ورلڈ کپ پا کر انگلینڈ جھوم اُٹھا مگر فتح کے فارمولہ پر تنقیدیں ، آئی سی سی کو متنازع ضابطے پر نظرثانی کا مشورہ دیا 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th July 2019, 12:26 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں | اسپورٹس |

لندن، نئی دہلی، 16؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) اتوار کو اعصاب شکن میچ میں انگلینڈ کی فتح سے جہاں پورا برطانیہ جھوم اٹھا ہے اور ملک بھر میں جشن کا ماحول ہے وہیں انٹر ننشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی ) کا وہ ضابطہ تنقیدوں کی زد پر آگیا ہے جس کی وجہ سے میچ اور بعد میں سُوپر اوور کے بھی ٹائی ہونے کے باوجودانگلینڈ کو فاتح قرار دیا گیا۔ ہندوستانی کرکٹ کھلاڑیوں سمیت عالمی سطح پر مذکورہ ضابطے پر سوال اٹھنے لگے ہیں اور اس پر نظرثانی کا مطالبہ بھی ہونے لگا ہے ۔ 

ٹریفل گراسکوائر میں جش، فتح کا جلوس نکالنے کی مانگ: اتوار کو ورلڈ کپ کا فائنل میچ دیکھنے کیلئے لندن کے مشہور ٹریفل گراسکوائر میں ایک بڑا اسکرین لگا کر میچ دیکھنے کا نظم کیا گیا تھا۔ اسے برطانونی کرکٹ کی تاریخ کی سب سے بڑی تقریب سے تعبیر کیا جارہا ہے جہاں ہزاروں افراد نے پہنچ کر دلوں کی دھڑکنیں روکدینے والے اس میچ کا لطف  لیا بلکہ انگلینڈ کی فتح کے اعلان کے بعد پورا میدان جشن سے جھوم اُٹھا ۔ پیر کو برطانیہ کے کرکٹ شائقین نے ورلڈ کپ جیتنے پر جشن کا جلوس نکالنے کی خواہش ظاہر کی مگر لندن کی انتظامیہ نے انہیں اس کی اجازات نہیں دی۔ انگلش کرکٹ بورڈ نے فتح کے جلوس کیلئے گریٹر لندن اٹھاریٹیسے رابطہ کیا مگر اسے اس کی اجازت نہیں دی گئی کیوں کہ اتوار کے کرکٹ ورلڈکپ فائنل اور ایشیز سیریز کے شروع ہونے میں بہت کم وقت ہے۔ لندن اتھاریٹی کے مطابق اس کی وجہ سے انتظامی دقتیں پیش آسکتی ہیں۔ بہرحال شائقین کرکٹ ہار ماننے کو تیار نہیں ہیں۔ انہوں نے لندن کی سڑکوں پر فتح کا جلوسنکالنے کیلئے چینج ڈاٹ آرگ میں ایک عوامی پٹیشن شروع کردیا ہے جس کو تیزی سے مقبولیت حاصل ہورہی ہے۔ 

ملکہ الزبتھ نے ٹیم کو مبارکباد پیش کی : اس بیچ ملکہ برطانیہ ایلزبتھ نے بھی کرکٹ ٹیم کو مبارکباد پیش کی جبکہ اس سے قبل شہزادہ انڈریو ، دی ڈیوک آف یارک نے میدان میں برطانوی کرکٹ ٹیم کو اپنے ہاتھوں سے ورلڈ کپ دیتے ہوئے انہیں مبارکباد پیش کی۔ ان کے علاوہ وزیراعظم تھریسامے نے بھی اپنی ٹیم کواعصاب شکن مقابلے میں تاریخی فتح پر مبارکباد دی ۔ بکنگھم پیلس سے جاری ہونے والے ملکہ کے پیغام میں کہا گیا ہے کہ ’’پرنس فلپ اور میں ورلڈ کپ فائنل میں سنسنی خیز مقابلے میں انگلینڈ کی ٹیم کی فتح پر پُرجوش مبارکباد دیتے ہیں۔ ‘‘ اس کے ساتھ ہی ملکہ نے نیوزی لینڈ ٹیم کے کھیل کی بھی ستائش کرتے ہوئےکہا ہے کہ ’’انہوں نے پورے میچ میں شاندار مقابلہ کیا۔‘‘ 

