ضلع شمالی کینرا میں پیش آ سکتا ہے پینے کے پانی کابحران۔بھٹکل سمیت 11تعلقہ جات کے 423 دیہات نشانے پر

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th January 2019, 2:17 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

کاروار28؍جنوری (ایس او نیوز) امسال گرمی کے موسم میں ضلع شمالی کینرا میں پینے کے پانی کا شدید بحران پیدا ہونے کے آثار نظر آر ہے ہیں۔ کیونکہ ضلع انتظامیہ نے 11تعلقہ جات میں 423دیہاتوں کی نشاندہی کرلی ہے، جہاں پر پینے کے پانی کی شدید قلت پیدا ہوگئی ہے۔

خیال رہے کہ پچھلے کچھ برسوں سے برسات کم ہونے کی وجہ سے ضلع میں مسلسل قحط سالی کی صورتحال پیدا ہوتی رہی ہے۔ویسے توضلع کے اندر بڑی تعداد میں ندیاں بہتی ہیں ، لیکن مغربی گھاٹ سے بہنے والی ندیوں کے لئے بڑی مقدار میں بارش نہ ہونے سے پانی کی قلت کا سامنا کرناپڑتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ ہر سال متاثرہ علاقوں میں مارچ تا مئی مہینے کے دوران سرکاری طور ٹینکروں سے پانی فراہم کرنے کا انتظام کیا جاتا ہے۔معلوم ہوا ہے کہ امسال بھی صورتحال کا جائزہ لینے کے بعد ضلع انتظامیہ نے ابھی سے پانی کی فراہمی کے لئے ٹینکروں کی سہولت اور فنڈ مختص کرنے کی کارروائی مکمل کرلی ہے۔احتیاطی اقدام کے طور پر پانی سپلائی کرنے کے لئے ٹینڈر بھی طلب کرلیے گئے ہیں۔

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر سریش ایٹنال نے بتایا کہ فی الحال کہیں بھی پانی کی قلت پید انہیں ہوئی ہے۔ احتیاطی اقدام کے طور پرضلع پنچایت نے ایسے علاقوں کی نشاندہی کرلی ہے۔ 14thفائنانس کمیشن کے تحت ہر گرام پنچایت کے لئے 3لاکھ روپے پینے کے پانی کی مد میں مختص کیے گئے ہیں۔ ضرورت پڑنے پر ضلع پنچایت کی جانب سے بور ویلس بھی کھودے  جائیں گے۔اگر کسی بھی گرام پنچایت میں پانی کی قلت پیدا ہوتی ہے تو پھر وہاں کے تحصیلدار کو اس کی اطلاع دی جانی چاہیے،یا برا ہ راست ضلع پنچایت کو اس کی خبر کردینی چاہیے۔شکایت موصول ہونے کے 24گھنٹوں کے اندر متعلقہ تحصیلداریا اسسٹنٹ انجینئر یا کوئی اور آفیسر اس مقام پر پہنچ کر مسئلہ کو حل کردے گا۔اور اگر سات دنوں کے اندر مسئلہ حل نہیں ہوا تو پھر ضلع انتظامیہ کی طرف سے نجی بور ویل کرایے پر لی جائے گی اور مسئلے کو مستقل طور پر حل کردیا جائے گا۔

ضلع شمالی کینرا کے تعلقہ جات میں پانی کی قلت کا شکار ہونے لائق گاؤں کی تعداد اس طرح ہے: ۱۔ کاروار (۱۲)، ۲۔ انکولہ (۲۷)، ۳۔ کمٹہ (۱۲)، ۴۔ ہوناور (۲۷)، ۵۔ بھٹکل (۱۰)، ۶۔ سداپور(۵۱)، ۷۔ یلاپور (۴۱)، ۸۔ سرسی (۹۵)، ۹۔ منڈگوڈ (۵۰)، ۱۰۔ ہلیال (۴۴)، ۱۱۔ جوئیڈا (۵۴) اس طرح جملہ 423گاؤں پانی کی قلت کے زد میں آنے کا اندیشہ ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو میں سی اے اے مخالف احتجاج کے دوران ہوئی پولیس فائرنگ میں ہلاک ہونے والے افراد کے خاندانوں کو معاوضہ

