امریکہ کی طرف سے ہندوستان کو دھمکی روس سے ڈیل کی صورت میں دفاعی امداد محدود ہوجائے گی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 15th June 2019, 11:36 AM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

 واشنگٹن،15/جون (ایس او نیوز/ آئی این ایس انڈیا) امریکہ کی وزارت خارجہ کی افسر ایلس جی ویلس نے جمعہ کو کہا کہ ان کا ملک ہندوستان کی دفاعی ضروریات پورا کرنے کے لئے تیار ہے، لیکن روسی ایس-400 نظام اس میں رکاوٹ بن رہا ہے- ہندوستان-روس ڈیل سے امریکہ کا تعاون محدود کردیا جائے گا - ایشیا سے منسلک خارجہ امور کی ذیلی کمیٹی کو انہوں نے بتایا کہ گزشتہ دس سالوں میں امریکہ ہندوستان کے درمیان18ارب ڈالر(1.25 لاکھ کروڑ روپے) کے دفاع کے معاہدے ہوئے ہیں، جبکہ اس سے پہلے دونوں ممالک کے درمیان دفاعی معاملات میں کاروبار تقریبا صفر تھا-ٹرمپ انتظامیہ نے حال ہی میں دھمکی دیتے ہوئے کہا تھا کہ ہندوستان کا یہ فیصلہ (اے400ڈیل) امریکہ اور ہندوستان کے تعلقات پر شدید اثر ڈالے گا-ایلس کا کہنا ہے کہ اب بھی ہندوستان کی70فیصدی ملٹری ہارڈ ویئر روسی ہیں - ایسے میں ہندوستان کو فیصلہ کرنا ہوگا کہ اسے صرف روس پر انحصار رہنا ہے یا پھر امریکہ سے دوستی بڑھانی ہے- ہندوستان کو اب اپنی ترجیح طے کرنی ہوگی-ایلس ذیلی کمیٹی کو بتا رہی تھیں کہ امریکہ ہندوستان کے درمیان دفاع کے معاملات میں تعلق کس طرح سے بہتر کیا جا سکتا ہے- ان کا کہنا تھا کہ حالیہ برسوں میں امریکہ ہندوستان کے ساتھ کسی دوسرے ملک کی نسبت زیادہ مشق کر رہا ہے-10سال پہلے امریکہ ہندوستان کو ہتھیار فروخت کرنے میں زیادہ دلچسپی نہیں لیتا تھا، لیکن اب اسے سنجیدگی سے لیا جا رہا ہے- ہندوستان سے رشتے بہتر بنانے کے معاملے میں امریکہ اب ہر ممکن اقدامات کر رہی ہے- ایلس کے مطابق نریندر مودی روزگار کو سنجیدگی سے لے رہے ہیں، اس میں امریکہ ان کی مدد کر سکتا ہے، کیونکہ ایف ڈی آئی کے ذریعہ ہی بے روزگاری کے مسئلے سے نمٹا جا سکتا ہے-ہندوستان کیلئے امریکہ ایک بڑی مارکیٹ ہے-ہندوستان کی20 فیصدی مصنوعات (اشیاء) امریکہ سے آتی ہیں، امریکہ کی کمپنیوں کے لئے بھی ہندوستان ایک بہتر مارکیٹ ہے- بھارت سے تعلق بہتر بنانے میں کاروبار ہی مددگار بن سکتا ہے-

ایک نظر اس پر بھی

مرکزی یا ریاستی حکومت کسی بھی شخص کے کمپیوٹر سے خفیہ طورپر معلومات حاصل کرسکتی ہے۔ پارلیمنٹ میں وزیربرائے داخلی امور کرشنا ریڈی کا جواب

گزشتہ مہینے وہاٹس ایپ کے توسط سے اسرائیلی وائرس ’پیگاسس‘کا استعمال کرنے اور کچھ خاص لوگوں کی نگرانی کرنے اور ان کے موبائل اور کمپیوٹر سے ذاتی معلومات خفیہ طور پر اکٹھا کرنے سے میڈیا میں جو ہنگامہ مچا تھا اس کے بارے میں مرکزی حکومت نے کوئی اقرار یا انکار کرنے کے بجائے مبہم ...

