ماب لنچنگ: قصورواروں کو دی جائےعمرقید کی سزا ۔ لاکمشن کی اترپردیش حکومت کوسفارش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th July 2019, 4:58 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،12؍جولائی (ایس او نیوز؍ایجنسی) اترپردیش میں بڑھتے ہجومی تشددپر اب نکیل کسنے کی باری آگئی ہے۔ یوگی حکومت کو128صفحات کاروڈمیپ سونپاگیاہے۔جس میں ہجومی تشددپر سخت سے سخت قانون بنانے کامشورہ دیاگیاہے۔ یہاں تک کے عمر قید تک کی سزابھی دینے کی بات کہی گئی ہے۔لاءکمیشن کے چیئرمین جسٹس اےاین متل نے یوگی حکومت کوڈرافٹ پیش کیاہے۔ چیئرمین نےاس ڈرافٹ کانام اترپردیش کابیٹنگ ماب لنچنگ ایکٹ کےطور پررکھا۔

اس ڈرافٹ میں کچھ اہم تجاویزدی گئی ہے۔ جن میں چند اہم تجاویز یہ ہیں ۔ ہجومی تشدد کا شکا رزخمی ہےتو7سات سال کی سزاء اور ایک لاکھ روپئے کاجرمانہ عائد ہوسکتاہے۔اس کے علاوہ اگر ہجومی تشددکا متاثر شدید طورپرزخمی ہواہےتو10سال کی سزاء اور 3لاکھ کاجرمانہ لگایاجاسکتاہے اور اگرہجومی تشدد کے دوران کسی کی بھی موت ہوجاتی ہے تواسے کے قصورواروں کوعمر قید کی سزااور5لاکھ کاجرمانہ عائد کی سفارش کی گئی ہے۔ اسی طرح ہجومی تشددکےلیے سازش رچنے والوں کے لیے بھی عمر قید کی گنجائش تجویز پیش کی گئی ہے۔ اس کے علاوہ پولیس اور ڈی ایم کی لاپرواہی کی بنیاد پرایک سال کی سزا،جوکہ تین سال تک بھی بڑھ سکتی ہے،اور50ہزار کاجرمانہ عائد کی بھی تجویزرکھی گئی ہے۔

ریاستی کمیشن کی جانب سے تیار کردہ 128صفحات کے اس ڈرافٹ میں یوپی میں ہجومی تشددکے کئی واقعات کاحوالہ دیاگیاہے۔جس میں دوہزار پندرہ میں دادری میں اخلاق کے قتل اور بلندشہر میں 3دسمبر2018کوکھیت میں جانواروں کی لاش پائے جانےکے بعدپولیس اور ہندوتنظیموں کے بیچ ہوئی جھڑپ کے بعد انسپیکٹر سبودھ کمار سنگھ کے قتل جیسے معاملےشامل ہیں۔ فی الحال منی پورمیں ہجومی تشددکے خلاف قانون ہے۔اگر یوگی حکومت اس ڈرافٹ کونوٹس میں لیتی ہےتویوپی حکومت ماب لنچنگ کےخلاف قانوبنانے والی دوسری ریاست ہو جائےگی اورسخت سے سخت قانون بن جانے کے بعد ہجومی تشددپر نکیل کسنابھی آسان ہوجائےگا

ایک نظر اس پر بھی

مرکزی یا ریاستی حکومت کسی بھی شخص کے کمپیوٹر سے خفیہ طورپر معلومات حاصل کرسکتی ہے۔ پارلیمنٹ میں وزیربرائے داخلی امور کرشنا ریڈی کا جواب

گزشتہ مہینے وہاٹس ایپ کے توسط سے اسرائیلی وائرس ’پیگاسس‘کا استعمال کرنے اور کچھ خاص لوگوں کی نگرانی کرنے اور ان کے موبائل اور کمپیوٹر سے ذاتی معلومات خفیہ طور پر اکٹھا کرنے سے میڈیا میں جو ہنگامہ مچا تھا اس کے بارے میں مرکزی حکومت نے کوئی اقرار یا انکار کرنے کے بجائے مبہم ...

پارلیمنٹ میں گونجا جے این یو طلباء پر ’لاٹھی چارج‘ کا معاملہ، اعلی سطحی تفتیش کا مطالبہ

  کانگریس، ترنمول کانگریس(ٹی ایم سی) اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) نے جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے اسٹوڈنٹس پر دہلی پولس کی لاٹھی چارج کا معاملہ اٹھاتے ہوئے اس کی اعلی سطحی تفتیش کرنے اور یونیورسٹی کی فیس میں اضافہ واپس لینے کی مانگ کی۔ ادھر، جے این یو نے 18 نومبر کو ...

امیر بی جے پی لیڈر غریب ’جے این یو طلبہ‘ کی حمایت کیوں کریں گے: سماج وادی پارٹی

  سماج وادی پارٹی کے رہنما رام گوپال یادو نے فیس میں اضافہ کے خلاف پرامن مظاہرہ کر رہے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ پر پیر کے روز پولس لاٹھی چارج کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی طلبہ کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتی ہے اور ضرورت پڑنے پر وہ بھی احتجاجی مظاہروں میں شامل ...

ڈیوڈ اٹنبروکو 2019 کا اندرا گاندھی امن انعام

سابق صدر پرنب مکرجی کی سربراہی میں ایک بین الاقوامی جیوری نے نامور دانشوراور براڈکاسٹر سر ڈیوڈ اٹنبرو کو’اندرا گاندھی امن ،ترک اسلحہ اور ترقی‘ ایوارڈ 2019 کیلئے منتخب کیا ہے ۔

کشمیر میں غیر یقینی صورتحال کا 107 واں دن، صحافی، طلبہ اور تاجر ہنوز متاثر

   وادی کشمیر میں 107 دنوں سے جاری غیر یقینی صورتحال اور غیر اعلانیہ ہڑتال کے بعد اگرچہ معمولات زندگی بحالی کی طرف بڑھنے کی رفتار تیز گام ہے لیکن انٹرنیٹ اور ایس ایم ایس خدمات پر مسلسل پابندی کے باعث مختلف شعبہ ہائے حیات سے وابستہ لوگوں بالخصوص صحافیوں، طلبا اور تجار کا کام کاج ...