ہوم گارڈ ڈیوٹی گھوٹالہ: فرضی ڈیوٹی دکھا کروصولی کر رہے تھے ہوم گارڈ افسر،گرفت میں آئے تو جلادئیے دستاویز

Source: S.O. News Service | Published on 20th November 2019, 8:44 PM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،20/نومبر(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) گوتم بدھ نگر کے گریٹر نوئیڈا میں ایک بڑے گھوٹالے کے تمام دستاویزات کو جلا کر راکھ کر دیا گیا۔گھوٹالہ یہ تھا کہ ضلع میں ہوم گارڈ کی ڈیوٹی میں فرضی انٹری دکھائی جا رہی تھی، جبکہ وہ ڈیوٹی پر تھے ہی نہیں۔ان کی سیلری کئی سالوں سے لی جا رہی تھی۔یہ گھوٹالہ کروڑوں کا ہے جس کی جانچ یوپی حکومت کروا رہی تھی لیکن اسی درمیان دستاویزات کو آگ کے حوالے کر دیا گیا۔ایک گھوٹالے سے منسلک ہزاروں دستاویزات راکھ میں تبدیل ہو گئے اور گھوٹالہ بھی اسی کمرے میں دفن ہو گیا۔کمرے اور اس کے اندر رکھے باکسوں کا تالا توڑکر آگ لگائی گئی۔یہاں تعینات سیکورٹی گارڈ کے کمرے کا دروازہ بھی باہر سے بند کر دیا، جس سے وہ نہیں جا سکا۔ضلع کمانڈنٹ ہوم گارڈس کے دفتر میں جہاں ہومگارڈس کی ڈیوٹی کو لے کر ہوئے ایک گھوٹالے کی جانچ یوپی حکومت کرا رہی تھی لیکن اسی درمیان گھوٹالے بازوں نے یہ کارنامہ انجام دیا۔ گریٹر نوئیڈا کے ضلع کمانڈنٹ ہوم گارڈس دفتر میں گھوٹالے سے منسلک ہزاروں دستاویزات میں آگ لگا کر راکھ کر دیا، دستاویزات میں وہ مسٹر رول تھے جن میں ہوم گارڈس کی فرضی ڈیوٹی دکھائی گئی تھی جبکہ نہ تو وہاں اتنے ہوم گارڈس ہیں اور نہ ہی وہ ڈیوٹی پر تھے، اس طرح کروڑوں کا گھوٹالہ سامنے آیا۔دراصل یہ پورا معاملہ کچھ اس طرح ہے کہ اسی سال مئی مہینے میں دفتر میں کام کرنے والے ایک شخص نے پولیس کو شکایت دی کہ مسٹر رول میں ہوم گارڈس کا فرضی اندراج کرکے ان کی ڈیوٹی دکھائی جا رہی ہے لیکن اصل میں ڈیوٹی پر ہوتے ہی نہیں اور اس طرح کچھ افسران ان ڈیوٹی کا پیسہ لے رہے ہیں۔اس معاملے میں پولیس نے جانچ کی تو پتہ چلا کہ ہزاروں کی تعداد میں مسٹر رول میں ہوم گارڈس بوگس ڈیوٹی درج ہیں۔جبکہ اصل میں نہ تو اتنے ہوم گارڈس ہیں اور نہ ہی وہ ڈیوٹی کر رہے ہیں۔ان کی ڈیوٹی فرضی دکھا کر کچھ افسران گزشتہ کئی سالوں سے گھوٹالہ کر رہے ہیں۔ڈیوٹی کے نام پر ملا کروڑوں روپیہ خود لے رہے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

شہریت ترمیمی بل منظور ہونے پر سونیا گاندھی کا رد عمل ’آج آئینی تاریخ کا سیاہ دن‘

کانگریس کی صدر سونیا گاندھی نے راجیہ سبھا سے شہریت ترمیمی بل کی منظوری کے بعد کہا ہے کہ آج ہندوستان کی آئینی تاریخ کا ’سیاہ دن‘ ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بل ہندوستان کی اس سوچ کے لئے چیلنج ہے جس کے لئے قوم کے معماروں نے جدوجہد کی تھی۔