امریکہ نے پھر سے کیوں بنایا افغانستان کو نشانہ؟ ........ آز: مھدی حسن عینی قاسمی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th April 2017, 4:27 PM | عالمی خبریں | آپ کی آواز |

               کوئی بھی سرمایہ دار ملک  پہلے آپ  کو متشدد  بناتا ہے اور ہتھیار مفت دیتا ہے پھر ہتھیار فروخت کرتا ہے، پھر جب آپ  امن کی بحالی کی کوشش کر رہے ہوتے ہیں تو آپ کے اوپر بم گرا دیتا ہے. ٹھیک یہی کہانی ہے امریکہ اور افغانستان کی، پہلے امریکہ نے  افغانستان کو طالبان اور  القاعدہ دیا، پھر جب وہ اسلام کے نام پر تشدد برتنے لگے تو انہیں مفت اسلحے دئیے،پھر انہیں اسلحہ فروخت کئے،سب کچھ ہوگیا اب امن کی بحالی کا سلسلہ شروع کیا گیا تو  امریکہ نے ہیروشیما کی تاریخ افغانستان میں دہرا دی،  *مدرس آف آل بمبس* تقریباًایک  ٹن وزنی بم کے  افغانستان میں گرائے جانے کے کئی وجوہات ہیں 

1) دیگر صدور کی طرح ٹرمپ کا بھی خود کو  تاریخی شخصیت کے طور پر پیش کرنے کا خواب

2) افغانستان کو روس سے دور رکھنے کی کوشش

3) روس کے خلاف بالواسطہ طاقت کی نمائش  (جبکہ روس کے پاس بھی "فادر آف بمبس"  ہے) 

4)ہندوستان کو یہ پیغام دینا کہ اگر امریکہ كشمير معاملے میں ثالثی بننے کی پہل کر رہا ہے تو انکار نہیں کرنا ہے،ورنہ یہی حشر ہوگا،

5) میڈیا و نیوز چینلوں  کو دوبارہ یاد دلانا  کہ بغدادی اب بھی زندہ ہے،

(6)اور ان سب سے بڑھی وجہ عالم اسلام اور مسلمانوں کو پھر سے بربریت کا نشانہ بنانے کی ہنکار سنانا.

(07)دنیا کو پھر سے اپنی چودھراہٹ کا اعتراف دلانا،

دہشت گردی کے نام پر پھر سے اسلامیان عالم کو نشانہ بنانا.

(08)پھر سے ایک عالمی جنگ کا بگل بجانا،  دو عالمی طاقتوں کا ٹکرانا، نتیجہ میں ہمیشہ کی طرح کسی مسلم ملک کا تباہ ہونا. 

(09)ترکی کو یہ پیغام دینا کہ اسلام پسندی اور خود اعتمادی چھوڑ کر عالمی پالیسیوں کے مطابق چلو،یا ترکی کو مسلمانوں پر حملہ کرکے بر انگیختہ کرنا.

  لاکھوں کی آبادی والے علاقہ میں اس بم کے گرائے جانے کے بعد یقینی طور پر ہزاروں لوگ جاں بحق ہونگے،لیکن میڈیا اسے نہیں دکھائے گا،اور اقوام متحدہ مذمت کرکے پوری دنیا کو خاموش کردےگا.یہ ایک عالمی سازش ہے جس میں ان تمام ممالک کو گھسیٹنے کی کوشش ہے جو خود کچھ کر گزرنے کی ہمت جٹا رہے ہیں،  اس لئے ہندوستان سمیت سبھی ایشیائی وخلیجی ممالک کو چاہئے کہ ان سرمایہ دار ممالک سے دوری بنائیں اور ترکی کی طرح اپنے پیروں پر کھڑے ہوکر ترقی کریں ورنہ وہ دن دور نہیں کہ امریکہ یا کوئی دوسرا سرمایہ دار ملک دنیا کے کسی بھی خطہ کو دہشت گردی سے متاثرہ بتلاکر اسے شمشان بنادےگا.

