بغیر منصوبہ کے نافذ کیے گئے لاک ڈاون سے ملک کو نقصان پہنچا: کانگریس

Source: S.O. News Service | Published on 21st May 2020, 1:03 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،21؍مئی (ایس او نیوز؍یو این آئی)  کانگریس نے کہا کہ کورونا وائرس (کووڈ 19) کو روکنے کے لئے لاک ڈاؤن ضروری ہے لیکن حکومت نے اسے ٹھوس منصوبہ اور سوچے سمجھے بغیر نافذ کیا ہے جس کی وجہ سے ملک کو اس مدت میں فائدہ ہونے کی بجائے نقصان اٹھانا پڑا۔

کانگریس کے ترجمان ابھیشیک منو سنگھوی نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں کہا کہ مودی حکومت نے لاک ڈاون تو نافذ کیا لیکن اس سے پہلے یہ نہیں سوچا کہ مہاجر مزدورو کو ان کے گھروں میں بھیج دینا چاہیے تاکہ انہیں بے وجہ پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نریندر مودی نے لاک ڈاؤن نافذ کرنے کے لئے صرف چار گھنٹے کا وقت دیا جس سے ثابت ہوتا ہے کہ اسے بغیر سوچے سمجھے نافذ کیا گیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس لاک ڈاون کے دوران لوگوں کی ملازمت گئی ہے اور بے روزگاری میں اضافہ ہوا ہے۔ معیشت پر نظر رکھنے والے ادارے سی ایم آئی ای کے 3؍ مئی کے اعدادو شمار کے مطابق ملک میں بے روزگاری ریکارڈ 27.1 فیصد پر ہے اور ہندوستان میں بے روزگاری امریکہ کے مقابلہ میں چار گنا زیادہ ہے۔ اعدا دو شمار میں کہا گیا ہے کہ اس مدت میں 12.2 کروڑ لوگوں کی ملازمت گئی ہے اور 9 کروڑ سے زیادہ چھوٹے کاروباری بے روزگار ہوئے ہیں۔

ترجمان نے کہا کہ 25 ؍مارچ کو ملک میں کووڈ۔19 کے 618 معاملے تھے جو 3؍ مئی تک 28070 اور 18مئی تک 257 فیصد کی شرح سے ایک لاکھ تک پہنچ گئے۔ اسی طرح سے مرنے والوں کی تعداد اس مدت میں 3.8 فیصد کی شرح سے 13 سے بڑھ کر 3163 ہوگئی ہے۔ انہو ں نے کہا کہ یہی حالت ٹیسٹ کی ہے اور اس تعدا میں بھی کوئی بڑی تبدیلی نہیں آئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہاتھرس گینگ ریپ: پولیس نے بیٹی کی آخری خواہش پوری نہیں کرنے دی، متاثرہ کے والد

 اترپردیش کے ضلع ہاتھرس میں درندگی کی شکار متاثرہ کو بدھ کی علی الصبح اہل خانہ کی عدم موجودگی میں آخری رسوم کی ادائیگی کردی گئی۔ متاثرہ کے والد کا الزام ہے کہ ضلع انتظامیہ نے بیٹی کی آخری خواہش پوری کرنے کا موقع نہیں دیا۔

ہاتھرس گینگ ریپ: خاطیوں کو سخت سزا ملے پی ایم مودی کی ہدایت، جانچ ایس آئی ٹی کے حوالے

 اترپردیش کے ضلع ہاتھرس میں درندگی کی شکار دلت لڑکی کے اہل خانہ کی رضا مندی کے بغیر آخری رسوم کی ادائیگی کیے جانے کے الزام کے بعد وزیر اعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے مہذب سماج کو شرمسار کرنے والے اس واقعہ کی جانچ کے لئے ایس آئی ٹی تشکیل دینے کا فیصلہ کیا ہے۔

بابری مسجد منہدم معاملے میں ملزموں کو بری کرنے کا فیصلہ؛ مسلم پرسنل لاء بورڈ نے فیصلہ کو ناانصافی کی تاریخ میں ایک مثال قرار دیا، پوچھا؛ کیا غیبی طاقت نے مسجد کو ڈھادیا؟

بابری مسجد کو شہید کرنے کے سلسلہ میں سی بی آئی عدالت کا فیصلہ آیا اور تمام ملزمین بری کردیئے گئے۔ اس پر اظہار خیال کرتے ہوئے آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ کے جنرل سکریٹری حضرت مولانا محمد ولی رحمانی صاحب نے کہا کہ یہ ایک بے بنیاد ججمینٹ ہے جسمیں شہادتوں کو نظرانداز کیا گیا ہے ...

بابری مسجد انہدام کیس میں لکھنو سی بی آئی خصوصی عدالت کے فیصلے سے عوام کا بھروسہ عدلیہ سے اٹھ گیا۔ ایس ڈی پی آئی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (ایس ڈی پی آئی) کے قومی صدر ایم کے فیضی نے اپنے جاری کردہ اخباری اعلامیہ میں لکھنو سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے بابری مسجد انہدام کیس کے تمام ملزموں کو بری کرنے کے فیصلے کو انتہائی مایوس کن قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ اس فیصلے سے عوام کا بھروسہ عدلیہ سے ...

بابری مسجد انہدام معاملے کا فیصلہ: ایک شرمناک عمل، بھارت کے نظریے کے لئے چیلنج: پاپولر فرنٹ

پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے چیئرمین اور ایم اے سلام نے بابری مسجد انہدام معاملے میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے فیصلے کو ملک کے عوام کے لئے شرمناک بتایا ہے اور اسے بھارت جیسے ایک آزاد عدلیہ والے سیکولر ملک کے نظریے کے لئے چیلنج سے تعبیر کیا ہے۔ اس فیصلے میں یہ کہہ کر نظام انصاف کا ...