اُترکنڑا ایم پی اننت کمارہیگڈے کو بی جے پی نے رکھا تشہیری مہم سے بھی دور؛ مودی خود کریں گے اُترکنڑا کا دورہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 31st March 2024, 6:00 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار31 / مارچ (ایس او نیوز) پارلیمانی الیکشن کی تیاریوں میں مصروف بی جے پی نے ریاست میں جن لوگوں کو تشہیری مہم کے لئے اسٹار کیمپینرس کی فہرست میں شامل کیا ہے ان میں اس مرتبہ انتخابی میدان میں اُترنے کے لئے ٹکٹ سے محروم رہنے والے پرتاپ سنہا، سدا نندا گوڑا، نلین کمار کٹیل، نارائن سوامی اور سی ٹی روی شامل ہیں۔

البتہ تعجب خیزطور پرپارٹی نے اُترکنڑا ایم پی اننت کمار ہیگڑے اور شیموگہ کے ایشورپّا کو تشہیری مہم سے بھی دور رکھتے ہوئے اس فہرست میں ان کا نام شامل نہیں کیا ہے۔

خیال رہے کہ ایشورپّا نے اپنے بیٹے کو ٹکٹ نہ ملنے کی صورت میں خود ہی آزاد امیدوار کے طور پر انتخاب لڑنے کا اعلان کیا ہے تو دوسری طرف اننت کمار ہیگڑے نے انتخابی تیاریوں کے ابتدائی دنوں میں گمنامی سے باہر نکل کر مذہبی اور فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا کرنے والے متنازع بیانات دے کر اپنے لئے ٹکٹ حاصل کرنے کا راستہ اپنایا تھا، مگر پارٹی نے ہیگڑے کو ٹکٹ بھی نہیں دیا اور اب تشہیری مہم کے اسٹارس کی فہرست سے بھی باہر کردیا ہے۔

اس مرتبہ کرناٹکا میں تشہیری مہم چلانے کے لئے بی جے پی کی فہرست میں دس مرکزی وزراء، تین ریاستی وزرائے اعلیٰ اور دیگر ریاستوں کے بی جے پی لیڈران کو شامل کیا گیا ہے۔ ان میں اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ یوگی آدتیہ ناتھ، آسام کے وزیر اعلیٰ ہیمنت بسوا شرما اور گوا کے وزیر اعلیٰ پرمود ساونت کے علاوہ مہاراشٹرا کے نائب وزیر اعلیٰ دیویندر فرڈنویس کے نام بطور خاص شامل کیے گئے ہیں۔ 

اتر کنڑا حلقے میں وزیراعظم مودی کی ریلی : وزیر اعظم نریندرا مودی اور امت شاہ کے علاوہ یوگی آدتیہ ناتھ کرناٹکا میں کم از کم تین سے چار ریلیوں سے خطاب کریں گے۔ وزیراعظم نریندرا مودی کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ اتر کنڑا میں بھی ایک انتخابی ریلی سے خطاب کریں گے۔

سمجھا جاتا ہے کہ اتر کنڑا ایم پی اننت کمار ہیگڑے کو ٹکٹ نہ دینے میں وزیر اعظم نریندرا مودی کا بڑا ہاتھ ہے اور اس وجہ سے اننت کمار نے ناراضگی ظاہر کرتے ہوئے پارٹی کی انتخابی سرگرمیوں سے خود کو دور کر لیا ہے۔ ہیگڑے نے پارٹی کے باضابطہ امیدوار سے ملاقات اور روابط سے بھی دوری اختیار کی ہے ۔ اس صورتحال سے نپٹنے اور اترکنڑا حلقے میں پارٹی کو نقصان سے بچانے کے لئے وزیر اعظم کے دورے کا پروگرام بنایا گیا ہے۔

بتایا جاتا ہے کہ وزیر اعظم کی ریلی کے لئے ہلیال کو منتخب کیا گیا ہے کیونکہ اس سے خانہ پور کتور کے علاوہ دھارواڑ اور بیلگاوی پارلیمانی حلقوں میں بھی تشہیر کا مقصد حاصل ہوگا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ماہی گیر تنظیموں کا متفقہ فیصلہ - کاسرکوڈ میں تجارتی بندرگاہ کے خلاف ہوگی قانونی جد و جہد

