کرناٹک میں ہندی دیو س منانے کو لے کر تنازعہ چھڑ گیا

Source: S.O. News Service | Published on 14th September 2022, 12:05 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو، 14؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) چہارشنبہ کے روم منائے جانے والے ہندی دیو س کو لے کرکرناٹک میں ایک تنازعہ کھڑا ہوگیاہے‘ جے ڈی (یس) اور بی جے پی ایک دوسرے کے مدمقابل اگئے ہیں۔سابق چیف منسٹر ایچ ڈی کمارا سوامی نے چیف منسٹر بسوراج بومیائی کو مکتوب تحریر کیاکہ ہندی دیوس منانے اس سرزمین کے ساتھ انصافی کے مترادف ہوگا۔

مذکورہ بی جے پی نے ان کے مکتوب کو مسترد کرتے ہوئے لکھا کہ کرناٹک کی عوام سیاسی مقصد کو سمجھنے کے لئے کافی ہوشیار ہیں اور انہیں کوئی پرواہ نہیں ہے۔ تاہم پولیس کوئی موقع دینا نہیں چاہا رہی ہے اور فیصلہ کیاہے کہ ریاست بھر بالخصوص بنگلورو میں سخت چوکسی اختیار کی جائے گی۔

کمارا سوامی نے اب بھی یہی کہہ رہے ہیں کہ ملک ہزاروں زبانوں اور علاقائی بولیوں پر مشتمل ہے اور یہ 500صوبوں کا ایک عظیم وفاق ہے جس میں مختلف سماجی اور ثقافتی ادارے اکٹھا ہوئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ”اس سرزمین پر ایک زبان کے ساتھ ترجیحی رویہ اس سرزمین کی توہین ہے۔

ستمبر14کے روز مرکز کے اسپانسر کردہ ہندی دیوس کو کرناٹک میں زبردستی منایاجارہا ہے‘ جو برسراقتدار بی جے پی کی جانب سے کنڈیوں کے ساتھ دغابازی ہے“۔

انہوں نے بومائی پر زوردیا کہ وہ کنڈا عوام کے پیسوں پر ہندی دیوس نہ منائیں۔ اس مکتوب پر سخت ردعمل پیش کرتے ہوئے ریاستی وزیربرائے تعلیم بی سی ناگیشونے کہاکہ کنڈاکی عوام ان کی اعلان پر توجہہ نہیں دی گی اور مزیدکہاکہ 1949سے ہندی دیوس منایاجاتا آرہا ہے۔

ناگیش نے کہاکہ یہ سیاسی فائدے کے لئے اٹھایاجانا والا مسئلہ ہے‘ او رمزیدکہاکہ کمارا سوامی ہر چیز پر فائدہ اٹھانے او رسیاست کرنا چاہتے ہیں۔ اگر ان کا نظریہ ایسا ہوتا تو انہوں نے کہاکہ ان کے والد سابق وزیراعظم ایچ ڈی دیو ی گوڑا ان تقاریبات کو نکال دیتے تھے۔

ناگیش نے یہ کہنا چاہا کہ ہندی دیوس وزیراعظم نریندر مودی نے متعارف نہیں کروایاہے‘ یہ 1949سے منایاجانے والاجشن ہے۔

انہوں نے کہاکہ ”مذکورہ بی جے پی حکومت ہندوستان کی علاقائی زبانوں کی ترقی کے لئے سنجیدہ ہے“۔

ایک نظر اس پر بھی

پاکستان زندہ با د نعرہ کا معاملہ؛ بی جے پی شکست کی مایوسی میں توڑ مروڑ کر پیش کر رہی ہے: ڈی کے شیو کمار

ریاستی نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیو کمار نے کہا کہ ودھان سودھا میں کسی نے پاکستان زندہ باد کا نعرہ نہیں لگایا۔ اگر وہ پاکستان کی حمایت میں نعرہ بازی کرتے ہوئے چیختے ہیں تو پولیس انہیں لات مار کر اندر ڈال دے گی۔

سائنسی طور پر تصدیق ہوئی تو مجرم کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی، پاکستان ، یانصیرصاب زندہ باد: ایف ایس ایل سے تحقیق: پرمیشور

ریاستی وزیر داخلہ جی پرمیشور نے کہا کہ ودھان سودھا میں پاکستان زندہ بعد نعرہ بازی کے معاملہ میں پولیس نے از خود شکایت درج کرتے ہوئے کارروائی کی ہے۔ایف ایس ایل کی جانب سے سائنسی بنیاد پر تفتیش کی جارہی ہے۔

ملک کے نازک حالات میں مسلمان پاکستان زندہ کا نعرہ لگانے کی جرأت نہیں کرسکتا!یہ سب گودی میڈیا کی کارستانی ہے،دونوں ایوانوں میں ہنگامے

راجیہ سبھا انتخاب کا نتیجہ ظاہر ہونے کے بعد و دھان سودھا کے لاؤنج میں راجیہ سبھا کے لئے منتخب ہونے والے کانگریس امیدوار ڈاکٹر سید نصیر حسین کے حامیوں نے جشن منایا۔

یلاپور ایم ایل اے ہیبار نے دیا بی جے پی کو شاک ؛ کیا ہیبّار کانگریس میں شامل ہوں گے ؟

پچھلے کچھ دنوں سے یلاپور حلقہ کے ایم ایل اے شیو رام ہیبار کے تعلق سے افواہیں چل رہی تھیں کہ وہ بی جے پی سے واپس کانگریس میں لوٹنے کے لئے پر تول رہے ہیں ۔ اب شیورام ہیبار نے راجیہ سبھا کے لئے اراکین کے انتخاب کے موقع پر اسمبلی سے غیر حاضر رہتے ہوئے بی جے پی کو براہ راست شاک دے دیا ہے ...

ٹمکور ومیں سرجری کے بعد تین خواتین کی موت کا معاملہ ۔ گائنا کالوجسٹ سمیت تین افراد ملازمت سے برطرف

علاج میں کو تاہی کی پاداش میں محکمہ صحت کی کارروائی بروز منگل ایک گائنا کالوجسٹ اور عملے کے دو ارکان کو پاؤ گڑھ ٹاؤن کے ماں اور بچے کے اسپتال میں زیر علاج تین زچہ خواتین کی موت کے معاملہ میں ملازمت سے برخاست کرنے کا حکم دیا گیا۔