بارہمولہ کی خاتون شاہینہ 14 ماہ بعد مقبوضہ کشمیر سے گھر لوٹیں

Source: S.O. News Service | Published on 5th August 2020, 11:05 AM | ملکی خبریں |

جموں،5؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی) 14 ماہ قبل شمالی کشمیر کے ضلع بارہمولہ میں لائن آف کنٹرول (ایل او سی) کے حاجی پیر سیکٹر کے راستے مقبوضہ کشمیر میں داخل ہونے والی ایک خاتون کو منگل کے روز وہاں کی انتظامیہ نے ضلع پونچھ میں چکن دا باغ کی مقام پر ہندوستانی فوج اور سول انتظامیہ کے حوالے کردیا۔

سرکاری ذرائع نے بتایا کہ ضلع بارہمولہ کے اوڑی سے تعلق رکھنے والی 36 سالہ شاہینہ بیگم زوجہ عبدالالطیف بٹ، جو چار بچوں کی ماں ہیں، گزشتہ برس 25 جون کو حاجی پیر سیکٹر کے راستے مقبوضہ کشمیر میں داخل ہوئی تھیں۔ انہوں نے کہا کہ منگل کو پونچھ میں چکن دا باغ کی مقام پر ہونے والی ایک تقریب کے دوران پاکستانی فوج اور مقبوضہ کشمیر کی انتظامیہ نے شاہینہ کو ہندوستانی فوج اور سول انتظامیہ کے حوالے کردیا۔

اس موقع پر سول انتظامیہ کے ایک افسر نے نامہ نگاروں کو بتایا کہ 'شاہینہ بیگم نامی ایک خاتون گزشتہ برس بارہمولہ کے راستے مقبوضہ کشمیر میں داخل ہوگئی تھیں۔ ان کو آج مقبوضہ کشمیر کی انتظامیہ نے ہندوستانی فوج اور سول انتظامیہ کے حوالے کیا'۔ ایک سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ 'یہ تقریباً ایک سال اور دو ماہ بعد واپس لوٹی ہیں۔ تمام قانونی و طبی لوازمات کی ادائے گی کے بعد ہی شاہینہ کو واپس لایا گیا ہے'۔

ایک نظر اس پر بھی

بالاسبرامنیم اس ملک کے موسیقی اورلسانی ثقافت کی ایک عمدہ مثال تھے: سونیا گاندھی

کانگریس  کی  چیئرپرسن سونیا گاندھی نے موسیقی کی دنیا کی ایک عظیم ہستی بالاسبرامنیم کے انتقال پراپنے گہرے رنج  وغم  کا اظہار کرتےہوئے کہا ہے کہ وہ ملک کی  موسیقی اور لسانی  ثقافت کے عمدہ مثال تھے اور ان کے نہیں رہنے  سے آرٹ اور کلچرل کی دنیا پھیکی پڑگئی ہے۔

الطاف بخاری کا راجوری کے تین متاثرہ کنبوں کو معقول معاوضہ و نوکریاں فراہم کرنے کا مطالبہ

اپنی پارٹی کے صدر سید محمد الطاف بخاری نے کہا ہے کہ پولیس کی فارنسک رپورٹ میں امشی پورہ شوپیاں انکاؤنٹر میں ہلاک ہونے والے راجوری ضلع کے 3 مقتول مزدوروں کی شناخت کی تصدیق سے قانون کے تحت سزا یقینی ہے