’سوورنا تریبھوجا‘ غرقابی المیہ: متاثرہ خاندانوں نے کیا سرکاری امداد قبول کرنے سے انکار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 12th May 2019, 12:13 PM | ساحلی خبریں |

اڈپی:12/مئی (ایس او نیوز) مالوان کے سمندر میں غرقاب کشتی پر موجود سات ماہی گیروں کے اہل خانہ کوریاستی حکومت کی طرف سے فی کس 10لاکھ روپے امداد دینے کا جو اعلان کیا گیا تھااسے قبول کرنے سے متاثرہ خاندانوں نے انکار کردیا ہے۔

خیال رہے کہ اڈپی ضلع انچارج وزیر ڈاکٹر جئے مالا نے ریاستی حکومت نے فشر مینس کیالیمٹی ریلیف فنڈسے 6لاکھ روپے اور چیف منسٹر ریلیف فنڈ سے 4لاکھ روپے متاثرہ خاندان والوں کو مشروط معاوضہ دینے کا اعلان کیا تھا جس کے مطابق معاوضے کی رقم قبول کرنے کے لئے متاثرہ افراد کو نقصان کی بھرپائی کا قرار نامہ indemnity bondدینا لازمی تھا۔یعنی اگر لاپتہ ماہی گیر زندہ واپس لوٹتے ہیں تو پھر انہیں معاوضے کی رقم سرکار کو واپس لوٹانا ہوگا۔

ملپے اور بھٹکل کے متاثرہ ماہی گیر خاندان والوں نے معاوضے کی رقم قبول نہ کرنے کی ایک وجہ یہ نقصان کی بھرپائی کا قرار نامہ ہے۔ جبکہ دوسری بڑی اور اہم وجہ یہ بتائی ہے کہ معاوضہ اس شر ط کے ساتھ دیا جارہا ہے کہ لاپتہ ماہی گیر وں کی اگر مو ت واقع ہوئی ہے، تو ہی اس معاوضے پر ان کا حق ہوگا۔ جبکہ ابھی تک کسی بھی سرکاری ایجنسی نے متعلقہ ماہی گیروں کی موت کی تصدیق نہیں کی ہے۔ اب اگر اہل خانہ اس رقم کو قبول کرتے ہیں تو اس کامطلب یہی ہوگا کہ انہوں نے لاپتہ ماہی گیروں کی ہلاکت کو مان لیا ہے۔

متاثرہ ماہی گیر خاندانوں کے اس موقف سے محکمہ ماہی گیری کے افسران کو جھنجھلاہٹ میں مبتلا کردیا ہے۔کیونکہ اب تک اس مسئلے کو اسمبلی الیکشن کے دورا ن سیا سی طور پر اچھالے جانے اور مختلف حلقوں سے دباؤ کی وجہ سے وہ پریشان تھے۔ اب حکومت کی طرف سے امداد فراہم کرکے اس مسئلے کی گرمی کرنے کی کوشش ہورہی ہے تو متاثرہ خاندان والوں نے ایک نیا بکھیڑا کردیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