ہند۔چین ثالثی کیلئے ٹرمپ کی حیرت انگیز پیشکش

Source: S.O. News Service | Published on 28th May 2020, 12:31 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

نئی دہلی،28؍مئی(ایس او نیوز؍ایجنسی) امریکی صدر ڈونالڈ ٹرمپ نے ہندوستان اور چین کے مابین جاری سرحدی تنازعہ میں ثالثی کی پیش کش کرتے ہوئے گذشتہ سال پاکستان کے ساتھ تنازعہ کی یاد تازہ کردی- انہوں نے اس وقت بھی یہی پیش کش کی تھی اور کہا تھا کہ اگر ہندوستان اور پاکستان چاہیں تو وہ مسئلہ کشمیر پر ثالثی کر سکتے ہیں -5 اگست 2019 کو ہندوستان نے کشمیر سے آئین کے آرٹیکل370کوختم کردیاتھا،جس پر پاکستان نے اقوام متحدہ سے شکایت کی تھی اور امریکی صدر سے ملاقات میں انہیں مصالحت کی پیش کش کی دعوت بھی دی تھی -امریکی صدر کی باربار ثالثی کا کرداراداکرنے کی پیش کش پر ہندوستان نے اس وقت بھی امریکہ سے یہی کہاتھا کہ ہندوستان اپنے اندرونی معاملہ میں کسی کی مداخلت قبول نہیں کرے گا-اس کے باوجود ہند-چین سرحدی تنازع پر ایک بار پھر امریکی صدرنے بن بلائے مہمان کی طرح مداخلت کی کوشش کی ہے-انہوں نے کہا ہے کہ اگر ہند-چین چاہیں تو وہ دونوں ملکوں کے مابین مصالحت کیلئے ثالثی کا کردار اداکرسکتے ہیں -حالانکہ چین نے صاف طور پر کہہ دیاہے کہ سرحد پر معاملہ بالکل معمول کے مطابق ہے-دونوں ممالک کے تنازع کو مذاکرات کے ذریعہ حل کرلیاجائے گا-ہندوستان میں چین کے سفیر سن ویڈونگ نے کہا کہ بہتر تعلقات استوار کرنا دونوں ممالک کی ذمہ داری ہے- دونوں طرف کے جوانوں کو بھی سمجھنا چاہئے- ہمیں ان چیزوں کو دور رکھنا ہوگا جن کا باہمی تعلقات پر برا اثر پڑتا ہے- باہمی بحث و مباحثے کے ذریعے اختلافات کو حل کرنا چاہئے-

ایک نظر اس پر بھی

کورونا انفیکشن: ہندوستان ہوا بے حال، مریضوں کی تعداد تقریباً 7.5 لاکھ، مہلوکین 20642

 ہندوستان میں کورونا کا قہر لگاتار بڑھتا ہی چلا جا رہا ہے۔ گزشتہ کچھ دنوں سے روزانہ 20 ہزار سے زائد نئے مریض سامنے آ رہے ہیں اور مہلوکین کی تعداد میں بھی 400 سے 500 کے درمیان درج کی جا رہی ہے۔ تازہ ترین خبروں کے مطابق ہندوستان میں کورونا متاثرہ افراد کی کل تعداد 7.42 لاکھ اور ہلاکتوں ...

خطرے میں اسپین، 95 فیصد آبادی ہو سکتی ہے کورونا کا شکار: تحقیق

کورونا وائرس یعنی کووڈ-19 کے حوالہ سے اسپین میں کی گئی اسٹڈی میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسپین کی آبادی کا صرف 5فیصد ہی اینٹی باڈیز تیار کرسکا ہے، جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ کورونا سے بچاؤ کے لیے ’ہرڈ امیونٹی‘ حاصل نہیں کی جاسکتی۔