تھائی لینڈ میں نوجوان جرمن خاتون سیاح کا ریپ کے بعد قتل

Source: S.O. News Service | By Jafar Sadique Nooruddin | Published on 8th April 2019, 10:30 PM | عالمی خبریں |

برلن؍بنکاک:8 /اپریل(ایس اونیوز /آئی این ایس انڈیا) تھائی لینڈ میں جرمنی سے تعلق رکھنے والی ایک نوجوان خاتون سیاح کو ریپ کے بعد قتل کر دیا گیا۔ تھائی پولیس نے ایک مبینہ ملزم کو گرفتار کر لیا ہے، جس نے اس چھبیس سالہ سیاح کو ریپ کے بعد قتل کرنے کا اعتراف بھی کر لیا ہے۔تھائی لینڈ کے دارالحکومت بنکاک سے پیر آٹھ اپریل کو ملنے والی جرمن نیوز ایجنسی ڈی پی اے کی رپورٹوں کے مطابق اس خاتون سیاح کا تعلق جرمنی کے شمالی صوبے لوئر سیکسنی سے تھا اور اس کی عمر 26 برس تھی۔ یہ نوجوان سیاح اکیلی ہی تھائی لینڈ کی سیاحت کے لیے گئی تھی۔ اس دوران خلیج تھائی لینڈ کے علاقے میں جب یہ خاتون ملکی دارالحکومت بنکاک سے 75 کلومیٹر کے فاصلے پر واقع چھوٹے سے جزیرے کو سی چانگ کی سیر کو گئی، تو وہاں اس ملزم نے پہلے اسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا اور پھر اسے قتل کر دیا۔تھائی پولیس کے ایک ترجمان نے بنکاک میں نیوز ایجنسی بتایا کہ ملزم کی عمر 24 سال ہے اور اس نے اس جرمن سیاح پر جنسی حملہ اور اس کا قتل اتوار سات اپریل کو اس وقت کیا، جب وہ ایک دن کی سیر کے لیے بنکاک سے اس جزیرے پر گئی تھی۔ پولیس نے یہ بھی بتایا کہ یہ یورپی خاتون ایک فیری کے ذریعے کو سی چانگ نامی جزیرے پر پہنچی تھی، جہاں اس نے جزیرے کی سیر کے لیے ایک مقامی دکاندار سے ایک سکوٹر بھی کرائے پر لیا تھا۔تھائی میڈیا کی رپورٹوں کے مطابق اس جزیرے کی سیر کے دوران ہی 26 سالہ مقتولہ نے 24 سالہ مبینہ ملزم سے کچھ پوچھنے کے لیے تھوڑی سی بات چیت بھی کی تھی، جس کے بعد اس جرمن خاتون کا کسی دوسرے مقامی یا غیر ملکی باشندے سے کوئی رابطہ نہیں ہوا تھا۔ 

ایک نظر اس پر بھی

تیونس میں النھضہ پرمشتمل مخلوط حکومت کا قیام

عرب ملک تیونس میں نامزد وزیراعظم الیاس الفخفاح مسلسل ایک ماہ تک مختلف سیاسی جماعتوں کے ساتھ مشاورت اور مذاکرات کے بعد حکومت کی تشکیل میں کامیاب ہوگئے ہیں۔ تیونس کی نئی حکومت میں مذہبی سیاسی جماعت 'تحریک النہضہ' کو بھی شامل کیا گیا ہے۔

شہریت قوانین میں تبدیلی کے بعد شہریت ختم ہونے کے خطرے پر روک ضروری: اقوام متحدہ سربراہ

ہندوستان کے شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) اور مجوزہ قومی شہری رجسٹر (این آرسی) پر خدشات کے درمیان اقوام متحدہ سربراہ ایتونیو گتاریس نے کہا کہ جب کسی شہریت قانون میں تبدیلی ہوتی ہے تو کسی کی شہریت نہ جائے، اس کے لئے سب کچھ کرنا ضروری ہے-

فوری جنگ بندی ہی شام کو مکمل تباہی سے بچا سکتی ہے: اقوام متحدہ

جنگ اور خانہ جنگی کے نتیجے میں بدترین تباہی کے دہانے سے گزرتے شام کو اب صرف فوری جنگ بندی ہی دنیا کے نقشے سے مٹنے سے بچا سکتی ہے جہاں ابتک کوئی نو لاکھ لوگ بے گھر ہو چکے ہیں۔ ان خانما برباد لوگوں میں اکثریت خواتین و بچوں کی ہے، جن کی حالت غیر بتائی جاتی ہے۔