بی ایس پی پرنسپل اپوزیشن پارٹی بننے کے لئے کوشاں

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 21st August 2019, 11:39 PM | ملکی خبریں |

لکھنؤ،21؍اگست(ایس او نیوز؍یو این آئی) لوک سبھا انتخابات میں 10سیٹیں جیتنے والی بہوجن سماج پارٹی ریاست میں حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کی اسمبلی میں پرنسپل اپوزیشن پارٹی کے طور پر ابھر کر سامنے آنے کے لئے کوشاں ہے۔ پارٹی نےسماج وادی پارٹی کی جگہ لینے کے لئے کوششیں تیز کردی ہیں۔

پارٹی کے ایک لیڈر کے مطابق اسی مقصد کے حصول کے لئے بہوجن سماج پارٹی(بی ایس پی) نے ریاست میں 13 اسمبلی سیٹوں پر ہونے والے ضمنی انتخابات میں پوری طاقت و تیاری کے ساتھ حصہ لینے کا فیصلہ کیا ہے نیز اس ضمن میں اس کے پیش نظر ان انتخابات میں سماج وادی پارٹی(ایس پی) کی شکست کو یقینی بنانا ہے۔ ان کے مطابق ’کمزور سماج وادی پارٹی کی صورت میں دلت۔مسلم کا اتحاد آنے والے ضمنی انتخابات میں بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کے لئے نفع بخش سودا ثابت ہوسکتا ہے۔

سماج وادی پارٹی لیڈروں نے بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) پر الزام لگایا ہے کہ انتخابی فائدے کے پیش نظر بی ایس پی۔ بی جے پی میں ملی بھگت ہے۔ وہیں بی ایس پی پراعتماد ہے کہ اس کے کٹر حریف سماج وادی پارٹی کے سیاسی طور پر کمزور ہونے کا راست فائدہ اسے ہی ملے گا۔

بی ایس پی ذرائع کے مطابق ایس پی کا سیاسی طور سے حاشیہ پر جانے سے دلت۔مسلم انضمام کو تقویت ملی ہے۔ گزشتہ ایک مہینے میں سماج وادی پارٹی کے تین اراکین راجیہ سبھا نے پارٹی کو چھوڑا ہے اور بی جے پی میں شمولیت اختیار کی ہے جبکہ دیگر دو اراکین کے بارے میں بھی چہ میگوئیاں ہیں کہ وہ بھی پارٹی چھوڑ سکتے ہیں۔

بی ایس پی سپریمو مایاوتی نے عام انتخابات کے فوراً بعد سماج وادی پارٹی سے اتحاد ختم کرنے کا اعلان کیا تھا اور اس کے بعد مسلسل کانگریس کے ساتھ سما ج وادی پارٹی کو متعدد مسائل پر سخت تنقید کا نشانہ بناتی رہی ہیں۔ اس درمیان وہ بی ایس پی کو ہی بی جے پی کا واحد متبادل بھی بتاتی رہی ہیں۔ مئی میں ختم ہوئے عام انتخابات میں بی ایس پی۔ایس پی نے ایک ساتھ انتخابات میں حصہ لیا تھا۔ جس میں بی ایس پی کو 10 جبکہ اکھلیش کی سربراہی والی سماج وادی پارٹی کو محض 5 سیٹوں پر جیت حاصل ہوئی تھی۔

سال 2017 کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس۔ایس پی نے ایک ساتھ جبکہ بی ایس پی نے علیحدہ الیکشن میں حصہ لیا تھا۔ کانگریس کے ساتھ ایس پی کے اتحاد نے سماج وادی پارٹی کو مسلم ووٹروں کی پہلی پسند بناد ی تھی۔ اور مسلموں نے ماضی میں بی جے پی سے اتحاد کے ریکارڈ کو دیکھتے ہوئے بی ایس پی پر بھروسہ نہیں جتایا تھا۔