بنگلورو میں آئی یو ایم ایل کے نیشنل سکریٹریٹ کا اجلاس منعقد ہوا۔ اس موقع پر کرناٹک کے ساحلی شہر منگلورو کے دو متاثرہ خاندانوں کو پانچ پانچ لاکھ روپئے کے چیک دئے گئے۔

سرسی میں راہ گیرعورتوں کے  زیورات چھین کر فرار ہونے والا لٹیرا گرفتار

راہ چلتی خواتین کے گلےمیں اور ان کے  جسم  پر موجود سونے کے زیورات کو چھین کر فرار ہونے والے لٹیرے کو شہر کی مارکیٹ تھانہ  پولس نے گرفتار کرتےہوئے 1لاکھ روپئے  مالیت کے سونے کے زیورات ضبط کرلینے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

بھٹکل انجمن حامئی مسلمین کی نومنتخب مجلس عاملہ کی میٹنگ میں اگلی میعاد کے لئے عہدیداران کا انتخاب : ایڈوکیٹ مزمل قاضیا صدر اور اسماعیل صدیق جنرل سکریٹری منتخب

مشہور و معروف قو می تعلیمی ادارے انجمن حامئی مسلمین بھٹکل کی مین آفس  شمس الدین بلاک میں 22فروری کو محمد شفیع شاہ بندری پٹیل کی صدارت میں  منعقدہ  انجمن کے نومنتخب مجلس انتظامیہ کی میٹنگ میں ہائی کورٹ کے وکیل  ایڈوکیٹ محمد مزمل قاضیا کو صدر اور  جنرل سکریٹری کے طورپردوبارہ ...

بھٹکل میں موٹر گاڑیوں کی بڑھتی تعداد۔ آمدورفت کی دشواریوں پر قابو پانے کے لئے ٹریفک پولیس اسٹیشن کا قیام اشد ضروری

بھٹکل شہر تعلیمی، معاشی اور سماجی طور پرتیز رفتاری کے ساتھ ترقی کی طرف گامزن ہے۔ لیکن اس ترقی کے ساتھ یہاں پر موٹر گاڑیوں کی تعداد میں بھی بے حد اضافہ ہوا ہے جس سے ٹریفک کے مسائل پیدا ہوگئے ہیں۔ دوسری طرف ٹریفک قوانین کی خلاف ورزیاں بھی بڑھتی جارہی ہیں اوراس سے سڑک حادثے بھی ...

اسمبلی الیکشن: الٹی ہو گئیں سب تدبیریں۔۔۔ آز: ظفر آغا

الٹی ہو گئیں سب تدبیریں... جی ہاں، دہلی اسمبلی الیکشن جیتنے کی بی جے پی کی تمام تدبیریں الٹی پڑ گئیں اور آخر نریندر مودی اور امت شاہ کو کیجریوال کے ہاتھوں منھ کی کھانی پڑی۔ دہلی میں بی جے پی کی صرف ہار ہی نہیں بلکہ کراری ہار ہوئی۔

اسکول کا ناٹک ۔پولس حیلہ بازی کا ناٹک                        ۔۔۔۔۔۔بیدر کے شاہین اسکول کے خلاف ہوئی پولس کاروائی پر نٹراج ہولی یار کی خصوصی رپورٹ

بیدر کے شاہین اسکول میں کھیلے گئے ایک ڈرامے میں اداکاری کرنے والے   اسکولی بچوں سے بار بار پوچھ تاچھ کرنے والے  پولس  کا رویہ ، نہایت  خطرناک اور  خوف میں مبتلا کرنے والا ہے۔ ایک وڈیو کلپ پر انحصار کرتےہوئےمتعلقہ  ڈرامے میں شہری ترمیمی قانون کی تنقید کئے جانے اور وزیرا عظم کی ...