لوک سبھا انتخابات2019:تنازعات میں پی ایم مودی کی کیدارناتھ یاترا، ٹی ایم سی نے ای سی سے کی شکایت، کہا، ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th May 2019, 11:17 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،20/ مئی (ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا) وزیر اعظم مودی کی کیدارناتھ یاترا پر تنازعہ ہو گیا ہے۔ترنمول کانگریس نے پی ایم مودی کے دورے کے لیے ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی قرار دیا ہے اور اس کی شکایت الیکشن کمیشن سے کی ہے۔وہیں مودی آج بدری ناتھ دھام کے دورے پر ہیں۔ الیکشن کمیشن کو اتوار کو لکھے گئے خط میں ترنمول کانگریس نے کہاکہ آخری مرحلے کی پولنگ کے لئے انتخابی مہم 17 مئی 2019 کو شام 6 بجے ختم ہو گئی تھی لیکن پی ایم مودی کے کیدارناتھ دورے کو گزشتہ 2 دنوں سے لوکل اور قومی میڈیا کی طرف ٹیلی ویژن پر نشر کیا جا رہا ہے۔یہ مثالی ضابطہ اخلاق کی بہت بڑی خلاف ورزی ہے۔ترنمول رہنما ڈیریک اوبرائن کے دستخط والے خط میں کہا گیاکہ پی ایم مودی نے اعلان کرتے ہوئے کہاکہ کیدارناتھ مندر کے لئے ماسٹر پلان تیار ہے اور انہوں نے کیدارناتھ میں میڈیا اور وہاں کے لوگوں کو خطاب کیا۔یہ مکمل طور پر غلط اور غیر اخلاقی ہے۔اتراکھنڈ بی جے پی کے ذریعہ سے ہفتہ کو ٹویٹ کی گئی تصویرمیں پی ایم مودی ایک گوفہ میں پوجاکرتے ہوئے دکھائی دیے تھے۔اس دوران انہوں نے بھگوا کپڑے پہنے ہوئے تھے۔الیکشن کمیشن نے پی ایم مودی کو ہمالیہ جانے کی اجازت دی تھی اور کہا تھا کہ ابھی ضابطہ اخلاق نافذ ہے۔ترنمول نے خط میں لکھاکہ ووٹروں کو براہ راست اور بالواسطہ طور پر متاثر کرنے کے لئے وزیر اعظم کی ہر منٹ کی معلومات کو شیئرکیا گیا۔مودی مودی کے نعرے بھی سنائی دئیے۔ایسا ووٹوں کو متاثر کرنے کے لئے کیا گیا۔یہ بہت بدقسمتی کی بات ہے کہ الیکشن کمیشن نے اس معاملے پر اپنی آنکھ اور کانوں دونوں بند کر رکھا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کورٹ نے راجیو سکسینہ کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینے والے عدالت کے فیصلے پر روک لگائی

سپریم کورٹ نے آگسٹا ویسٹ لینڈ ہیلی کاپٹر سودے سے منسلک منی لانڈرنگ معاملے میں سرکاری گواہ راجیو سکسینہ کو دیگر بیماریوں کا علاج کرانے کے لئے بیرون ملک جانے کی اجازت دینے کے دہلی ہائی کورٹ کے حکم پر بدھ کو روک لگا دی