بجلی کا بل 4 لاکھ کا اور ’بڑے صاحب‘ چکا رہے 425 روپے، ہائی کورٹ نے مانگا جواب

Source: S.O. News Service | Published on 7th November 2019, 11:37 PM | ملکی خبریں |

دہرادون،7نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) سی کے ٹمٹا اتراکھنڈ پاور کارپوریشن لمیٹڈ (یوپی سی ایل) کے جنرل مینیجر ہیں۔مفاد عامہ کی عرضی کے ذریعے سامنے آئے اعدادوشمار کے مطابق، ٹمٹا 25 ماہ کا بجلی کا بل چار لاکھ روپے کا ہے،تاہم انہوں نے بل کے طور پر ہر ماہ صرف 425 روپے چکا رہے ہیں۔اسی عرضی پر سماعت کرتے ہوئے اتراکھنڈ ہائی کورٹ نے سی کے ٹمٹا کو جم کر پھٹکار لگائی ہے۔عرضی میں شکایت کی گئی ہے کہ ٹمٹا کے علاوہ یوپی سی ایل کے بہت سے ملازمین اور ان کے خاندان کے لوگ بل ادائیگی میں ہیرا پھیری کرتے ہیں۔یہ بھی کہا گیا ہے کہ ریٹائر ہونے کے بعد بھی لوگ بل نہیں چکانا چاہتے ہیں۔جسٹس رمیش رنگناتھن اور جسٹس آلوک کمار ورما کی بنچ نے اس رویہ پر ناراضگی ظاہر کی۔انہوں نے اسے یوپی سی ایل سے اعداد و شمار کو چھپانے کے لئے جان بوجھ کر کوشش کی۔کورٹ نے بجلی کے کنٹرول پر تشویش بھی ظاہر کی۔وہیں، یوپی سی ایل نے کورٹ میں جواب دیا کہ جنرل مینیجر کے گھر پر 2005 میں میٹر لگایا گیا تھا لیکن اس کی ریڈنگ کا ریکارڈ لینا 2015 میں شروع ہوا۔یوپی سی ایل 100 یونٹس تک کے بل کے لئے 2.75 روپے اور اس کے اوپر 400 یونٹ تک 5.65 روپے فی یونٹ چارج کرتا ہے۔مفاد عامہ کی عرضی دائر کرنے والوں کی جانب سے پیش ہوئے وکیل بی پی نوٹیال نے کہاکہ کورٹ نے پہلے کہا کہ وہ شروع میں یوپی سی ایل کے بک آف ریکارڈس کے سی اے جی آڈٹ کی ہدایت دینے کے بارے میں سوچ رہا ہے،فی الحال کورٹ نے یوپی سی ایل کو ان اعداد و شمار پر جواب دینے کے لئے ایک ہفتے کا وقت دیا ہے۔نوٹیال نے آگے کہاکہ کورٹ نے یہ بھی کہا کہ ججوں کو ہر سال 15000 یونٹ کا فائدہ ملتا ہے لیکن اس کیس میں تو کوئی حد ہی نہیں ہے۔یہ بھی واضح نہیں ہے کہ افسر برائے نام بھی بل چکا رہے ہیں یا نہیں،یہ مکمل طور پر عہدہ کا غلط استعمال ہے۔ کورٹ نے یوپی سی ایل کو کہا ہے کہ وہ ایک ہفتے کے اندر تفصیلی جواب داخل کرے۔کورٹ نے یہ بھی کہا ہے کہ یوپی سی ایل بھی بتائے کہ یہ سہولت کارپوریشن کے کئی محکموں کو کیوں دی جا رہی ہے؟۔

ایک نظر اس پر بھی

سبریمالہ مندر معاملہ 7 رکنی بنچ کے حوالے، جج نے کہا ’کیس کا اثر مندر ہی نہیں مسجد پر بھی پڑے گا‘

سپریم کورٹ نے آج ایک انتہائی اہم فیصلہ سناتے ہوئے سبریمالہ مندر میں سبھی عمر کی خواتین کے داخل ہونے سے متعلق نظر ثانی عرضی کو 7 رکنی بنچ کے حوالے کر دیا ہے۔ ساتھ ہی سپریم کورٹ نے فی الحال اس مندر میں خواتین کے داخلے پر روک لگانے سے انکار کر دیا ہے۔

پی ایم مودی، سونیا گاندھی، راہل گاندھی سمیت کئی اہم لیڈروں نے جواہر لال نہرو کو کیا یاد

آزاد ہندوستان کے پہلے وزیر اعظم پنڈت جواہر لال نہرو کا آج یوم پیدائش ہے۔ اس موقع پر کانگریس صدر سونیا گاندھی، سابق وزیر اعظم منموہن سنگھ، سابق صدر جمہوریہ پرنب مکھرجی، سابق نائب صدر حامد انصاری وگیرہ نے شانتی وَن جا کر انھیں عقیدت کا پھول پیش کیا۔

مہاراشٹرا معاملے پر امت شاہ نے توڑی چپی؛ کہا مودی اور میں نے ہمیشہ یہی کہا کہ فڑنویس ہی وزیر اعلیٰ بنیں گے

ایک طرف شیوسینا سربراہ ادھو ٹھاکرے اور پارٹی کے دیگر لیڈران بار بار بی جے پی پر دھوکہ بازی کا الزام لگا رہے ہیں اور کہہ رہے ہیں کہ پہلے ڈھائی ڈھائی سال کے وزیر اعلیٰ بنانے پر بات ہوئی تھی جس سے اب بی جے پی پیچھے ہٹ رہی ہے، دوسری طرف بی جے پی لیڈران ایسے کسی معاہدے سے انکار کر رہے ...

کرناٹکا اسمبلی کے سابق باغی اراکین کی نااہلیت برقرار۔ لیکن انتخاب لڑ نے پر نہیں ہوگی پابندی۔ سپریم کورٹ کا فیصلہ

سابقہ اسمبلی میں جن 17 کانگریس اور جے ڈی ایس اراکین نے بغاوت کی تھی، انہیں سپریم کورٹ سے تھوڑی سے راحت ملی ہے جس کا اثر ریاستی بی جے پی حکومت پر بھی پڑنے والا ہے۔