الال کے قاضی کا اپنے آبائی گاوں میں انتقال - وزیر اعلیٰ سدا رامیا اور اسمبلی اسپیکر یو ٹی قادر نے کیا تعزیت کا اظہار

Source: S.O. News Service | Published on 9th July 2024, 11:43 AM | ساحلی خبریں |

الال 9 / جولائی (ایس او نیوز) الال کے قاضی فضل کویمّا تھنگل (64 سال) المعروف کورت تھنگل کا اپنے آبائی گاوں کنور ضلع کے ایٹی کولم میں انتقال ہوگیا جس پر اظہار تعزیت کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ کرناٹکا سدا رامیا نے کہا کویمّا تھنگل جیسی اعلیٰ اور بلند قامت کا انتقال صرف مسلم سماج کے لئے نہیں بلکہ پوری ریاست کے لئے بڑا خسارہ ہے ۔
    
بتایا جاتا ہے کہ کل وہ اپنے گھر میں تھے اور شام کو الال درگاہ کے احاطے میں سید مدنی شریعت کالج ہاسٹل کے افتتاحی پروگرام میں حصہ لینے کی تیاری میں تھی ۔ اس دوران صبح دس بجے اچانک ان پر دل کا دورہ پڑا اور ان کی روح پرواز کر گئی ۔ 
    
قاضی تھنگل صاحب کے انتقال کی خبر ملنے پر اسمبلی اسپیکر یو ٹی قادر نے ایٹی کولم پہنچ کر تعزیت کرتے ہوئے کہا کہ الال اور اطراف کے قاضی کی حیثیت سے خدمات انجام دینے والے کورت تھنگل کا انتقال ان کے گھر والوں کے علاوہ بے شمار چاہنے والوں کے لئے بڑے دکھ اور رنج و غم کی بات ہے ۔ میں ان کی مغفرت اور لواحقین کے لئے صبر جمیل کی دعا کرتا ہوں ۔
    
کل دوپہر کے وقت ایٹی کولم میں مرحوم قاضی تھنگل کے آخری دیدار کے لئے انتظام کیا گیا جہاں الال درگاہ کمیٹی کے صدر حنیف حاجی اور دیگر اراکین نے شرکت کی ۔ وہاں پر انڈین گرانڈ مفتی اے پی ابوبکر موصلیار کانتا پورم کی امامت میں نماز جنازہ ادا کی گئی ۔ 
    
اس کے بعد میت ایٹی کولم سے کاسرگوڈ کے جامعہ سعدیہ لایا گیا جہاں مرحوم کورت تھنگل جنرل سیکریٹری کے عہدے پرمامور تھے ۔ یہاں بھی ان کی نماز جنازہ ادا کی گئی اور اس کے بعد میت کو الال میں لایا گیا ۔ 
    
رات کو الال درگاہ کے ہال میں میت کو آخری دیدار کے لئے رکھا گیا جس میں شرکت کے لئے شیخونا اے پی ابوبکر موصلیار کانتاپورم، اسپیکر اسمبلی یوٹی قادر کے علاوہ بے شمار مذہبی اور سماجی قائدین، مساجد اور اداروں کے ذمہ داران، طلبہ اور قاضی صاحب کو چاہنے والے عوام کا ہجوم امڈ پڑا ۔ 
    
الال درگاہ احاطے سے میت کڈبا تعلقہ کے کورت میں لے جائی گئی اور ہزاروں چاہنے والوں کی موجودگی میں قاضی کورت تھنگل کو سپرد خاک کیا گیا ۔     

ایک نظر اس پر بھی

دکشن کنڑا میں 83 مقامات پر بج رہی خطرے کی گھنٹی - موسلا دھار برسات سے کھسک سکتی ہیں چٹانیں 

کئی دنوں سے چل رہی مسلسل برسات کی وجہ سے جگہ جگہ چٹانیں کھسکنے کے واقعات پیش آ رہے ہیں ۔ اس وقت دکشن کنڑا میں 83 ایسے مقامات کی نشاندہی کی گئی ہے جہاں چٹانیں کھسکنے کا خطرہ سر پر منڈلا رہا ہے ۔    

 انکولہ میں زمین کھسکنے کا معاملہ : ضلع انتظامیہ نے کی ملبے میں ٹرک دبے ہونے کی تصدیق؛ کیا زندہ برآمد ہوگا لاری ڈرائیور ؟

انکولہ تعلقہ کے شیرور میں پیش آئے چٹان کھسکنے کے المیہ کے بارے میں مزید کچھ اہم باتیں سامنے آ رہی ہیں، جس سے یقین ہوگیا ہے کہ ملبے کے اندر ایک بینز ٹرک دبا ہے ۔ اس وجہ سے ملبے کے اندر ٹرک کا لا پتہ ڈرائیور بھی موجود ہونے کا قوی امکان ہے۔

کمٹہ تعلقہ میں بھاری برسات کے بعد چٹان کھسک گئی  

اتر کنڑا میں موسلا دھار برسات کے نتیجے میں انکولہ تعلقہ کے  شیرور میں بڑے پیمانے پر چٹان کھسکنے کا جان لیوا حادثہ پیش آنے کے بعد اب کمٹہ تعلقہ میں الورومٹھ  کے قریب بھی ایک بڑی چٹان کھسک گئی ۔ اس سے کمٹہ سداپور شاہراہ مکمل طور پر بند ہوگئی ہے ۔

اڈپی میں ڈینگی کے بڑھتے معاملے - ڈاکٹری نسخے کے بغیر پیراسیٹامول گولی کی فروخت پر لگی پابندی

ضلع میں ڈینگی اور دوسرے متعدی امراض میں روز بروز اضافہ ہوتا جا رہا ہے اور زیادہ تر مریض خود ہی اپنا علاج (سیلف میڈیکیشن) کرنے لگے ہیں ۔ اس کی وجہ سے امراض کی نامناسب تشخیص اور نامکمل علاج کا سلسلہ چل پڑا ہے جس کا نتیجہ کبھی کبھی جان لیوا ثابت ہوتا ہے ۔