اقوام متحدہ کی 'ویمن کونسل' میں ایران کی رکنیت کو خواتین کے لیے'یوم سیاہ' قرار

Source: S.O. News Service | Published on 23rd April 2021, 10:46 PM | خلیجی خبریں |

تہران، 23؍اپریل (ایس او نیوز؍ایجنسی) اقوام متحدہ میں خواتین کی ''صنفی مساوات اور خواتین کو بااختیار بنانے" کی نگران کونسل میں ایران کی شمولیت پر انسانی حقوق کے کارکنوں نے سخت برہمی کا اظہار کرتے ہوئے 'یو این مانیٹری کونسل' پر کڑی تنقید کی ہے۔ انسانی حقوق کے کارکنوں نے اقوام متحدہ کے اس اقدام کو ایران میں خواتین کے لیے 'یوم سیاہ' قرار دیتے ہوئے اس کی مذمت کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

اقوام متحدہ کی اقتصادی اور سماجی کونسل نے 20 اپریل منگل کو رائے شماری کے دوان 45 رکن ممالک میں ایران کا انتخاب کیا گیا۔ اس بین الاقوامی ادارے کا مشن صنفی مساوات اور خواتین کو بااختیار بنانا ہے۔

یہ بات قابل ذکر ہے کہ یورپی یونین کے متعدد ممبر ممالک جنہوں نے طویل عرصے سے باضابطہ طور پر ایران میں انسانی حقوق خاص طور پر خواتین کے حقوق کی پامالی پر تنقید کی ہے نے اس بین الاقوامی تنظیم میں تہران کی رُکنیت میں اصلاح کے لیے چار سال کے لیے ایران کو منتخب کیا ہے۔ اقوام متحدہ کی کونسل پر ایرانی کارکنوں میں سخت غم وغصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ لگتا ہے کہ عالمی ادارہ ایران میں خواتین کے ساتھ ہونے والی نا انصافیوں کو دانستہ طور پر نظر انداز کر رہا ہے۔

ایران کی رکنیت کے خلاف احتجاج صرف ایرانی کارکنوں تک ہی محدود نہیں بلکہ اقوام متحدہ کے آبزر ویٹری کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر ہلیل نیویر نے اپنے ٹویٹ میں اس انتخاب کا مذاق اڑایا ہے اور کہا ہے کہ خواتین کے دفاع کرنے والے اس اعلی ادارہ میں ایرانی حکومت کی رکنیت انسانی حقوق کا کھلواڑ ہے۔ یہ اقدام آیت اللہ خامنہ ای کی حکومت کو فائر بریگیڈ کا سربراہ مقرر کرنے کے مترادف ہے۔

مسٹر نیویر کا کہنا ہے کہ یہ مضحکہ خیز انتخاب اخلاقی طور پر قابل مذمت ہے اور خواتین کے حقوق اور انسانی حقوق کے لیے ایک سیاہ دن ہے۔

اگرچہ یہ ووٹ خفیہ تھا۔ اقوام متحدہ کے مانیٹر نے بتایا کہ اقوام متحدہ کی اقتصادی اور سماجی کونسل (ای سی او ایس او سی) کے پندرہ یورپی اور مغربی ممبران میں سے چار نے ایران کی رکنیت کے حق میں ووٹ دیا۔

اقوام متحدہ کی خواتین سے متعلق کونسل کے رکن ممالک میں جرمنی، فرانس، برطانیہ، نیدر لینڈ، ناروے، آسٹریا، سوئٹزرلینڈ، لکسمبرگ، فن لینڈ، لٹویا، کینیڈا اور امریکا شامل ہیں۔ مجموعی طور پر کونسل کے 54 ممالک میں ایران کے حق میں 45 ممالک نے ایران کے حق میں‌ ووٹ دیا۔ ایران کے حق میں ووٹ دینے والے ملکوں میں چار مغربی ممالک بھی شامل ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ کے بعد 1 کروڑ افراد عمرہ ادا کر چکے ہیں : وزارت حج وعمرہ

سعودی وزارت حج و عمرہ کے اعلان کے مطابق محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ اور عمرہ، نماز اور زیارت کی بتدریج واپسی کے بعد سے اب تک 1 کروڑ افراد کے لیے عمرے کی ادائیگی کو ممکن بنایا گیا۔ سال 1443 ہجری کے عمرہ سیزن کے آغاز کے ساتھ ہی مختلف ممالک کے لیے جاری عمرہ ویزوں کی تعداد 12 ہزار سے تجاوز کر ...

بھٹکل کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس؛ پروگرام میں "مرحوم زاہد رکن الدین ، ایک فرد ایک انجمن " کتاب کا بھی اجراء

بھٹکل مسلم کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس جمعرات مورخہ  26 اگست کو  جدہ کے گرین لینڈ  ہوٹل میں منعقد ہوا جس میں  جدہ جماعت سمیت بھٹکل مسلم خلیج کونسل کے سابق صدر مرحوم  سی اے زاہد رکن الدین صاحب کے  تعلق سے موصولہ تعزیتی قرار دادوں  اور تعزیتی خطوط پر مشتمل ایک کتاب "مرحوم زاہد ...