متحدہ عرب امارات کا مریخ پر جانے والا مشن مزید تاخیر کا شکار

Source: S.O. News Service | Published on 16th July 2020, 5:10 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دبئی،16؍جولائی(ایس او نیوز؍ایجنسی) متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کا جاپان کے اسپیس سینٹر سے مریخ پر بھیجے جانے والے مصنوعی سیارچے کا مشن خراب موسم کے باعث مزید تاخیر کا شکار ہو گیا ہے۔

یو اے ای کے 'ہوپ' یعنی امید نامی سیارچہ عرب ممالک کا پہلا ایسا منصوبہ ہے جس میں کوئی ملک مصنوعی سیارچے کے ذریعے کسی اور سیارے کے حوالے سے تحقیق کرے گا۔

اس سیارچے کو جاپان کے جنوب میں واقع تنیگاشیما اسپیس سینٹر سے دو روز قبل بدھ کو روانہ کیا جانا تھا تاہم خراب موسم کے باعث اس کی روانگی جمعے تک ملتوی کر دی گئی تھی البتہ بدستور خراب موسم کے سبب اب یہ جمعے کو بھی روانہ نہیں ہو سکے گا۔

اس مشن کے لیے راکٹ مِٹسوبیشی ہیوی انڈسٹریز نے بنایا ہے جس کا کہنا ہے کہ مشن کی روانگی بدھ کو ملتوی ہوئی تھی جس کے بعد اس کی روانگی کی تاریخ مقرر نہیں کی گئی تھی۔

دوسری جانب یو اے ای کے مریخ پر تحقیق کرنے والے مشن 'ہوپ' کا کہنا ہے کہ مصنوعی سیارچے کو جولائی کے آخری دنوں میں روانہ کیا جا سکتا ہے۔

مِٹسوبیشی کے مطابق عمومی طور پر مشن کی روانگی سے دو دن قبل اس کا اعلان کیا جاتا ہے۔

مٹسوبیشی کے حکام نے رواں ہفتے کے آغاز میں بھی کہا تھا کہ مشن کی روانگی میں تعطل آ سکتا ہے کیوں کہ آنے والے دنوں میں موسم کی خرابی اور شدید بارش کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ جاپان کے اکثر علاقوں میں گزشتہ ایک ہفتے سے شدید بارشیں ہو رہی ہیں جب کہ کئی علاقوں میں سیلاب اور تودے گرنے سے ہلاکتیں بھی ہوئی ہیں۔

یو اے ای کا سیارچہ ہوپ اگر رواں ماہ روانہ ہو جاتا ہے تو فروری 2021 میں وہ مریخ پر پہنچے گا۔ 2021 میں یو اے ای کے قیام کے بھی 50 سال مکمل ہو رہے ہیں۔

اگر یو اے ای کا مشن کامیاب ہو جاتا ہے تو تیل پر انحصار کرنے والے ملک کے لیے خلا میں تحقیق کے راستے کھل سکتے ہیں۔ جو اس کے لیے ایک بڑی کامیابی کے ساتھ ساتھ تیل پر معیشت کے انحصار کو کم کرنے کا سبب بھی ہو سکتا ہے۔

سیارچہ ہوپ تین آلات لے کر جائے گا جس سے مریخ کے بیرونی مدار اور موسمیاتی تبدیلیوں کا جائزہ لیا جائے گا۔ اس کے ساتھ ساتھ یہ سیارچہ دو سال تک اس سرخ سیارے کے گرد چکر لگا کر اس کا مشاہدہ کرتا رہے گا۔

یو اے ای کا کہنا ہے کہ اس سیارچے کی مدد سے مریخ پر مختلف وقتوں میں آنے والی ماحولیاتی تبدیلیوں کا مکمل جائزہ پہلی دفعہ پیش کیا جا سکے گا۔

یو اے ای کے علاوہ مریخ پر جانے والے دو دیگر مشن بھی تیاری کے آخری مراحل میں ہیں۔ یہ مشن چین اور امریکہ خلا میں بھیجیں گے۔

