ریڈ کراس نے سیلاب زدہ لیبیا میں پانچ ہزار میّت تھیلے بھیج دیے، 10 ہزار افراد ہنوز لاپتہ، وبا پھوٹنے کا خطرہ

Source: S.O. News Service | Published on 17th September 2023, 3:42 PM | عالمی خبریں |

بین الاقوامی ریڈ کراس کمیٹی (آئی سی آر سی) نے سیلاب زدہ لیبیا میں امدادی سامان اور ہزاروں میّت تھیلے (باڈی بیگز) بھیجے ہیں جہاں طوفان دانیال کے نتیجے میں آنے والے تباہ کن سیلاب کے بعد ابھی 10 ہزار افراد لاپتہ ہیں۔

یہ طوفان 10 ستمبر کو لیبیا میں داخل ہوا تھا۔اس کے بعد سیلاب میں اب تک ہلاکتوں کے مختلف اعدادوشمار سامنے آئے ہیں۔ لیبی حکام نے تصدیق کی ہے کہ کم سے کم 4،000 افراد ہلاک ہوچکے ہیں ، لیکن آزاد ذرائع کے مطابق ہلاکتوں کی تعداد اس سے تین گنا ہوسکتی ہے۔

بین الاقوامی ریڈکراس نے ہفتے کے روز ایک بیان میں بتایا ہے کہ اس نے ’’لیبیا میں پانچ ہزار’میت تھیلے‘ بھیجے ہیں تاکہ الم ناک قدرتی آفت میں ہلاک ہونے والوں کی شناخت اور باوقار انداز میں تدفین میں مدد مل سکے‘‘۔

لیبیا کے مشرقی شہروں بنغازی اور مصراتہ میں آئی سی آر سی کی فرانزک ٹیمیں مقامی حکام اور ہلال احمر سوسائٹی کے ساتھ مل کر مرنے والوں کی تدفین کا انتظام کر رہی ہیں۔اس کا مقصد اس بات کو یقینی بنانا ہے کہ ہر شخص کو مناسب انداز میں دستاویزی انفرادی قبروں میں دفن کیا جائے تاکہ بعد میں وقتِ ضرورت ان کی قبور کی شناخت میں مدد مل سکے۔

آئی سی آر سی کا کہنا ہے کہ اس طرح کے فرانزک اقدامات لاپتہ افرادکے اہل خانہ کی مدد کے لیے تنظیم کے کام کا حصہ ہیں۔اس آفت سے متاثرہ ہزاروں خاندانوں کی مدد کے لیے ادویہ، خوراک، ابتدائی طبّی امداد کی کٹس اور گھریلو سامان جیسی ضروری اشیاء بھیجی جارہی ہیں۔

مصراتہ میں آئی سی آر سی کے مالک بوزیان نے بتایا:’’ہماری ٹیمیں طبی سامان اور ’میّت تھیلے‘ ٹرکوں پر لاد رہی ہیں۔انھیں درنہ میں سیلاب سے متاثرہ لوگوں تک پہنچایا جائے گا۔ اس طوفان نے ملک میں برسوں سے جاری تنازعات سے پہلے ہی مشکلات سے دوچار لوگوں کو اورمتاثر کیا ہے۔ مرنے والوں کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے اور لوگ لاپتہ پیاروں کی تلاش میں مصروف ہیں‘‘۔

آئی سی آر سی درنہ میں غیرپھٹے ہتھیاروں اور لاوارث گولہ بارود کی دکانوں سے لاحق ممکنہ خطرات کا بھی جائزہ لے رہی ہے کہ رہائشیوں، ہنگامی امداد مہیا کرنے والے کارکنان اور حکام کی بہترین حفاظت کیسے کی جائے۔

قبل ازیں لیبیا میں تارکینِ وطن کی بین الاقوامی تنظیم (آئی او ایم) نے جمعہ کے روزکہا ہے کہ دانیال طوفان کی وجہ سے ملک کے شمال مشرق میں واقع سب سے زیادہ متاثرہ علاقوں میں 38,640 سے زیادہ افراد بے گھر ہوئے ہیں۔