فتح کا سبب بننے والا ضابطہ تنقیدوں کی زد پر : اتوار کو سانسیں روک دینے والے  مقابلے میں سُوپر اوور کے آخری گیند پر نیوزی لینڈ نے ایک رن بنا کر اسکور برابر کردیا تھا ۔ اس کے باوجود انگلینڈ کی فتح کے اعلان نے جہاں دنیا بھر کے کرکٹ شائقین کو تھوڑی دیر کیلئے حیران کردیا وہیں اب اس ضابطے پر پوری کرکٹ  برادری تنقیدیں کررہی ہے جس کی رو سے مقابلہ برابر ہونے کے باوجود انگلینڈ کو فاتح قرار دیا گیا ۔ ورلڈ کپ کے مقابلوں میں سب سے زیادہ رن بنانے والے کھلاڑی اور ہندوستانی بلے باز روہت شرما نے زیادہ چوکے لگانے کی بنیاد پر انگلینڈکو فاتح قرار دینے کے ضابطے پر ’’سنجیدگی ‘‘ سے نظرثانی کی ضرورت پر زوردیا ہے۔ دیگر کئی کھلاڑیوں نے اس ضابطے کو ’’بے تکا ‘‘ قرار دیا ہے۔

واضح رہے کہ اتوار کے مقابلے میں انگلینڈ نے 22چوکے اور 2چھکے لگائے تھے جبکہ نیوزی لینڈ نے صرف 16؍ چوکے  ہی لگائے تھے۔ میچ میں انگلینڈ ٹیم کا پوری قوت سے مقابلہ کرنے اور اسے برابری پر ختم کرنے کے باوجود کم چوکے لگانے کی وجہ سے خطاب کا حق دار برطانوی ٹیم کو قرار دیا گیا ۔

اکثر کھلاڑیوں نے ضابطے پرنظرثانی کا مطالبہ کیا: پورے ٹورنامنٹ میں 648؍ رن  بنا کر بلے بازی میں سرفہرست رہنے والے روہت شرما نے پیر کو ٹویٹ کر کے آئی سی سی کے ضابطے پر حیرت کا اظہار کیا۔ ان کے مطابق ’’کرکٹ کے چند ضوابط پر سنجیدگی سے نظرثانی کی جانی چاہئے۔ سابق کھلاڑی گوتم گمبھیر جوابرکن پارلیمان ہیں نے آئی سی سی پر اپنا غصہ نکالتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے کہ ’’میری سمجھ میں نہیں آتا کہ اتنی اہم سطح کے مقابلے کا فیصلہ اس بنیاد پر کیسے ہوسکتا ہے کہ کس نے زیادہ چوکے لگائے ۔ آئی سی سی کا یہ ضابطہ مضحکہ خیز ہے۔ اسے ٹائی قرار دیا جانا چاہئے تھا۔ میں شاندار مقابلے کیلئے دونوں ٹیموں کو مبارکباد دیتاہوں۔‘‘ یووراج سنگھ نے بھی آئی سی سی کے رول سے اختلاف کیا اور کہا ہے کہ ’’ میں اس رُول سے متفق نہیں ہوں مگر رول تو رول ہے۔ 

