کرناٹک کے کنک پورا میں بی جے پی-آر ایس ایس عیسیٰ مسیح کی 114 فیٹ اونچی مورتی بنانے کے خلاف، سڑک پر کیا ہنگامہ

Source: S.O. News Service | Published on 14th January 2020, 11:25 AM | ریاستی خبریں |

کنک پورا،14/جنوری (ایس او نیوز) کرناٹک کے کنک پورا شہر میں عیسیٰ مسیح کی ایک عظیم الشان مورتی تعمیر کیے جانے کا منصوہب بنایا گیا ہے۔ اس منصوبہ سے بی جے پی اور آر ایس ایس کافی ناراض ہے اور اس کے خلاف احتجاجی مظاہرہ تک شروع کر دیا ہے۔ میڈیا ذرائع سے موصول ہو رہی خبروں کے مطابق عیسیٰ مسیح کی مورتی تعمیر ہونے کی خبر پھیلنے کے بعد ہی آر ایس ایس اور اس کی ذیلی تنظیموں میں چہ می گوئیاں شروع ہو گئی تھیں، اور جیسے ہی کانگریس کے سینئر لیڈر ڈی کے شیوکمار نے مورتی تعمیر کیے جانے والی جگہ کا دورہ کیا، ان کا غصہ پھوٹ پڑا۔ اس مورتی کی تعمیر کی مخالفت میں آر ایس ایس، وی ایچ پی اور ہندو جاگرن ویدک نے پیر کے روز سڑک پر نکل کر زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا۔

دلچسپ بات یہ ہے کہ بی جے پی و آر ایس ایس کارکنان مورتی تعمیر کے تعلق سے کانگریس لیڈر ڈی کے شیو کمار کا نام لے رہے ہیں جب کہ ڈی کے شیوکمار نے واضح لفظوں میں میڈیا سے کہہ دیا ہے کہ وہ عیسیٰ مسیح کی مورتی تعمیر نہیں کر رہے بلکہ جن لوگوں نے یہ مورتی بنانے کا منصوبہ تیار کیا ہے، ان کی مدد کرنے کی بات کہی ہے۔ برسراقتدار بی جے پی کے علاوہ آر ایس ایس لیڈروں نے تو مورتی تعمیر کی مخالفت میں ’کنک پورہ چلو‘ کا نعرہ بھی دیا ہے۔

بی جے پی کے ذریعہ مورتی تعمیر کی مخالفت کیے جانے سے علاقے میں کشیدگی کافی بڑھی ہوئی ہے۔ اس ماحول کے پیش نظر ضلع انتظامیہ نے یہاں تقریباً 1000 پولس اہلکاروں کو تعینات کر دیا ہے۔ اس پورے تنازعہ پر کنک پورہ سے رکن اسمبلی ڈی کے شیوکمار کا کہنا ہے کہ ان کے اسمبلی حلقہ میں 114 فیٹ اونچی عیسیٰ مسیح کی مورتی بنائے جانے کا فیصلہ ان کا نہیں ہے، لیکن چونکہ عیسائی طبقہ سے جڑے مقامی لوگ اسے بنوا رہے ہیں اس لیے بطور رکن اسمبلی میں صرف ان کی مدد کر رہا ہوں۔ ڈی کے شیوکمار نے یہ بھی کہا کہ مورتی تعمیر کے لیے زمین بھی مقامی عیسائی طبقہ نے حاصل کر لی ہے اور ہر چیز قانونی طور پر کیا گیا ہے۔

ڈی کے شیوکمار نے مورتی تعمیر کے تعلق سے کچھ تفصیل بھی میڈیا کو بتائی۔ انھوں نے کہا کہ مقامی لوگ اس مورتی کی تعمیر بے کار پڑے پتھروں سے کریں گے اور میں عوامی نمائندہ ہونے کے ناطے ان کی حمایت کر رہا ہوں۔ وہ مزید کہتے ہیں کہ ’’بی جے پی اور آر ایس ایس کے لوگ بلاوجہ مورتی تعمیر کو سیاسی ایشو بنا رہے ہیں اور ماحول کو پراگندہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹکا میں زبردست گرمی ؛ 26مئی سے اگلے تین دنوں تک کرناٹکا میں زبردست بارش کے امکانات