آئی او ایم نے اپنی ویب سائٹ پر کہا ہے کہ عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے ذرائع کے مطابق 5,000 سے زیادہ افراد کو مردہ تصور کیا جاتا ہے۔ان میں سے 3،922 اموات کا اسپتالوں میں اندراج کیا گیا ہے۔

اقوام متحدہ نے لیبیا میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں صورت حال کو "تباہ کن" قرار دیتے ہوئے سات کروڑ دس لاکھ ڈالر سے زیادہ کے عطیات جمع کرنے کی اپیل کی ہے تاکہ "884،000 افراد میں سے کم سے کم 250،000 افراد کی انتہائی فوری ضروریات کو پورا کیا جا سکے۔

وبائی امراض پھوٹنے کا خطرہ

امدادی گروپوں نے ہفتے کے روز سیلاب زدہ علاقوں میں وبائی امراض پھوٹ پڑنے کے خطرے کے بارے میں بھی خبردار کیا ہے اور کہا کہ اس صورت حال میں کوئی بھی وَبا لیبیا میں انسانی بحران کو مزید ابتر کر سکتی ہے۔

درنہ سے 100 کلومیٹر مغرب میں واقع البیضاء میں مقامی لوگوں نے پہلے ہی صفائی ستھرائی کی کوششیں شروع کردی ہیں اوروہ سیلاب کی وجہ سے پھیلے ہوئے کیچڑکے ٹیلوں کو ہٹا رہے تھے۔ وہ سڑکوں اور گھروں کو بھی صاف کررہے تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بنگلہ دیش سے 5000 سے زائد غیر ملکی طلباء نکلے

بنگلہ دیش میں ریزرویشن مخالف پرتشدد مظاہروں کی وجہ سے اب تک تقریباً ساڑھے چار ہزار ہندوستانی طلباء وطن واپس آچکے ہیں، نیپال، بھوٹان اور مالدیپ کے تقریباً پانچ سو دیگر طلباء بھی ہندوستان آئے ہیں۔ وزارت خارجہ نے کل یہاں ایک بیان میں کہا کہ گزشتہ دو دنوں سے ڈھاکہ میں ہندوستانی ...

فسادات زدہ بنگلہ دیش سے تقریباً 1000 ہندوستانی طلباء کی وطن واپسی

بنگلہ دیش میں کوٹہ سسٹم کے خلاف جاری طلباء کے احتجاج کی وجہ سے حالات بدستور تشویشناک ہے۔ صورتحال کی سنگینی کو دیکھتے ہوئے تقریباً 1000 ہندوستانی طلباء وہاں سے ہندوستان واپس آ گئے ہیں۔ وزارت خارجہ نے ہفتے کے روز کہا کہ اس نے ہندوستانی شہریوں کی واپسی کے لیے تمام انتظامات کئے۔ ...

بنگلہ دیش کوٹہ سسٹم احتجاج: 100 سے زائد افراد ہلاک، 2500 زخمی، ملک بھر میں کرفیو، سڑکوں پر فوج کا پہرہ

بنگلہ دیش میں سرکاری ملازمتوں میں کوٹہ سسٹم کے خاتمے کا مطالبہ کرتے ہوئے طلباء کا پرتشدد احتجاج جاری ہے۔ چند ہفتے قبل ملک بھر میں شروع ہونے والی پرتشدد جھڑپوں میں اب تک 105 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔

نیپال لینڈ سلائڈنگ حادثہ: اب تک 4 ہندوستانیوں سمیت 19 افراد کی لاشیں برآمد، راحت و بچاؤ کاری کا عمل جاری

گزشتہ ہفتہ نیپال کے چتون ضلع میں لینڈ سلائڈنگ کے بعد دو بسیں طغیانی مارتی ہوئی ندی میں بہہ گئی تھیں جس میں سوار لوگوں کی لاشیں برآمد ہونے کا سلسلہ جاری ہے۔ دراصل لینڈ سلائڈنگ کے بعد تباہی جیسے حالات پیدا ہو گئے ہیں اور فوجیوں کو راحت و بچاؤ کاری میں کافی دقتیں پیش آ رہی ہیں۔ ...