ایک نظر اس پر بھی

کورونا: کئی ممالک غلط سمت میں جا رہے ہیں، بد سے بدتر ہو جائیں گے حالات: ڈبلیو ایچ او

ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) کے ڈائریکٹر جنرل ٹیدروس ایڈہانوم گیبریسس نے متعدد ممالک کے اقدامات پر عدم اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے خبردار کیا ہے کہ اگر بنیادی اقدامات پر عمل نہیں کیا گیا تو یہ وبا پھیلتی جائے گی۔

ووٹنگ کے ذریعے ہانگ کانگ میں علامتی احتجاج

ہانگ کانگ میں لاکھوں شہریوں نے چین کے سرکاری انتباہ کے باوجود ووٹ ڈالے۔ جس کا مقصد جمہوریت نواز لیڈروں کا انتخاب کرنا تھا جو ستمبر میں ہونے والے انتخابات میں اپنے اپنے حلقوں کی نمائندگی کریں گے۔

بے باک، نڈراورقائدانہ صلاحیت کا، کما حقہ استعمال،مختلف الزاویاتی فوائد کے حصول میں ممد و مددگار ہوا کرتی ہے ۔۔۔ نقاش نائطی

مجھے شہر بھٹکل میں اُس وقت پھوٹ پڑنے والے فساد کے تناظر میں غالبا بنگلور سےبھٹکل تشریف لائے آئی جی پولیس کی موجودگی میں،اس وقت کی مجلس اصلاح و تنظیم کے وفد کی نیابت کرتے ہوئے سابق صدر تنظیم المحترم سید محی الدین برماور کی قیادت کا منظر یاد آرہا ہے۔ انہوں نے پریس کی موجودگی ...

کیا مسلمان بھی ہندوستانی شہری حقوق کے حق دار ہیں؟           از :سیدمنظوم عاقب لکھنو

پچھلے٩دسمبرسےحکوت ہنداورہندوستانی شہریوں کےبیچ ایک تنازعہ چل رہاہےجسکاسردست کوئی حل نظرنہیں آرہاہے،کیونکہ ارباب اقتدارسی اےاےکیخلاف احتجاج اوراعتراض کرنےوالوں کویہ باورقراردیناچاہتی ہیں کہ آپکااعتراض اوراحتجاج ہمارےلئے اہمیت کاحامل نہیں ہےاوراحتجاج اورمخالفت ...

ائے ارسلہ ! آہ! ظلم پھر ظلم ہے۔۔۔۔ خداتجھے سرسبز،شاداب ،آباد رکھے (بھٹکل کی ایک دینی بہن کا ملک سے جانے پر مجبور کی گئی بھٹکلی بہو کے نام ایک تاثراتی خط )

بھٹکل کی بہو پر گذشتہ روز جس طرح کے حالات پیش آئے، اُس پر بھٹکل کی ایک بہن نے میڈیا کے ذریعے ایک تاثراتی پیغام دیا ہے۔ جسے یہاں شائع کیا جارہا ہے۔

بھٹکل میں طبی سہولیات کا ایک جائزہ؛ تنظیم میڈیا ورکشاپ میں طلبا کی طرف سے پیش کردہ ایک رپورٹ

مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل کی جانب سے منعقدہ پانچ روزہ میڈیا ورکشاپ میں جو طلبا شریک ہوئے تھے، اُس میں تین تین اور چار چار طلبا پر مشتمل الگ الگ ٹیموں کو شہر بھٹکل کے مختلف مسائل کا جائزہ لینے اور اپنی رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت دی گئی تھی، اس میں سے ایک  ٹیم جس میں  حبیب اللہ محتشم ...

بھٹکل کے سی سی ٹی وی کیمرے کیا صرف دکھاوے کےلئے ہیں ؟

شہر بھٹکل پرامن ، شانتی کا مرکز ہونے کے باوجود اس کو شدید حساس شہروں کی فہرست میں شمار کرتے ہوئے یہاں سخت حفاظتی اقدامات کی مانگ کی جاتی رہی ہے۔مندرنما ’’ناگ بنا ‘‘میں گوشت پھینکنا، شرپسندوں کے ہنگامے ، چوروں کی لوٹ مار جیسے جرائم میں اضافہ ہونے کے باوجود شہری عوام حفاظتی ...