بحرہ عرب اور خلیج بنگال میں طوفانی ہواؤں سے پیدا ہونے والے دباؤ کے نتیجے میں ریاست کے جنوبی اندرونی علاقوں اور ساحلی پٹی پر 26مئی سے اگلے تین دنوں تک زبردست بارش ہونے کا محکمہ موسمیات نے امکان جتایا ہے۔

کورونا اَپ ڈیٹ:اڈپی ضلع کے تین پولیس اسٹیشنوں کو کیا گیا سیل ڈاؤن۔کارکلا،ہلیال اور برہماور میں پولیس افسران اور اہلکارآئے کووِڈ 19کی زد میں 

اڈپی ضلع میں کووِڈ وباء کا قہر کا کچھ زیادہ ہی بڑھتا ہوا محسوس ہورہا ہے۔ اب تک ممبئی اور خلیج سے واپس لوٹنے والوں میں مرض پائے جانے کی وجہ سے یہاں مریضوں کا گراف بڑھتا جارہا تھا۔ لیکن اب ایسا لگتا ہے کہ پولیس افسران اور اہلکار بھی اس کی زد میں آ گئے ہیں۔

بنگلورو میں کل بروز پیر 25؍ مئی کو عید الفطرمنائی جائے گی

مرکزی رو ئیت ہلال کمیٹی کر نا ٹک کے رکن مولانا محمد مقصود عمران رشادی نے یہ اطلاع دی ہے کہ آج مؤرخہ29 رمضان المبارک 1441ھ م 23مئی 2020 ؁ ء بروز ہفتہ مرکزی رؤیت ہلال کمیٹی کرناٹک،بنگلورو کا ماہانہ اجلاس زیر صدارت حضرت مولانا صغیر احمد خان صاحب رشادی کنوینر مرکزی رو ئیت ہلال کمیٹی امیر ...

کرناٹک میں کورونا کا قہر، ایک ہی دن 216 کورونا وائرس سے متاثر۔ یادگیر میں سب سے زیادہ 72 کیس، متاثرین کی کُل تعداد 1959

ملک بھر میں کورونا کاقہر جاری ہے، ریاست کرناٹک میں بھی کورونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ رکنے اور تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر گزرتے لمحے اور دن کے ساتھ کورونا وائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے۔

کووِڈ کے علاج میں ایک نئی پیش رفت۔ کینسر اسپتال کے ڈاکٹروں نے تلاش کیا ایک نیا طریقہ۔ تجرباتی مرحلے پر ہورہا ہے کام!

سر اور گلے کے کینسر اورروبوٹک سرجری کے ماہر ڈاکٹر وشال راؤ کا کہنا ہے کہ ایچ سی جی کینسر اسپتال میں کووِڈ 19کے علاج کے لئے ڈاکٹروں نے ایک نئے طریقے پر کام کرنا شروع کیا ہے جس میں خون کے اندر موجود سائٹوکینس نامی ہارمون کا استعمال کیا جائے گا۔

کرناٹک میں ایک ہی دن میں 138 ؍افراد کورونا وائرس سے متاثر۔چکبالاپور میں سب سے زیادہ47 معاملات، متاثرین کی تعداد بڑھ کر ہوگئی 1743

ملک بھر میں کورونا کاقہر جاری ہے، ریاست کرناٹک میں بھی کورونا وائرس کا خوفناک پھیلاؤ رکنے اور تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے، ہر گزرتے لمحےاور دن کے ساتھ کورونا وائرس کے نئے معاملات میں اضافہ ہی ہوتا جارہا ہے۔