) شہر کے سینٹ جوزیف ہال میں ماہی گیر تنظیموں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور کراولی ماہی گیر مزدوروں کی تنظیم کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں کاسرکوڈ میں مجوزہ نجی تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف تنظیمی اور قانونی طریقے سے جد وجہد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

بھٹکل میں ووٹر بیداری مہم؛ سرکاری افسران نے طلبہ کے ساتھ نکالی ریلی؛ سو فیصد ووٹنگ کویقینی بنانے کی کوششیں

بھٹکل میں  صد فیصد ووٹنگ کا ٹارگٹ لے کر   اُترکنڑاضلعی انتظامیہ،  ضلع پنچایت، بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور تعلقہ پنچایت کے زیراہتمام  بھٹکل کے سرکاری آفسران  نے کالج طلبہ کو ساتھ لے کر  ووٹنگ بیداری مہم  کے تحت شاندار ریلی نکالی اور عوام پر زور دیا کہ وہ  کسی بھی صورت میں اپنی ...

بھٹکل میں مسلم رپورٹروں کی طرف سے غیر مسلم رپورٹروں کوپیش کی گئی عید الفطر کی مٹھائیاں

ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن   بھٹکل  کے مسلم رپورٹروں کی طرف سے بھٹکل کے غیر مسلم رپورٹروں کو عید الفطر کی مناسبت سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور اُنہیں عید کے تعلق سے  معلومات فراہم کی گئیں۔

بی جے پی نے کانگریس ایم ایل اے کو 50 کروڑ روپے کی پیشکش کی؛ سدارامیا کا الزام

کرناٹک کے وزیر اعلی سدارامیا نے ہفتہ کو بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پر الزام لگایا کہ وہ کانگریس کے اراکین اسمبلی کو وفاداری تبدیل کرنے کے لیے 50 کروڑ روپے کی پیشکش کرکے 'آپریشن لوٹس' کے ذریعے انکی حکومت کو غیر مستحکم کرنے کی کوششوں میں ملوث ہے۔

لوک سبھا انتخاب 2024: کرناٹک میں کانگریس کو حاصل کرنے کے لیے بہت کچھ ہے

کیا بی جے پی اس مرتبہ اپنی 2019 لوک سبھا انتخاب والی کارکردگی دہرا سکتی ہے؟ لگتا تو نہیں ہے۔ اس کی دو بڑی وجوہات ہیں۔ اول، ریاست میں کانگریس کی حکومت ہے، اور دوئم بی جے پی اندرونی لڑائی سے نبرد آزما ہے۔ اس کے مقابلے میں کانگریس زیادہ متحد اور پرعزم نظر آ رہی ہے اور اسے بھروسہ ہے ...

تعلیمی میدان میں سرفہرست دکشن کنڑا اور اُڈپی ضلع کی کامیابی کا راز کیا ہے؟

ریاست میں جب پی یوسی اور ایس ایس ایل سی کے نتائج کا اعلان کیاجاتا ہے تو ساحلی اضلاع جیسےدکشن کنڑا  اور اُ ڈ پی ضلع سر فہرست ہوتے ہیں۔ کیا وجہ ہے کہ ساحلی ضلع جسے دانشوروں کا ضلع کہا جاتا ہے نے ریاست میں بہترین تعلیمی کارکردگی حاصل کی ہے۔

این ڈی اے کو نہیں ملے گی جیت، انڈیا بلاک کو واضح اکثریت حاصل ہوگی: وزیر اعلیٰ سدارمیا

کرناٹک کے وزیر اعلیٰ سدارمیا نے ہفتہ کے روز اپنے بیان میں کہا کہ لوک سبھا انتخاب میں این ڈی اے کو اکثریت نہیں ملنے والی اور بی جے پی کا ’ابکی بار 400 پار‘ نعرہ صرف سیاسی اسٹریٹجی ہے۔ میسور میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے سدارمیا نے یہ اظہار خیال کیا۔ ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ ...