر حامیوں کی جانب سے لگائے گئے ناصر صاب زندہ با د نعرہ کو توڑ مروڑ کر پیش کر رہی ہے۔ وہ الیکشن ہارنے کی مایوسی سے ایسا کر رہے ہیں۔ ہم نے اس معاملے کی انکوائری کی تجویز دی ہے۔ تحقیقات کے بعد پولیس ملزمان کے خلاف قانونی کارروائی کرے گی۔ اگر جھوٹ پھیلایا گیا تو ایسے شخص کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

مبصر کے طور پر ہماچل پردیش جانے کے بارے میں پوچھے جانے پر شیو کمار نے کہا کہ کانگریس پارٹی نے مجھے وہاں جانے کی ہدایت کی ہے اور میں اس کے مطابق جا رہا ہوں۔ بی جے پی کو دو یا تین ریاستوں میں حکومت گرانے کی جلدی ہے، کانگریس حکومت کو ختم کرنے پل تول رہی ہے۔ ایک مضبوط اپوزیشن پارٹی بنیں ، بی جے پی اس ملک میں ایک بری روایت کی پیروی کرتی ہے، ہماری پارٹی کے تمام ایم ایل اے ہمارے ساتھ ہیں، مجھے یقین ہے کہ وہ پارٹی کے وفادار رہیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

بی جے پی نے کانگریس ایم ایل اے کو 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی؛ سدارامیا کا الزام

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے ہفتہ کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس کے اراکین اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے کے لیے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کرکے 'آپریشن لوٹس' کے ذریعے انکی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں ملوث ہے۔

لوک سبھا انتخاب 2024: کرناٹک میں کانگریس کو حاصل کرنے کے لیے بہت کچھ ہے

کیا بی جے پی اس مرتبہ اپنی 2019 لوک سبھا انتخاب والی کارکردگی دہرا سکتی ہے؟ لگتا تو نہیں ہے۔ اس کی دو بڑی وجوہات ہیں۔ اول، ریاست میں کانگریس کی حکومت ہے، اور دوئم بی جے پی اندرونی لڑائی سے نبرد آزما ہے۔ اس کے مقابلے میں کانگریس زیادہ متحد اور پرعزم نظر آ رہی ہے اور اسے بھروسہ ہے ...

تعلیمی میدان میں سرفہرست دکشن کنڑا اور اُڈپی ضلع کی کامیابی کا راز کیا ہے؟

ریاست میں جب پی یوسی اور ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیاجاتا ہے تو ساحلی اضلاع جیسےدکشن کنڑا  اور اُ ڈ پی ضلع سر فہرست ہوتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ ساحلی ضلع جسے دانشوروں کا ضلع کہا جاتا ہے نے ریاست میں بہترین تعلیمی کارکردگی حاصل کی ہے۔

این ڈی اے کو نہیں ملے گی جیت، انڈیا بلاک کو واضح اکثریت حاصل ہوگی: وزیر اعلیٰ سدارمیا

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے ہفتہ کے روز اپنے بیان میں کہا کہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو اکثریت نہیں ملنے والی اور بی جے پی کا ’ابکی بار 400 پار‘ نعرہ صرف سیاسی اسٹریٹجی ہے۔ میسور میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے یہ اظہار خیال کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ...