یوپی اسمبلی: پرینکا گاندھی کو سون بھدر جانے سے روکنے اور حراست پر زَبردست ہنگامہ

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 23rd July 2019, 11:46 AM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،23؍جولائی (ایس او نیوز؍یو این آئی)  ریاستی حکومت کے ذریعہ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا کو سون بھد رجانے سے روکنے، انہیں 27 سے زیادہ گھنٹوں تک حراست میں رکھنے و ریاست میں ایس پی حامیوں کے ہوئے رہے قتل پر یو پی اسمبلی میں کانگریس و ایس پی اراکین نے جم کر ہنگامہ کیا۔

یہ دونوں مسائل پیر کو اسمبلی میں وقفہ صفر کے دوران اٹھائے گئے اور اپوزیشن و حکومت کے درمیان خوب گرما گرم بحث ہوئی۔جہاں ایس پی اراکین اسمبلی سماج وادی پارٹی کے حامیوں کے قتل کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے باہر نکل گئے تو وہیں کانگریس نے ویل میں پہنچ کر احتجاج کیا اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی جس کی وجہ سے اسپیکر نے اسمبلی کی کاروائی دن بھر کے لئے ملتوی کردی۔

کانگریس رکن اسمبلی اجے کمار للو نے مرزا پور میں کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا کی حراست کا معاملہ اٹھاتے ہوئے الزام عائد کیا کہ حکومت کا یہ رویہ جمہویت کے خلاف اور شہری حقوق کو پامال کرنے کے مترادف ہے۔ہماری لیڈر پرینکا گاندھی واڈرا متاثرین کےاہل خانہ سے ملاقات کے لئے جارہی تھیں لیکن حکومت نے انہیں روک دیا۔تاہم حالات اس وقت کافی ہنگامہ خیز ہوگئے جب ریاستی پارلیمانی امور کے وزیر سریش کھنہ نے یہ کہا کہ کانگریس لیڈر وہاں صرف فوٹو کھینچانے کے لئے جارہی تھیں۔

وزیر کے اس تبصرے کو سنتے ہی کانگریس اراکین اسمبلی ویل میں کود گئے اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کرنے لگے۔اسپیکر ہردے دیکشت نے بھی کانگریس اراکین کو اس معاملے کو نہ اٹھانے اور اس پر پہلے سے ہی بحث ہونے کا حوالہ دے کر خاموش کرانے کی کوشش کی لیکن کانگریس اراکین نے نعرے بازی جاری رکھی بلا ٓخر اسپیکر نےہاؤس کی کارروائی دن بھر کے لئے ملتوی کردی۔

اس سے قبل وقفہ صفر کے دوران ایس پی رکن اسمبلی سنجے گرگ نےدعوی کیا کہ لوک سبھا انتخابات کے اختتام کے بعد اب تک 28 اضلاع میں 50 سے زیادہ ایس پی حامیوں کا قتل کیا جاچکا ہےانہوں نےالزام لگایا کہ ریاستی حکومت ایس پی حامیوں کے قتل کی سازش میں ملوث ہے۔

اپوزیشن لیڈر رام گوند چودھری نے بھی الزام لگایا کہ بی جے پی حکومت اپوزیشن پر حملہ آور ہے اور خون کی سیاست کررہی ہے جوکہ جمہوری اقدار کے خلاف ہے‘‘ ریاست میں کوئی بھی نظم ونسق نہیں ہے اور جرائم پیشہ افراد کو برسراقتدار پارٹی کی جانب سے کھلی چھوٹ دے دی گئی ہے۔

تاہم ریاستی پارلیمانی امور کے وزیر سریش کھنہ نے ایس پی کے الزامات کو خارج کرتے ہوئے کہا یوگی آدتیہ ناتھ کے اقتدار میں مجرموں کو مارا گیا ہے اور ریاست میں مکمل طور سے نظم ونسق کا ہی راج ہے۔اس کے بعد ایس پی اراکین ہنگامہ کرتے ہوئے اسمبلی سے باہر چلے گئے۔

ایک نظر اس پر بھی

آسام کے لوگوں کو این آر سی کو لے کر گھبرانے کی بالکل ضرورت نہیں: وزیر اعلی سرباند سونووال 

این آر سی میں مبینہ طور پر غلط نام شامل اور منسوخی کو لے کر بی جے پی کی طرف سے کئی گئی جائزہ کی مانگ کے درمیان حکومت نے حال ہی میں اشارہ دیا تھا کہ وہ اس پر قانون بنانے کا راستہ اختیار کر سکتی ہے،

طلاق ثلاثہ قانون کو جمعیۃعلماء ہند و دیگر مسلم جماعتوں نے سپریم کورٹ میں کیا چیلنج؛ عدالت عالیہ نے مرکز کو جاری کی نوٹس

جمعیۃ علماء ہند اور دیگر مسلم جماعتوں کی جانب سے طلاق ثلاثہ قانون کے خلاف داخل کردہ عرضداشتوں کو آج سپریم کورٹ آف انڈیا نے سماعت کے لئے  قبول کرتے ہوئے مرکزی سرکار کونوٹس جاری کیا ہے۔سپریم کورٹ آف انڈیا کی دو رکنی بینچ کے جسٹس وی این رمنا اور جسٹس اجئے رستوگی نے حال ہی میں ...

اے پی سی آر نے داخل کی انسداددہشت گردی قانون میں ترمیم کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل

مرکزی حکومت نے انسداد دہشت گردی قانون یو اے پی اے میں جو حالیہ ترمیم کی ہے اور کسی بھی فرد کو محض شبہات کی بنیاد پر دہشت گرد قرار دینے کے لئے تحقیقاتی ایجنسیوں کو جو کھلی چھوٹ دی ہے اسے چیلنج کرتے ہوئے ایسوسی ایشن فار  پروٹیکشن آف سوِل رائٹس (اے پی سی آر) نے سپریم کورٹ میں اپیل ...

چدمبرم کی گرفتاری مایوس کن:  ممتا بنرجی

مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے جمعرات کو کہا کہ پی چدمبرم کی گرفتاری مایوس کن ہے۔ساتھ ہی الزام لگایا کہ عدلیہ فریاد لگا رہی جمہوری نظام کی مدد کے لئے سامنے نہیں آ رہی ہے۔