امیر بی جے پی لیڈر غریب ’جے این یو طلبہ‘ کی حمایت کیوں کریں گے: سماج وادی پارٹی

Source: S.O. News Service | Published on 20th November 2019, 11:06 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،20/نومبر(ایس او نیوز/یو این آئی)  سماج وادی پارٹی کے رہنما رام گوپال یادو نے فیس میں اضافہ کے خلاف پرامن مظاہرہ کر رہے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ پر پیر کے روز پولس لاٹھی چارج کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی طلبہ کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتی ہے اور ضرورت پڑنے پر وہ بھی احتجاجی مظاہروں میں شامل ہوگی۔

رام گوپال یادو نے آج پارلیمنٹ کے احاطے میں نامہ نگاروں سے کہا کہ جے این یو ملک کی سب سے بڑی اور باوقار یونیورسٹیوں میں شامل ہے جہاں مختلف طرح کی فیس اتنی بڑھادی گئی ہے جنہیں غریب طلبہ کے لئے برداشت کرنا ممکن نہیں ہے۔ اس کے خلاف میں پرامن مظاہرہ کرنے والے طلبہ پر پولس نے بے رحمی سے لاٹھی چارج کیا جو انتہائی قابل مذمت ہے۔

انہوں نے کہا کہ جے این یو ایک عالمی سطح کی یونیورسٹی ہے۔ یہا ں تعلیم حاصل کرنے والے بیشتر طلبہ غریب ہیں اور ان کی تحریک درست ہے جس کی سماج وادی پارٹی مکمل حمایت کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر ان کی پارٹی طلبہ کے احتجاجی مظاہروں میں شامل بھی ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ افسوس کی بات یہ ہے کہ این ڈی اے حکومت کے وزیر خارجہ ایس جے شنکر اور وزیر خزانہ نرملا سیتا رمن جے این یو سے تعلیم حاصل کرکے اس مقام تک پہنچے ہیں لیکن ان کی حکومت وہاں کے طلبہ کے ساتھ انصاف نہیں کرکے ’ان کی پرامن تحریک کو طاقت کے زور پر کچل رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی سے وابستہ افراد امیر ہیں جنہیں غریب طلبہ کی پریشانیوں کا احساس نہیں ہے اس لئے وہ غریب طلبہ کے حق کی آواز نہ اٹھاکر ان کے ساتھ ہونے والی بربریت کی حمایت کررہے ہیں۔

رام گوپال یادونے کہا کہ اس سنگین مسئلہ کو پارلیمنٹ میں زور دار طریقے سے اٹھایا گیا ہے اور اگر جے این یو کے طلبہ کے ساتھ انصاف نہیں کیا گیا تو پھر اس معاملے کو راجیہ سبھا میں اٹھایا جائے گا۔ خیال رہے کہ جے این یو کے طلبہ کے مظاہرے کے دوران ان پر کی گئی لاٹھی چارج کے خلاف راجیہ سبھا میں زبردست ہنگامہ ہوا جس سے ایوان کی کارروائی ملتوی کرنی پڑی۔

ایک نظر اس پر بھی

ملک میں کورونا نے توڑا اب تک کا تمام ریکارڈ، 24 گھنٹے میں 24,805 نئے معاملے، 613 اموات

 ملک میں کورونا انفیکشن کے بڑھتے ہوئے پھیلاؤ کے درمیان گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران سب سے زیادہ 24،850 نئے معاملے رپورٹ ہونے کے سبب ہندوستان انفیکشن سے متاثرہ ممالک کی فہرست میں تیسرے نمبر پر روس کے بہت قریب پہنچ گیا ہے۔ اس عرصے میں ریکارڈ 613 افراد کی موت ہوئی ہے۔

معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی کا انتقال

 کوہ کن کے معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ء ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی نے سنیچر کے روز مختصر علالت کے بعد 84 سال کی عمر میں داعی اجل کو لبیک کہہ دیا۔ موصوف قدیم دینی و علمی درسگاہ دار العلوم حسینیہ شری وردھن ضلع رائے گڑھ (مہاراشٹرا) کے مہتمم بھی تھے۔

’کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے؟ مودی جی کو بتانا چاہیے‘

 کانگریس نے کہا ہے کہ چین نے وادی گلوان میں ہندوستانی حدود میں دراندازی کی ہے اور اس کے فوجی دستے ملک کے اسٹریٹجک نقطہ نظر سے متعدد اہم علاقوں میں تعینات ہیں، اس لیے اب وزیر اعظم نریندر مودی کو یہ بتانا چاہiے کہ کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے۔

آج 16 پوزیٹیو آنے والوں میں تین دبئی سے اور آٹھ وجے واڑہ سے لوٹے لوگ شامل

بھٹکل کے آج جن 16 لوگوں کی رپورٹ کورونا  پوزیٹیو آئی ہے، اُن میں سے تین لوگ دبئی سے آئے ہوئے لوگ ہیں، آٹھ لوگ وجئے واڑہ ،  تین لوگ  اُترپردیش  اور مہاراشٹرا سے لوٹا ہوا ایک شخص بھی آج کی لسٹ میں شامل ہیں۔

کورونا اَپ ڈیٹ:جنوبی کینرامیں آج صبح سے اب تک ہوئی 2افراد کی موت۔ضلع میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد ہوئی 22

جنوبی کینرا میں کورونا وباء کے اثرات بہت زیادہ سنگین صورت اختیار کرتے جارہے ہیں۔ آج صبح سے اب تک کووِڈ کے 2 مریض موت کا شکار ہوگئے ہیں جس کے بعد ضلع میں وباء کی وجہ سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 22ہوگئی ہے۔

بھٹکل میں نجی اسپتال کی نرس کو لگ گیا کورونا کا مرض۔ایس ایس ایل سی کی طالبہ نرس کی بیٹی کو کیا گیا ہوم کوارنٹین

ایک نجی اسپتال میں خدمات انجام دینے والی نرس کو کووِڈ کا مرض لاحق ہونے کے بعدایس ایس ایل سی کا امتحان دے رہی اس کی بیٹی کو امتحان سے باز رکھتے ہوئے ہوم کوارنٹین کیا گیا ہے۔