دنیا کے 8 امیر ترین افراد کی دولت دنیا کی آدھی آبادی کی دولت کے برابر

Source: S.O. News Service | Published on 2nd December 2019, 12:16 PM | عالمی خبریں |

لندن،2/دسمبر (ایس او نیوز/ایجنسی)  دنیا بھر میں معاشی عدم مساوات یعنی امیر اور غریب کے درمیان فرق بڑھتا جا رہا ہے، دنیا بھر میں غربت دور کرنے کےلیے کام کرنے والے ادارے ’آکسفیم‘ کی رپورٹ سامنے آگئی جس میں کہا گیا ہے کہ دنیا کے 8 امیر ترین افراد کے پاس اتنی دولت ہے جو دنیا کی آدھی آبادی کے دولت کے برابر ہے۔

’آکسفیم‘ کے مطابق دنیا میں 1810 ارب پتی موجود ہیں، جن کے پاس موجود دولت دنیا کے 70 فیصد افراد کے برابر ہے، دنیا کی آدھی غریب ترین آبادی میں سے 80 فیصد افریقہ اور ہندوستان میں رہتے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق دنیا کے امیر ترین فرد جیف بیزوس کے پاس اتنی دولت ہے کہ وہ 3 سال تک پاکستان جیسے ملک کے سالانہ بجٹ کے پیسے اپنے پلے سے ادا کرسکتے ہیں، تاہم وہ اپنی تمام تر دولت کے ساتھ امریکہ کو صرف پانچ دن چلا پائیں گے۔ آکسفیم سے پہلے مشہور عالمی میگزین ’فوربس‘نے دنیا کے امیر ترین افراد کی فہرست جاری کی تھی۔

فہرست کے مطابق دنیا کا امیر ترین شخص ای کامرس کمپنی آمیزون کے جیف بیزوس ہے، جس کے پاس کل دولت 131 ارب امریکی ڈالر ہے۔ امیر ترین افراد کی فہرست میں مائیکرو سافٹ کے بانی بل گیٹس دوسرے نمبر پر ہیں، جن کے اثاثہ ساڑھے 96 ارب ڈالر ہیں، وہ اپنے اثاثوں میں سے تقریباً 36 ارب ڈالر اپنی فلاحی تنظیم کو عطیہ کر چکے ہیں ورنہ وہ اور بھی امیر ہوتے۔فہرست میں تیسرے نمبر پر وارن بفیٹ ہیں جو 60 سے زائد کمپنیوں کے مالک ہیں، ان کی دولت ساڑھے 82 ارب ڈالر ہے۔

کرسچن ڈایور سمیت کئی لگژری آئٹمز بنانے والی کمپنیوں کے مالک بغناغد آغنوت 76ارب ڈالر کے ساتھ چوتھے نمبر پر ہیں۔ میکسیکو کے کارلوس سلم پانچویں، اسپین کے امینسیو اورٹیگا چھٹے، اوریکل کے لیری ایلیسن ساتویں اور فیس بک کے مارک زکربرگ آٹھویں نمبر پر ہیں۔ ’ اکنامک ٹائمز‘ کے مطابق ہندوستان کے امیر ترین آدمی مکیش امبانی بھارت کا 20 دن کا خرچہ اٹھا سکتے ہیں۔ چین کے امیر ترین آدمی علی بابا کے جیک ما چین کا 4 دن کا خرچہ چلا سکتے ہیں جبکہ سعودی عرب کے پرنس الولید چاہیں تو اپنے ملک کا خرچہ 26 دن تک چلا سکتے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

لبنان: تین روزہ قومی سوگ کا آغاز، عالمی امداد بھی جاری

لبنان میں جہاں ایک طرف زبردست دھماکے کی وجوہات کی تفتیش جاری ہے وہیں جمعرات سے تین روزہ قومی سوگ کا آغاز ہوگیا ہے۔ بیروت میں ہونے والے دھماکے میں 135 افراد ہلاک ہوئے تھے۔لبنان کے دارالحکومت بیروت میں منگل کے روز ہونے والے بم دھماکے سلسلے میں حکومت نے جس تین روزہ سوگ کا اعلان کیا ...

عالمی ادارہ صحت نے کہا؛ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے سے بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملات، نوجوان مریضوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کا کہنا ہے کہ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے کی وجہ سے گزشتہ پانچ ماہ کے دوران کرونا وائرس سے متاثرہ نوجوانوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ کے مطابق فروری کے آخر سے لے کر جولائی کے وسط تک، کرونا وائرس کا شکار ہونے والے 60 لاکھ ...

جاپانی ماہرین کا کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے لئے سوپر کمپیوٹر کے استعمال کا اعلان

کورونا وائرس کی روکتھام کے اقدامات سے متعلق جاپان کے انچارج وزیر نیشی مورا یاسوتوشی نے امید ظاہر کی ہے کہ حکومت، مصنوعی ذہانت اور دیگر ٹیکنالوجیز کو بروئے کار لاتے ہوئے، انفیکشنز پر قابو پانے کے نئے موثر اقدامات دریافت کرنے میں، رواں ماہ کے آخر تک کامیاب ہو جائے گی۔ جاپانی ...

بیروت میں ہوئے زبردست دھماکہ کی کیا ہے اصل کہانی ؟ 6 سال سے ایک بحری جہاز پر 2750 ٹن دھماکا خیز مواد امونیم نائٹریٹ رکھا ہوا تھا؛ اب تک 135 کی موت

بیروت،06 /اگست (آئی این ایس انڈیا)منگل چار اگست کی سہ پہر ہونے والے زور دار دھماکے کے نتیجے میں بیروت میں بحری جہازوں کے لنگر انداز ہونے کا مقام مکمل طور پر تباہ ہو گیا۔ اس کا شمار لبنان کے اہم ترین مقامات میں ہوتا ہے جو ریاستی خزانے میں مالی رقوم پہنچانے کا نمایاں ترین ذریعہ تھا۔ ...