آسٹریلیا میں وراٹ اینڈ کمپنی کی جیت یقینی، یہ ہے سب سے اہم وجہ

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 21st November 2018, 1:06 PM | اسپورٹس |

نئی دہلی21 نومبر (ایس او نیوز) ٹی -20 سیریز کے ساتھ ہندوستان کے آسٹریلیا دورے کا آغاز ہورہا ہے جبکہ 2016 ٹی-20 عالمی کپ کے بعد سے ہندوستان نے اس فارمیٹ میں زبردست کھیل دکھایا ہے۔ ٹی -20 عالمی کپ کے بعد ہندوستان نے 34 میچوں میں سے 24 میچ جیتے ہیں، تواسے صرف 9 میچوں میں شکست کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

ہندوستان نے ٹی -20 عالمی کپ 2016 کے بعد سے اب تک 11 ٹی -20 سیریز کھیلی ہیں، جس میں سے اسے 9 میں جیت ملی ہے جبکہ ایک بارشکست ملی ہے، وہیں ایک سیریز ڈرا رہی ہے۔ حالانکہ پاکستان نے اس دورے میں 10 سیریز کھیلتے ہوئے سبھی میں جیت حاصل کی ہے۔

اگردوملکوں کےدرمیان ہوئی ٹی -20 سیریز کی بات کریں تو ہندوستان نے 2016 ٹی -20 عالمی کپ کے بعد سے 10 میں سے 8 میچوں میں جیت حاصل کی ہے، جس میں انگلینڈ اور جنوبی افریقہ میں بھی جیت شامل ہے۔ حالانکہ 2016 میں اسے ویسٹ انڈیز سے یوایس میں کھیلی گئی سیریز میں شکست ملی تھی۔ آسٹریلیا کے خلاف ہوم سیریز 1-1 سے برابررہی تو سری لنکا میں کھیلی گئی ٹرائی سیریز کواس نے بنگلہ دیش کوشکست دے کرجیت حاصل کی۔

ٹی -20 عالمی کپ 2016 کے بعد سے روہت شرما ہندوستان کے کامیاب سلامی بلے باز ہیں۔ انہوں نے 26 اننگون میں 39.78 کے اوسط اور159.13 کے اسٹرائیک ریٹ سے 915 رن بنائے ہیں۔ حالانکہ 1031 رن کے ساتھ پاکستان کے بابراعظم ٹاپ پرہیں جبکہ روہت شرما کے ساتھی سلامی بلے باز شکھردھون نے 1 اننگ میں 34.95 کے اوسط اور140.92 کے اسٹرائیک ریٹ سے 699 رن بنائے ہیں۔ دونوں کے درمیان 717 رن (ریکارڈ) بنے ہیں اورتین بارسنچری کی شراکت ہوئی ہے۔ کے ایل راہل 755 رن، 20 اننگ) دوسرے کامیاب بلے باز ہیں۔

ہندوستان نے 2016 ٹی -20 عالمی کپ 15 میں سے 11 میچ اسکور کا پیچھا کرتے ہوئے جیتےہیں، جس میں مسلسل 8 میچ جیتنا بھی شامل ہے۔ اس کے علاوہ ہندوستانی ٹیم نے 2016  ٹی -20 عالمی کپ کے بعد سے 8 میچ 20 یا پھراس سے زیادہ رن سے جیتے ہیں۔ حالانکہ ریکارڈ پاکستان (13) کے نام ہیں۔

ٹی -20 عالمی کپ 2016 کے بعد سے ہندوستان کے لئے یجویندرچہل نے 27 اننگ میں 18.75 کے اوسط سے سب سے زیادہ 44 وکٹ لئے ہیں۔ کلدیپ (14 اننگ، 29 وکٹ) دوسرے کامیاب ہندوستانی گیند بازہیں۔

ایک نظر اس پر بھی