کنڑا میں بات کرنے پر طلباء پر جرمانہ عائد کرنے والے اسکول کی منظوری رد کرنے وزیر تعلیم سے کنڑا اتھارٹی کا مطالبہ

Source: S.O. News Service | Published on 19th February 2020, 11:30 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،19/فروری (ایس او نیوز) کنڑا ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے چیرمین ٹی ایس ناگ بھرنا نے وزیر برائے پرائمری وسکینڈری تعلیم سریش کمار کو مکتوب روانہ کرکے اسکول میں کنڑا میں بات کرنے پر جرمانہ لگانے والے چنسندرا کے ایس ایل ایس انٹرنیشنل گروکل اسکول کی منظوری منسوخ کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔اپنے مکتوب میں انہوں نے بتایا ہے کہ اتھارٹی کو اس تعلق سے کئی شکایتیں ملی ہیں۔ ماہر تعلیم ڈاکٹروی پی نرنجن آرادھیا محکمہ تعلیم کے افسر اور اتھارٹی کے سکریٹری پر مشتمل ایک ٹیم نے مذکورہ اسکول کا دورہ کیا۔ وہاں پتہ چلا کہ اسکول میں کنڑا میں بات کرنے پر پہلی مرتبہ 50/ روپئے اور دوبارہ بات کرنے پر 100/روپئے کا جرمانہ لگایا جاتا ہے۔انہوں نے بتایا ہے کہ اسکول انتظامیہ نے کنڑا میں بات کرنے والے بچوں کے والدین کو بھی نوٹس جاری کرکے وارنگ دی ہے کہ ان کے بچے اسکول میں دوبارہ کنڑا زبان میں بات چیت نہ کریں۔انہوں نے بتایا ہے کہ اسکول کے خلاف حق تعلیم ایکٹ کے 23,13,16,17,23,29,/ کے تحت معاملہ درج کیا گیا ہے۔ مذکورہ اسکول میں فیس داخلہ کا طریقہ کو بھی خفیہ رکھا گیا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اسکول کے تمام بچے خوف کے ماحول میں تعلیم حاصل کررہے ہیں۔ اسکول نے حق تعلیم ایکٹ 2009ء اور حق تعلیم قانون (2012) اور کنڑا لرنگ ایکٹ 2015/ اور کنڑا لرنگ ضابطہ 2017/ کے تحت خلاف ورزی کی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کورونا وائرس سے بچنے کیلئے سخت احتیاطی تجاویز کے ساتھ ایس ایس ایل سی امتحانات منعقد کئے جائیں گے: وزیر تعلیم سریش کمار

ایس ایس ایل سی (جماعت دہم)امتحان کے متعلق ریاستی ہائی کورٹ میں داخل کی گئی درخواست کو نپٹادئیے جانے کے بعد اب ایس ایس ایل سی (جماعت دہم) امتحان کے اہتمام میں کسی طرح کی رکاؤٹ نہیں  ہے۔

کورونا سے متعلق کرناٹک بی جے پی صدرنلین کمار کٹیل نے پھیلائی جھوٹی خبر، کانگریس نے پولس میں کی شکایت

عالمی وبا کورونا وائرس یعنی کووڈ-19 کے بارے میں جھوٹی خبر پھیلانے کے تعلق سے کانگریس نے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے کرناٹک صدر ولوک سبھا رکن نلن کمار کٹیل کے خلاف شکایت درج کرائی ہے۔