غزہ میں فلسطینی مظاہرین کے قتل عام پر سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2018, 12:30 PM | عالمی خبریں |

دبئی،15 مئی ( ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)کل سوموار کو فلسطین کے علاقے غزہ کی پٹی کی مشرقی سرحد پر ’عظیم الشان واپسی مارچ‘ کے شرکاء پر اسرائیلی فوج کی وحیشانہ فائرنگ اور بڑی تعداد میں شہریوں کی ہلاکتوں کے بعد آج اس معاملے پر غور کے لیے سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا گیا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اقوام متحدہ میں سعودی عرب اور فلسطین کے مندوبین نے کہا کہ انہوں نے غزہ میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کے قتل عام پرغور کے لیے آج منگل کو سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس طلب کیا ہے۔فلسطینی مندوب ریاض منصور نے کہا کہ فلسطینی ہائی کمشن کی طرف سے جنرل اسمبلی کو بھی ایک پیغام جاری کیا گیا ہے جس میں فلسطین میں اسرائیلی فوج کے ہاتھوں فلسطینیوں کا قتل عام روکنے پر زور دیا گیا ہے۔فلسطینی مندوب نے غزہ میں قابض اسرائیلی فورسز کے ہاتھوں فلسطینیوں پر فائرنگ کو وحشیانہ قرار دیتے ہوئے نہتے فلسطینیوں کے قاتلوں کو قانون کے کٹہرے میں لانے اور نہتے شہریوں کو تحفظ فراہم کرنے کا مطالبہ کیا۔ریاض منصور نے کہا کہ وہ اقوام متحدہ میں سعودی عرب کے سفیر عبداللہ المعلمی سے بھی ملاقات کریں گے جس کے بعد سلامتی کونسل کا ہنگامی اجلاس بلایا جائیگا۔

ایک نظر اس پر بھی

نیویارک کے مرکزی علاقے میں زیر زمین بھاپ پائپ لائن پھٹنے سے دھماکے

نیویارک شہر کے فائر ڈپارٹمنٹ نے کہا ہے کہ مین ہیٹن کی گلیوں میں زیر زمین گزرنے والا ایک ہائی پریشر بھاپ کا پائپ پھٹ گیا جس کے نتیجے میں ففتھ ایونیو کے مرکز میں واقع ایک سوراخ سے بھاپ نکل کر ہوا میں پھیلنا شروع ہو گئی۔

ترک بچوں اور خواتین کا جنسی استحصال کرنے والا خود ساختہ مذہبی رہنما گرفتار

استنبول کی ایک عدالت نے بزعم خود ایک اسلامی فرقے کے رہنما اور ٹی وی پر تبلیغ کرنے والی شخصیت عدنان اوکتار کو 115 دیگر پیروکاروں سمیت مختلف الزامات کی مزید تفتیش کے لئے پولیس کے حوالے کر دیا ہے۔ عدنان اوکتار پر جرائم پیشہ گینگ قائم کرنے، دھوکادہی اور جنسی استحصال کے الزامات ہیں۔

مقتدیٰ الصدر نے مظاہرین کی حمایت کردی ،نئی حکومت کی تشکیل مُوَخَّر کرنے کا مطالبہ

عراق کے سرکردہ شیعہ لیڈر مقتدیٰ الصدر نے ملک کے جنوبی صوبوں میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کی حمایت کردی ہے او ر تمام متعلقہ سیاست دانوں پر زور دیا ہے کہ وہ مظاہرین کے بہتری شہری خدما ت کی فراہمی کے مطالبات پورے ہونے تک نئی حکومت کی تشکیل کے لیے مذاکرات کا سلسلہ معطل کردیں ۔