مہاراشٹرا سے اُڈپی لوٹنے والوں نے لگایا انتظامیہ پر الزام؛ ہماری رپورٹ کورونا پوزیٹو نہیں تھی؛ ڈی سی نے الزام کو کیا مسترد

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 11th June 2020, 5:54 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 11/جون (ایس او نیوز) پڑوسی ضلع اُڈپی میں  گذشتہ دنوں ایک ساتھ  سو،اور  دو سو لوگوں کی رپورٹ کورونا پوزیٹو  آنے کے بعد ویسے تو اُڈپی میں گذشتہ تین دنوں سے  کورونا کے کوئی نئے مریض سامنے  نہیں آئے ہیں اور دیکھا جائے تو ایسا لگ رہا ہے کہ اُڈپی ضلعی انتظامیہ نے کورونا پر قابو پانے میں کامیابی حاصل کرلی ہے،  لیکن جن لوگوں کی  رپورٹ کورونا پوزیٹو آنے کے بعد پھر انہیں  گھر سے واپس کورنٹائن سینٹر میں روانہ کیا گیا تھا، اُن میں سے کئی ایک نے اس بات کا الزام لگایا ہے کہ اُن کی رپورٹ کورونا نیگیٹو آچکی تھی، پھر بھی انہیں  ایسولیشن سینٹر میں ڈالا گیا ہے اور کہا جارہا ہے کہ انہیں کورونا ہوا ہے۔

ٹائمز آف انڈیا میں چھپی رپورٹ کے مطابق ضلع اُڈپی کے کارکلا کے ایک دیہات  رنجلا کے رہنے والے( مہاراشٹرا سے لوٹ کر آنے والے)    نوجوانوں کے ایک گروپ نے الزام لگایا ہے کہ مہاراشٹرا سے لوٹ کر 25 دن ہونے کے بعد  انہیں زبردستی  ایسولیشن اسپتال  میں رکھا گیا ہے، حالانکہ  ان کی رپورٹ کورونا نیگیٹو آئی تھی۔

نوجونوں نے اخبار کو بتایا کہ "ہم نے14 دن سرکاری (انسٹی ٹیوشنل) کورنٹائن مکمل کرکے دس دن کا ہوم کورنٹائن بھی مکمل کرلیا تھا  اور ہمارے تھوک کے نمونوں کی رپورٹ نیگیٹو آچکی تھی، لیکن بعد میں آشاکارکنوں نے ہمارے گھر پر آکر دستک دی اورکہا کہ ہماری رپورٹ کورونا پوزیٹو آئی ہے،  ہمیں واپس دوسے تین دنوں تک اسپتال میں ایڈمٹ کرانے کے بعد بغیر کوئی علاج کرائے  اسپتال سے ڈسچارج کرایا گیا" ان لوگوں کا سوال ہے کہ ہماری رپورٹ ایک مرتبہ نیگیٹو آنے کے بعد دوسری مرتبہ سیمپل لئے بغیر ہی   رپورٹ کورونا پوزیٹو آنا کیسے ممکن ہے ؟ نوجوانوں نے پوچھا ہے کہ   اُڈپی ضلعی انتظامیہ کی طرف سے ایک بار رپورٹ نیگیٹو آنے کے بعد دو چار دن بعد اُسی  نمونے کی رپورٹ پوزیٹو کیسے آسکتی ہے ؟ نوجوانوں نے سوال اُٹھایا ہے کہ کیا  اُڈپی ضلعی انتظامیہ بغیر کسی وجہ کے زبردستی لوگوں کو  گھروں سے اُٹھاکر ایسولیشن سینٹروں میں رکھنا چاہتی ہے ؟ 

اخبار نے   اُڈپی کے ایک شخص کا بیان بھی درج کیا ہے جس نے بتایا ہے کہ وہ  14 دنوں کا  انسٹی ٹیوشنل کورنٹائن مکمل کرنے کے بعد گھر پہنچا تھا، لیکن دس دن بعد آشا کارکن اُس کے گھر پر پہنچ گئے اور اُسے بتایا کہ اُس کی  کوویڈ۔19 رپورٹ پوزیٹو آئی ہے۔ اب یہ شخص   ایسولیشن اسپتال اُدیاور میں ایڈمٹ ہے۔ انگریزی اخبار کے مطابق کچھ لوگوں نے شکایت کی ہے کہ ان کے مکانوں پر غیر ضروری طور پر  کورنٹائن کے اسٹیکر بھی  چپکائے گئے ہیں۔

اس تعلق سے ٹائمز آف انڈیا نے ضلع کے ڈپٹی کمشنر جی جگدیشا سے رابطہ کیا تو انہوں نے تمام الزامات کو بے بنیاد اور سچائی سے دور بتایا۔ ڈی سی کا کہنا ہے کہ ضلعی انتظامیہ نے  کوویڈ۔19 کی رپورٹ پوزیٹو آنے پر ہی  لوگوں کو  الگ تھلگ کیا ہے۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ اُڈپی میں جو 946 کورونا کے معاملات سامنے آئے ہیں ، اُن سب کی رپورٹ کورونا پوزیٹوآنے پر ہی انہیں  ایسولیشن اسپتال میں داخل کیا گیا ہے۔ ڈی سی کے مطابق 95 فیصد کیسس میں کورونا کی کوئی علامات نہیں ہیں۔ ڈی سی نے   اس بات کا انتباہ بھی دیا کہ اگر کوئی افواہوں کو پھیلاتا ہے اور جھوٹے الزامات عائد کرتا ہے تو پھر ہم اُن کے  خلاف مقدمہ درج کرائیں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل کے ایک عالم دین کی صرف 47 دنوں میں حفظ قران کی تکمیل پر تہنیتی جلسہ