عام انتخابات کے بعد یہ چرچا عام ہوئی کہ یادو سماج کے ایک مخصوص طبقے نے ایس پی پر بی جے پی کو ترجیح دی۔ وہیں بی ایس پی کو بھیم آرمی کے چیف چندر شیکھر آزاد سے چیلنجز کا سامنا ہے۔ شیکھر دلت۔مسلم اتحاد کی مضبوط پچ تیار کرنے کے ساتھ اس بات کی وکالت کر ر ہے ہیں کہ دلتوں و مسلموں کا اتحاد یو پی کی مستقبل کی سیاست میں اہم کردار ادا کرسکتا ہے۔ بی ایس پی کے ذرائع کے مطابق پارٹی شیکھر کی جانب سے مل رہے چیلنجز کو زمینی سطح پر سخت محنت کر کے مقابلہ کرسکتی ہے۔

ریاست میں مسلمانوں کی آبادی کا تناسب 19.3 فیصدی ہے جبکہ دلت 21 ذاتوں میں منقسم ہونے کے ساتھ 21.1 فیصدی اور یادو سماج کا تناسب 9 فیصدی ہے۔ اس سے قبل مسلم اور یادو کے اتحاد نے سماج وادی پارٹی کو اقتدار کا مضبوط دعویدار بنایا تھا لیکن اب اگرچہ تاخیر سے ہی لیکن یادو ووٹوں میں سیندھ لگ چکی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں آر ایس ایس کارکن گرفتار، پوچھ تاچھ میں ہوئے حیرت انگیز انکشافات

پڑوسی ریاست کیرالہ  کے کنور میں آر ایس ایس دفتر کے پاس واقع پولس پوسٹ پر بم پھینکے جانے کے الزام میں پولس نے آر ایس ایس کارکن کو گرفتار کرنے کی خبر موصول ہوئی ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق تمل ناڈو کے کوئمبٹور سے آر ایس ایس کا یہ ورکر بدھ کے روز گرفتار ہوا جس کے بعد اس سے سختی کے ...

اندرا جے سنگھ کے بیان پر کنگنا کا نازیبا تبصرہ؛ ایسی خواتین کی کوکھ سے عصمت دری کرنے والے پیدا ہوتے ہیں

نربھیا عصمت دری معاملہ مستقل خبروں میں بنا ہوا ہے اور اب مجرموں کو پھانسی دینے کا معاملہ سرخیوں میں ہے۔ نربھیا کے والدین ذرائع ابلاغ کے لئے سیلیبریٹی سے کم نہیں ہیں اور اسی وجہ سے حال ہی میں دہلی اسمبلی انتخابات میں یہ بات بہت تیزی کے ساتھ پھیلی کہ نربھیا کی والدہ اسمبلی چناؤ ...

راجستھان: کوٹہ میں بھی خواتین نے بنایا ’شاہین باغ‘، احتجاج کا سلسلہ 9 دنوں سے جاری

دہلی کے شاہین باغ سے تحریک لیکر ملک کے مختلف طول و عرض میں شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف خواتین کے مظاہروں کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ ت تکنیکی تعلیمی اداروں کے لیے مشہور راجستھان کے شہر کوٹہ میں بھی خواتین نے ایک ’شاہین باغ‘ قائم کر لیا ہے اور گذشتہ 9 روز سے ...

میری بیٹیوں پر مقدمہ درج ہوا تو امت شاہ پر کیوں نہیں؟ منور رانا

شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف مظاہرے میں شامل ہونے کی پاداش میں اپنی بیٹیوں کے خلاف مقدمہ درج لکھے جانے کے بعد اردو کے نامور شاعر منور رانا نے امت شاہ کی لکھنؤ ریلی پر سوال اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جلسہ عام سے خطاب کر کے انتظامیہ کی طرف سے ...

ملک گیر احتجاج: ’شاہین باغ کی دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے ایل جی کے پاس لے جایا گیا‘

قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ مظاہرین انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ احتجاج جاری رہے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے لیفٹننٹ گورنر سے ملاقات کرائی گئی تھی اور جو لوگ انہیں وہاں لے کر گئے تھے وہ شاہین باغ خواتین مظاہرین کی ...