دوسری جاپان بھی 2024 میں مریخ کے سب سے بڑے چاند کا مشاہدہ کرنے کے لیے مشن بھیجنے کا اعلان کر چکا ہے۔

اس مشن میں مریخ کے سب سے بڑے چاند سے ایک روبوٹ کی مدد سے مٹی کا نمونہ حاصل کیا جائے گا اور پھر اس پر تحقیق کی جائے گی۔

ایک نظر اس پر بھی

سعودی عرب کی حکومت کا اہم فیصلہ

سعودی پبلک پراسیکیوشن نے قانون تحفظ اطفال کے حوالے بعض نکات کی وضاحت کی ہے، جس کے مطابق بچوں کے ساتھ کیے جانے والے غیر قانونی سلوک پر سخت سزائیں دی جائیں گی۔ ...

مطافِ کعبہ میں تنہا دعا کرنے والی دنیا کی خوش قِسمت خاتون

کورونا وائرس کی وَبا کے پیش نظر اس مرتبہ حج کے ایّام میں بعض بڑے نادر اور منفرد واقعات پیش آئے ہیں جن کا عام حالات میں تصور بھی ممکن نہیں۔ ایسے واقعات میں تازہ اضافہ ایک تنہا مسلم خاتون کی کعبۃ اللہ کے سامنے عبادت وریاضت ہے اور ان کے ساتھ مطاف میں کوئی دوسرا فرد نظر نہیں آرہا ہے۔

لبنان: تین روزہ قومی سوگ کا آغاز، عالمی امداد بھی جاری

لبنان میں جہاں ایک طرف زبردست دھماکے کی وجوہات کی تفتیش جاری ہے وہیں جمعرات سے تین روزہ قومی سوگ کا آغاز ہوگیا ہے۔ بیروت میں ہونے والے دھماکے میں 135 افراد ہلاک ہوئے تھے۔لبنان کے دارالحکومت بیروت میں منگل کے روز ہونے والے بم دھماکے سلسلے میں حکومت نے جس تین روزہ سوگ کا اعلان کیا ...

عالمی ادارہ صحت نے کہا؛ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے سے بڑھ رہے ہیں کورونا کے معاملات، نوجوان مریضوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ

عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کا کہنا ہے کہ سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے کی وجہ سے گزشتہ پانچ ماہ کے دوران کرونا وائرس سے متاثرہ نوجوانوں کی تعداد میں تین گنا اضافہ ہوا ہے۔ڈبلیو ایچ او کی رپورٹ کے مطابق فروری کے آخر سے لے کر جولائی کے وسط تک، کرونا وائرس کا شکار ہونے والے 60 لاکھ ...

جاپانی ماہرین کا کورونا وائرس کی وبا پر قابو پانے کے لئے سوپر کمپیوٹر کے استعمال کا اعلان

کورونا وائرس کی روکتھام کے اقدامات سے متعلق جاپان کے انچارج وزیر نیشی مورا یاسوتوشی نے امید ظاہر کی ہے کہ حکومت، مصنوعی ذہانت اور دیگر ٹیکنالوجیز کو بروئے کار لاتے ہوئے، انفیکشنز پر قابو پانے کے نئے موثر اقدامات دریافت کرنے میں، رواں ماہ کے آخر تک کامیاب ہو جائے گی۔ جاپانی ...

بیروت میں ہوئے زبردست دھماکہ کی کیا ہے اصل کہانی ؟ 6 سال سے ایک بحری جہاز پر 2750 ٹن دھماکا خیز مواد امونیم نائٹریٹ رکھا ہوا تھا؛ اب تک 135 کی موت

بیروت،06 /اگست (آئی این ایس انڈیا)منگل چار اگست کی سہ پہر ہونے والے زور دار دھماکے کے نتیجے میں بیروت میں بحری جہازوں کے لنگر انداز ہونے کا مقام مکمل طور پر تباہ ہو گیا۔ اس کا شمار لبنان کے اہم ترین مقامات میں ہوتا ہے جو ریاستی خزانے میں مالی رقوم پہنچانے کا نمایاں ترین ذریعہ تھا۔ ...