نوجوان عالم دین عبدالغفار کی صرف 47 دنوں کے اندر حفظ قران مکمل کرنے پر ان کے اعزاز میں مسجد ابوہریرہ میں ایک تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں ان کی تہنیت کی گئی اور انہیں  مبارکباد سمیت انعامات سے نوازا گیا۔

بھٹکل کا نوجوان اُدیاور میں ہوئے سڑک حادثہ میں شدید زخمی؛ علاج کے لئے مالی تعاون کی اپیل

بھٹکل مخدوم کالونی کا ایک نوجوان اُڈپی کے اُدیاور میں سڑک حادثہ میں شدید زخمی ہوا ہے اور اسے منی پال کستوربا اسپتال شفٹ کیا گیا ہے، نوجوان کی مالی حالت کمزور ہونے  کی وجہ سے علاج کے لئے  قریب تین لاکھ  روپیوں کی فوری ضرورت ہے۔ نوجوان کی شناخت سمیرسوکیری (34) کی حیثیت سے کی گئی ...

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

دبئی :شیرورگرین ویلی اسکول کے صدر ڈاکٹر سید حسن کی دختر دانیا کو ملا شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس‘

عرب امارات میں بہترین ہمہ جہتی تعلیمی کارکردگی کے لئے طالب علموں کو دیا جانے والا ’’ہَرہا ئنیس شیخہ فاطمہ بنت مبارک ایوارڈ آف ایکسلینس“ امسال دانیا حسن کو تفویض کیا گیا ہے جس کا تعلق  بھٹکل کے پڑوسی علاقہ شرور سے ہے۔

بنگلورو تشدد : علما نے دلت ایم ایل اے کے گھر کو از سر نو تعمیر کرنے کی پیشکش کی

نگلورو کے تشدد زدہ علاقوں میں امن و اتحاد برقرار رکھنے کیلئے علما کرام نے ایک بڑا قدم اٹھایا ہے۔ کرناٹک کے امیر شریعت مولانا صغیر احمد رشادی کی قیادت میں علما کرام کے وفد نے آج شہر کے متاثرہ علاقے ڈی جے ہلی اور کاول بیسندرا کا دورہ کیا ۔ سب سے پہلے علما کرام نے ڈی جے ہلی پولیس ...

بنگلورو تشدد : 175 ملزمین گرفتار ، احتیاطی طور پر ان علاقوں میں حفاظتی انتظامات، 15 اگست تک دفعہ 144 نافذ

 11 اگست کی رات پیش آئے تشدد کے واقعات کے بعد شہر کے ڈی جے ہلی ، کے جی ہلی اور کاول بیسندرا علاقوں میں حالات پوری طرح قابو میں آچکے ہیں ۔ احتیاطی طور پر ان علاقوں میں حفاظتی انتظامات مزید پختہ کردئے گئے ہیں ۔

چکمنگلورو میں شنکراچاریہ کے مجسمہ پر ’میلاد کا جھنڈا‘ ملنے سے حالات کشیدہ، ملند نامی شخص نکلا قصوروار!

کرناٹک کی راجدھانی بنگلورو میں ہونے والے فرقہ وارانہ تشدد کی آگ ابھی ٹھنڈی بھی نہیں ہوئی کہ ریاست کے چکمنگلورو میں آدی شنکراچاریہ کے مجسمہ کی چھت پر عید میلاد النبی کا جھنڈا پائے جانے سے علاقہ میں کشیدگی پھیل گئی۔ یہ جھنڈا بارش کی وجہ سے بھیگا ہوا تھا اور اسے جمعرات کے روز ...

دبئی میں ایک سواری نے ایک شخص کو رونڈ ڈالا؛ مہلوک ایشیائی شخص کی شناخت ہنوز نہیں ہوپائی؛ پولس نے عوام سے کی تعاون کی اپیل

یہاں ایک سواری کی ٹکر میں ایک شخص ہلاک ہوگیا مگر اُس شخص کی شناخت ابھی تک معمہ بنی ہوئی ہے اور یہ کون ہے، کس ملک یا کس  شہر سے ہے کچھ پتہ نہیں چل پایا ہے۔ پولس کا کہنا ہے کہ یہ ایشیاء کے  کسی ملک سے تعلق رکھتا ہے۔

توہین آمیز فیس بک پوسٹ اور اس پر تشدد دونوں قابل مذمت

شان رسالتﷺ میں گستاخی کرتے ہوئے کئے گئے ایک فیس بک پوسٹ اور اس کے نتیجے میں شہر بنگلورو میں گزشتہ روز پیش آنے والے پر تشدد واقعات کی مذمت کے لئے چہار شنبہ کی صبح ممتاز علمائے کرام وقائدین کی زوم کانفرنس کے ذریعے ایک میٹنگ ہوئی