دہلی میں لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد مہاجر مزدوروں میں ایک بار پھر افراتفری ، وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال کی عوام سے اپیل ، کہا ؛ دہلی چھوڑ کر نہ جائیں ، یہ لاک ڈاؤن مختصر وقفے کیلئے ہے

Source: S.O. News Service | Published on 21st April 2021, 2:04 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی ،21؍اپریل (ایس او نیوز؍ایجنسی) دہلی میں لاک ڈاؤن کا اعلان ہوتے ہی ایک بار پھر دہلی کے مہا جر مزدوروں کو وہ پرانے دن یاد آگئے جب گزشتہ سال اچانک ملک بھر میں لاک ڈاؤن لگا دیا گیا تھا۔ اس کی وجہ سے وہاں پر افراتفری جیسی صورتحال پیدا ہوئی ۔لوگ جلد از جلد اپنے  وطن پہنچنے کی کوشش میں ریلوے اسٹیشنوں اور بس اڈوں پر جمع ہوگئے ۔اس کے علاوہ مزدوروں کی ایک بڑی تعداد نے پھر ٹرکوں کا سہارالیا اور اس میں بیل اور بکریوں کی طرح بھر کر اپنے اپنے گھروں کو روانہ ہوگئے۔ ان مہاجر مزدوروں میں سے زیادہ تر کا تعلق اتر پردیش، بہار، مغربی بنگال اور جھارکھنڈ سے ہے۔ اس دوران ریاست کے وزیراعلیٰ  اروند کیجریوال کی اپیل کا بھی مزدوروں پرکوئی اثر نظر نہیں آیا۔ وزیراعلیٰ  نے دہلی چھوڑ کر جانے والوں سے اپیل کرتے ہوۓ کہا کہ  وہ دہلی سے نہ جائیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ لاک ڈاؤن بہت مختصروقت کیلئے ہے۔ وزیراعلیٰ  نے عوام سے اپیل  کی وہ حکومت کا ساتھ دے کرکورونا کے خاتمے میں اہم کردار نبھا ئیں۔

دہلی میں لاک ڈاؤن کے پہلے دن منگل کو مصروف ترین بازار جہاں سنسان رہے وہیں وزیراعلیٰ  کی اپیل کے باوجود مہاجر مزدوروں کی بھاری بھیڑ آنند بہاربس اسٹیشن، ریلوے اسٹیشن اور بین ریاستی بس اڈے پر دیکھی گئی۔ یہ بھیڑ ہر گزرتے وقت کے ساتھ مسلسل بڑھتی ہی جارہی ہے۔ نئی دہلی ریلوے اسٹیشن پر بڑی تعداد میں مز دوراپنی اپنی ریاستوں کو واپس جانے کیلئے جمع ہور ہے ہیں ۔

خیال رہے کہ دہلی میں کورونا کے معاملات میں اضافے کے بعد وزیراعلیٰ  کیجریوال نے لیفٹیننٹ گورنرانل بیجل  سے ملاقات کے بعد آئندہ پیر کی صبح5  بجے تک کیلئے لاک ڈاؤن کا اعلان کیا تھا۔ اسی کے ساتھ انہوں نے مزدوروں سے اپنے اپنے گھروں کو واپس نہ جانے کی اپیل کی تھی لیکن مزدوروں کو حکومت کی یقین دہانی پراعتماد نہیں نظر آیا جس کی وجہ سے آنند بہار اور کوشامبی  کے بس اڈوں اور باہر جانے والے ریلوے اسٹیشنوں پرلوگوں کی بھاری بھیڑ دیکھی گئی۔ یہاں کووڈ کے ضابطوں پر بھی عمل نہیں کیا جار ہا تھا۔ زیادہ تر لوگوں کا کہنا تھا کہ کورونا پر قابو کے بعد ہی وہ اب دہلی لوٹیں گے۔

اس دوران دہلی کے اسپتالوں کی حالت بھی ابتر بتائی گئی ہے جہاں بیڈ کے ساتھ آکسیجن  کی  قلت پائی جارہی ہے۔ یہاں کے اسپتالوں میں منگل کو ایک بجے تک کورونا وائرس کے سنگین مریضوں کیلئے صرف 23  آئی سی یو بیڈ باقی رہ گئے تھے۔ اعدادو شار دہلی کوڈ ویب سائٹ کے ذریعہ ملنے والی معلومات سے سامنے آئی ہے۔ رپورٹ کے مطابق دہلی  میں کووڈ کے مریضوں کیلئے آئی سی یو بیڈ کی تعداد4 ہزار448 تھی جن میں سے صرف23 خالی رہ گئے ہیں۔

اس درمیان مرکزی حکومت نے کورونا کے سبب مختلف ریاستوں میں سرگرم پابندیوں کے درمیان مہاجر مزدوروں کی مددکیلئے کنٹرول روم قائم کرنے کا اعلان کیا ہے۔مزدور اور روزگار کے مرکزی سیکریٹری اپورو چندرانے بتایا کہ گزشتہ برس اپریل میں قائم کئے گئے مہاجر مزدور کنٹرول روم کوایک بار پھر شروع کر دیا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

دہلی پولیس کا شری نیواس بی وی سے پوچھ گچھ کرنا سیاسی انتقام کے سوا کچھ نہیں ہے۔ ایس ڈی پی آئی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کے قومی جنرل سکریٹری کے ایچ عبدالمجید نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں دہلی میں کوویڈ وبائی مرض سے متعلق امدادی سرگرمیوں میں حصہ لینے والے انڈین یوتھ کانگریس کے صدر شری نیواس بی وی سے دہلی پولیس کی جانب سے پوچھ گچھ کا سخت نوٹس  ...

کورونا کا خاتمہ جولائی تک نہیں ہوگا: ایکسپرٹ

جس طرح کورونا کے نئے معاملوں کی تعداد میں کمی درج ہو رہی ہے اس سے یہ امید بنی ہے کہ ہندوستان میں کورونا کی دوسری لہر کا خاتمہ جلد ہو جائے گا لیکن وبائی بیماریوں کے ماہر شاہد جمیل کا کہنا ہے کہ بھلے ہی ابھی کچھ ریاستوں میں کورونا کے کیس کم ہوتے نظر آ رہے ہوں لیکن دوسری لہر کا ...

سادگی کے ساتھ عید منائیں اور چھوٹی جماعت کے ساتھ عید کی نماز ادا کریں ، سرکردہ مسلم رہنماوں کی مسلمانوں سے اپیل

آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے صدر مولانا رابع حسنی ندوی ۔ جمعیت علماءہند کے صدر مولانا ارشد مدنی ۔ جماعت اسلامی ہند کے امیر سید سعادت اللہ حسینی سمیت دیگر سرکردہ علماء اور مسلم قائدین مسلمانوں نے اپیل کی ہے کہ وہ کرونا کے بڑھتے خطرات کے پیش نظر احتیاط کریں اور مختصر جماعت ...

لاک ڈاؤن پر ہو سختی سے عمل: اشوک گہلوت

راجستھان میں عالمی وبا کورونا کی دوسری لہر کی چین توڑنے کے لئے آج صبح 5بجے سے لے کر 24 مئی تک سخت لاک ڈاؤن نافذ ہوگیا ہے۔ اس مدت کے دوران، ہنگامی اور ضروری خدمات، میڈیکل، دودھ اور دیگر ضروری خدمات کے لئے رعایت رہے گی۔