پارلیمنٹ میں گونجا جے این یو طلباء پر ’لاٹھی چارج‘ کا معاملہ، اعلی سطحی تفتیش کا مطالبہ

  کانگریس، ترنمول کانگریس(ٹی ایم سی) اور بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) نے جواہر لال نہرو یونیورسٹی (جے این یو) کے اسٹوڈنٹس پر دہلی پولس کی لاٹھی چارج کا معاملہ اٹھاتے ہوئے اس کی اعلی سطحی تفتیش کرنے اور یونیورسٹی کی فیس میں اضافہ واپس لینے کی مانگ کی۔ ادھر، جے این یو نے 18 نومبر کو ...

امیر بی جے پی لیڈر غریب ’جے این یو طلبہ‘ کی حمایت کیوں کریں گے: سماج وادی پارٹی

  سماج وادی پارٹی کے رہنما رام گوپال یادو نے فیس میں اضافہ کے خلاف پرامن مظاہرہ کر رہے جواہر لال نہرو یونیورسٹی کے طلبہ پر پیر کے روز پولس لاٹھی چارج کی سخت مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ان کی پارٹی طلبہ کے مطالبات کی مکمل حمایت کرتی ہے اور ضرورت پڑنے پر وہ بھی احتجاجی مظاہروں میں شامل ...

ڈیوڈ اٹنبروکو 2019 کا اندرا گاندھی امن انعام

سابق صدر پرنب مکرجی کی سربراہی میں ایک بین الاقوامی جیوری نے نامور دانشوراور براڈکاسٹر سر ڈیوڈ اٹنبرو کو’اندرا گاندھی امن ،ترک اسلحہ اور ترقی‘ ایوارڈ 2019 کیلئے منتخب کیا ہے ۔

کشمیر میں غیر یقینی صورتحال کا 107 واں دن، صحافی، طلبہ اور تاجر ہنوز متاثر

   وادی کشمیر میں 107 دنوں سے جاری غیر یقینی صورتحال اور غیر اعلانیہ ہڑتال کے بعد اگرچہ معمولات زندگی بحالی کی طرف بڑھنے کی رفتار تیز گام ہے لیکن انٹرنیٹ اور ایس ایم ایس خدمات پر مسلسل پابندی کے باعث مختلف شعبہ ہائے حیات سے وابستہ لوگوں بالخصوص صحافیوں، طلبا اور تجار کا کام کاج ...

یمنی حوثیوں نے بحیرہ احمر کے جنوب میں جہازاغوا کر لیا: عرب اتحاد

یمن کے ایران نواز حوثی شیعہ باغیوں نے بحیرہ احمر کے جنوب میں ایک چھوٹے جہاز (رابغ تین) کو اغوا کر لیا ہے۔عرب اتحاد کے ترجمان کرنل ترکی المالکی نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ دو کشتیوں پر سوار مسلح حوثی جنگجوؤں نے اس جہاز کو ہائی جیک کیا ہے۔

بھاری پن کا ذخیرہ 130میٹرک ٹن: ایران کی جوہری سمجھوتے کی ایک اور خلاف ورزی

العربیہ کے مطابق:’اقوام متحدہ کے تحت جوہری توانائی کے عالمی ادارے (آئی اے ای اے) نے اپنی نئی رپورٹ میں ایران کی جانب سے چھے عالمی طاقتوں کے ساتھ طے شدہ جوہری سمجھوتے کی ایک اور خلاف ورزی کا انکشاف کیا ہے اور کہا ہے کہ اس نے 130 میٹرک ٹن بھاری پن جمع کر لیا ہے۔