انگلینڈ کو بالآخر ورلڈ کپ جیتنے پر مبارکباد مگر میرا دل نیوزی لینڈ کیلئے تڑپ رہا ہے، انہوں نے آخری لمحے تک مقابلہ کیا۔ ‘‘ نیوزی لینڈ کے سابق آل راؤنڈ ر اسکاٹ اسٹائرس نے آئی سی سی کے مذکورہ ضابطے کو لطیفہ قرار دیتے ہوئے ٹویٹ کیا ہے کہ ’’بہت خوب آئی سی سی ، یہ اچھا لطیفہ ہے۔‘‘ تنقید کرنے والوںمیں بشن سنگھ بیدی، راج دیپ سردیسائی  اور دیگر کئی اہم شخصیات شامل ہیں۔ آسٹریلیا کے سابق بلے باز ڈین جونس بھی آئی سی سی کے فیصلے کو ہضم نہیں کرسکے۔ انہوں نے اپنے ردعمل میں کہا ہے کہ ’’ڈکورڈلوئس سسٹم بنیادی طور پر رنوں اور وکٹوں پر مبنی ہے ، پھر بھی فائنل میچ کا فیصلہ چوکوں کی بنیاد پر ہوا؟میرے خیال سے یہ مناسب نہیں ہے۔‘‘آسٹریلیا کے سابق گیند باز بریٹ لی نے ضابطے میں تبدیلی کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’فاتح کا فیصلہ اس طرح کیا جانا بڑا خوفناک ہے۔‘‘ نیوزی لینڈ کے سابق آل راؤنڈر ڈیون ناش نے مقابلے کے بعد کہا کہ ’’میں ٹھگا ہوامحسوس کررہوں۔‘‘2015 کے ورلڈ کپفائنل مقابلے میں نیوزی لینڈ ٹیم کا حصہ رہنے والے کائل ملس نے فیصلے پر حیرت کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ’’میرے خیال سے رن اور وکٹ کا کھیل ہے، جب رن برابر ہوگئے تھے تو فیصلہ وکٹوں کی بنیاد پر ہونا چاہئے تھا۔ ‘‘ عوامی سطح پر بھی آئی سی سی کے مذکورہ ضابطے کا مذاق اُڑ رہا ہے۔ سوشل میڈیا پر خاص طورسے مذکورہ فیصلے کی بنیاد پر آئی سی سی کو نشانہ بناتے ہوئے لطائف گشت کررہے ہیں۔ 

فائنل مقابلے میں اللہ ہمارے ساتھ تھا: ایون مورگن 
کرکٹ ورلڈ کپ 2019 کے فائنل میں قسمت انگلینڈ پر پوری طرح سے مہربان نظر آئی ۔ عالمی چمپئن شپ کا تاج سر پر سجانے کے بعد پریس کانفرنس میں انگلینڈ کے کپتان ایون مورگن سے ’خوش قسمتی‘ سے متعلق سوالات کئے گئے ۔ مورگن کا کہنا کہ آخری اوور میں رُب آف گرین ‘ ان کے حق میں ہوا۔آئرلینڈ سے تعلق رکھنے والے مورگن سے ایک سوال پوچھا گیا کہ ان کی فتح میں ’آئرش لّک ‘ کا کتنا کردار تھا تو انہوں نے کہا کہ انہیں میچ کے دوران عادل رشید نے بتایا تھا ’’اللہ ہمارے ساتھ ہے۔‘‘ مورگن نے کہا کہ ’’اللہ بھی ہمارے ساتھ تھا۔ میں نے عادل رشید سے پوچھا تو اس نے کہا کہ اللہ یقیناً ہمارےساتھ ہے۔ میں نے کہا کہ ہمیں ’رُب آف گرین ‘ملا۔ ‘‘ مورگن کا کہنا تھا کہ یہی دراصل انگلینڈ ٹیم کی بہترین مثال ہے کہ ہم سب مختلف پس منظر، ثقافت اور ممالک میں پروان چڑھے ہیں۔ انگلینڈ کے اسپنر معین علی اور عادل رشید کے والدین پاکستانی تھے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

شہریت ترمیمی بل کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکامسلم متحدہ محاذ کے زیر اہتمام ملّی و سماجی تنظیموں کا زبردست احتجاجی مظاہرہ

سماج کو مذہبی بنیادوں پر تقسیم کرنے والے مرکزی حکومت کے شہریت ترمیمی بل (سی اے بی) کے خلاف بنگلورو میں کرناٹکا متحدہ محاذ کے زیر اہتمام دوپہر 12بجے ٹاؤن ہال کے پاس ایک زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا گیا۔

مجلس اتحاد المسلمین شہریت بل کی کاپی اور حکمرانوں کے پتلے ندر آتش کرے گی

شہریت ترمیمی بل کی پارلیمنٹ میں لوک سبھا سے منظوری پر شدیدردعمل کااظہارکرتے ہوئے آل انڈیامجلس اتحادالمسلمین بہار شاخ کے صدر اور سابق رکن اسمبلی اختر الایمان نے کہا ہے کہ مجلس اتحاد المسلمین جلد ہی شہریت بل کی کاپی اور حکمرانوں کے پتلے ندرآتش کرے گی۔ یہ اطلاع انہوں نے اپنے ...

