عآپ لیڈر سنجے سنگھ کی کانگریس صدر ملکارجن کھرگے سے ملاقات، ‘انڈیا‘ کے مشترکہ انتخابی منشور پر تبادلہ خیال

Source: S.O. News Service | Published on 15th April 2024, 11:08 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی، 15/اپریل (ایس او نیوز /ایجنسی) عام آدمی پارٹی (عآپ) کے راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ سنجے سنگھ نے اتوار کو کانگریس صدر ملکارجن کھرگے کے ساتھ 20 منٹ سے زیادہ میٹنگ کی۔ بات چیت میں بنیادی طور پر 'انڈیا' بلاک کے ایک مشترکہ کم از کم پروگرام بنانے پر توجہ مرکوز کی گئی، جسے دونوں پارٹیاں اقتدار میں آنے کی صورت میں لاگو کرنے پر متفق ہوں۔

دہلی میں کھرگے کی رہائش گاہ پر میٹنگ کے بعد صحافیوں سے خطاب کرتے ہوئے سنجے سنگھ نے کہا، "ہم نے اس بات پر تبادلہ خیال کیا کہ 'انڈیا' بلاک کے اندر تمام پارٹیاں کس طرح ایک مشترکہ کم سے کم پروگرام بنانے کے لیے تعاون کر سکتی ہیں۔ اس کے علاوہ ہم نے اپوزیشن کے خلاف ایجنسیوں کے غلط استعمال اور آئین کے تحفظ کی اہمیت پر زور دیا۔‘‘

میٹنگ میں ایک مشترکہ منشور تیار کرنے پر بھی تبادلہ خیال کیا گیا، سنگھ نے جلد ہی کسی فیصلے کی امید ظاہر کی۔ انہوں نے کہا، "ہم اپنے مشترکہ وژن کے موثر نفاذ کو یقینی بنانے کے لیے، جہاں بھی ضروری ہو، 'انڈیا' بلاک کے اندر رہنماؤں کی حمایت کے لیے پوری طرح پرعزم ہیں۔‘‘

اتوار کو جاری بی جے پی کے منشور پر تبصرہ کرتے ہوئے سنگھ نے کہا، ’’آپ کے پاس 10 سال کا رپورٹ کارڈ ہے۔ آپ نے 10 سالوں میں کیا حاصل کیا؟ منشور صرف وعدوں کا نہیں ہونا چاہیے۔ لوگ منشور پر کتنا اعتماد کر سکتے ہیں؟ کیا لوگوں کو 20 کروڑ نوکریاں ملیں؟ کیا کسانوں کو ایم ایس پی ملا؟ کیا مہنگائی کم ہوئی؟‘‘ خیال رہے کہ سنگھ کو تہاڑ جیل سے 2 اپریل کو رہا کیا گیا تھا۔

سپریم کورٹ نے عآپ لیڈر کو مبینہ ایکسائز پالیسی گھوٹالہ سے متعلق منی لانڈرنگ کیس میں یہ مشاہدہ کرنے کے بعد ضمانت دے دی کہ انفورسمنٹ ڈائریکٹوریٹ (ای ڈی) کو سنگھ کی ضمانت پر رہائی پر کوئی اعتراض نہیں ہے۔ سپریم کورٹ نے کہا تھا کہ انہیں ٹرائل کورٹ کی طرف سے طے شدہ شرائط و ضوابط پر رہا کیا جائے گا، یہ واضح کرتے ہوئے کہ سیاسی رہنما زیر التوا کیس میں اپنے کردار کے بارے میں کوئی عوامی تبصرہ یا تقریر نہیں کرے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

انتخابات کے اعدادوشمار پر سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو جاری کیا نوٹس

ملک بھر میں انتخابی ماحول ہے۔ لوک سبھا انتخابات کے چار مراحل مکمل ہو چکے ہیں۔ اب انتخابات کا پانچواں مرحلہ 20 مئی کو ہونا ہے۔ دریں اثنا، سپریم کورٹ میں ایک درخواست دائر کی گئی جس میں پولنگ اسٹیشنوں پر ریکارڈ شدہ ووٹوں کے اکاؤنٹ کو فوری طور پر اپ لوڈ کرنے کی ہدایت کی مانگ گئی ہے۔

لوک سبھا انتخابات: انتخابی مہم کا پانچواں دور آج شام ختم ہوگا، 20 مئی کو 8 ریاستوں کی 49 سیٹوں پر ووٹنگ

  لوک سبھا انتخابات کے پانچویں دور کی انتخابی مہم آج شام ختم ہو جائے گی۔ 20 مئی کو ہونے والی ووٹنگ کے دوران 6 ریاستوں اتر پردیش، بہار، مغربی بنگال، مہاراشٹر، اڈیشہ، جھارکھنڈ اور دو مرکز کے زیر انتظام علاقوں جموں کشمیر اور لداخ کی کل 49 نشستوں پر ووٹ ڈالے جا رہے ہیں۔

کنہیا کمار پر حملہ بی جے پی کی مایوسی کا نتیجہ: کانگریس

  کانگریس نے پارٹی کے شمال مشرقی دہلی کے لوک سبھا امیدوار کنہیا کمار پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے اسے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی بزدلانہ حرکت اور انتخابات میں شکست پر مایوسی قرار دیا اور کہا کہ ملک کی سب سے پرانی جماعت پر اس طرح کی حرکتوں کاکوئی اثر ہونے والا نہیں ہے۔

اروند کیجریوال کی گرفتاری کو چیلنج کرنے والی عرضداشت پر سپریم کورٹ نے فیصلہ محفوظ رکھا

سپریم کورٹ نے جمعہ (17 مئی) کو دہلی کے وزیر اعلی اروند کیجریوال کی ای ڈی کے ذریعے آبکاری پالیسی کے تحت گرفتاری کو چیلنج کرنے والی عرضداشت پر اپنا فیصلہ محفوظ رکھ لیا ہے۔ جسٹس سنجیو کھنہ اور جسٹس دیپانکر دتّہ کی بنچ نے فیصلہ محفوظ کرتے ہوئے اروند کیجریوال کو ضمانت کے لیے نچلی ...

دہلی میں بڑھتی آلودگی کی ذمہ دار مودی حکومت ہے، کانگریس کا سنگین الزام

دہلی میں بڑھتی آلودگی کے لیے کانگریس نے مرکز کی مودی حکومت کو ذمہ دارٹھہریا ہے۔ کانگریس کے جنرل سکریٹری جے رام رمیش نے آج (17 مئی) کو ایک پریس کانفرنس میں کہا ہے کہ معیار کو نظر انداز کرتے ہوئے دہلی میں تقریباً ایک درجن بجلی گھروں میں کوئلہ استعمال کیا جا رہا ہے اور مرکز کی ...

بی جے پی محکمہ پولیس میں بھی اگنی ویر اسکیم لانے کی تیاری کر رہی ہے، تیجسوی یادو کا بڑا دعویٰ

بہار کے سابق نائب وزیر اعلی تیجسوی یادو نے مرکز کی اگنی ویر اسکیم کے تعلق سے ایک بڑا دعویٰ کیا ہے۔ انہوں نے کہا ہے کہ مرکز کی بی جے پی حکومت محکمہ پولیس میں بھی فوج کی طرح اگنی ویر اسکیم لانے کی تیاری کر رہی ہے۔ ملک بھر کے نوجوانوں کا سب سے بڑا مسئلہ اگنی ویر اسکیم ہے۔ ہم نے حکام ...