نتیش نے شہریت ترمیمی بل کو حمایت دے کر عوام کے ساتھ دھوکہ کیا: تیجسوی یادو

  بہار اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر تیجسوی پرساد یادو نے منگل کے روز کہا کہ وزیراعلیٰ اور جنتادل یونائیٹیڈ (جے ڈی یو) کے قومی صدر نتیش کمار نے شہریت ترمیمی بل کی حمایت کر کے عوام کے ساتھ راشٹریہ سوئم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) اور بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) سے بھی بڑا دھوکہ کیا ہے۔

شہریت ترمیمی بل کے خلاف عوام سڑکوں پر اتر آئے ملک کی متعدد ریاستوں میں زبردست احتجاج۔ آسام میں بند۔ تریپورہ میں پر تشدد مظاہرے

متنازع شہریت ترمیمی بل کے خلاف ملک کی متعدد ریاستوں میں برہمی کی لہر دوڑ گئی ہے۔ مظاہرین میں نوجوانوں اور طلبا کی تعداد زیادہ رہی ہے جنہوں نے شاہراہوں پرآمد ورفت روک کر اور ٹائروں کو نذر آتش کرکے اپنے غصے کا اظہار کیا۔

شہریت ترمیمی بل: دستور سے کھلواڑ ........... آز: معصوم مرادآبادی

ہندوستان کے سیکولرجمہوری آئین پر ایک ایسا خطرناک ہتھوڑا چلنے والا ہے جس کی زد میں آنے والی ہر چیز ٹوٹ پھوٹ کر رہ جائے گی ۔حکومت شہری قانون میں ایک ایسی تباہ کن ترمیم کرنے جارہی ہے جو مذہبی تعصب اور مسلم دشمنی کی بدترین مثال ہے۔عام خیال یہ ہے کہ مجوزہ شہریت ترمیمی بل مسلمانوں ...

  بغداد میں مسلح حملہ آوروں کے مظاہرین پرخونیں حملے کے باوجود احتجاج جاری

عراق کے دارالحکومت بغداد میں نامعلوم مسلح حملہ آوروں کے خونریز حملے کے باوجود مظاہرین نے حکومت مخالف احتجاج جاری رکھا ہوا ہے اور وہ جنوبی شہروں میں بھی اپنے مطالبات کے حق میں احتجاجی مظاہرے کررہے ہیں۔بغداد میں جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب نامعلوم حملہ آوروں نے مظاہرین پر ...

مینگلور میں بھی بھٹکلی طالب علم کا شاندار پرفارمینس؛ تیسری بارلگاتار یونیورسٹی بلیو کا خطاب

 مینگلور کی ایس ڈی ایم لاء کالج میں زیر تعلیم  بھٹکل کا فٹ بال کھلاڑی محمد رائف گنگاولی نے اپنی کالج کی نمائندگی کرتے ہوئے پھر ایک باربہترین پرفارمینس پیش کرکے یونیورسٹی بلیو کا خطاب جیتنے میں کامیاب ہوگیا ہے جس کے ساتھ ہی وہ اب کرناٹکا اسٹیٹ لاء یونیورسٹی ہبلی کی نمائندگی ...

وراٹ کوہلی اور کے ایل راہل کی طوفانی بلے بازی ،پہلے ٹی ٹوئنٹی مقابلے میں ہندوستان نے ویسٹ انڈیز کو 6وکٹ سے دی شکست

تین ٹی 20 میچوں کی سیریز کے پہلے میچ میں کپتان وراٹ کوہلی کی شاندار اننگز کی بدولت ہندوستان نے حیدرآباد کے راجیو گاندھی انٹرنیشنل اسٹیڈیم میں ویسٹ انڈیز کو چھ وکٹوں سے شکست دی ۔ ٹاس ہار کر پہلے بلے بازی کرتے ہوئے ویسٹ انڈیز کی ٹیم نے مقررہ 20 اوورس میں پانچ وکٹ کے نقصان پر 207 رنوں ...

منکی اور مرڈیشور کے ساحل اور محمد حیات کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کے کرکٹ یونیورسٹی بلیو منتخب

کھیل کے میدان میں بھٹکل اور اطراف کے کھلاڑیوں کا یونیورسٹی بلیو منتخب ہونا عام ہوتاجارہا ہے، تازہ خبر یہ ہے کہ  پڑوسی علاقہ منکی اور مرڈیشور سے تعلق رکھنےو الے دونوجوان کرکٹ میں کرناٹکا یونیورسٹی دھارواڑ کی کرکٹ ٹیم کے لئے  منتخب ہوگئے ہیں