سدارمیا کی کار پر انڈے پھینکنے کی واردات کے بعد سدرامیا نے پوچھا؛ اُنہوں نے گاندھی جی کو ماردیا، کیا وہ مجھے بخشیں گے ؟

Source: S.O. News Service | Published on 20th August 2022, 8:08 PM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،20؍اگست (ایس او نیوز؍ایجنسی)  کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ اور کانگریس کے سینئر لیڈر سدارامیا کی کار پر کوڈاگو میں انڈے پھینکنے، ان کی کار کے اندر ساورکر کی فوٹو ڈالنے اور کالے جھنڈے دکھاکر واپس جاؤ کے نعرے لگانے کی واردات پیش آنے کے بعد سدارمیا نےاپنا سخت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے سوال کیا کہ ”انہوں نے گاندھی جی کو مار ڈالا۔ کیا وہ مجھے بخشیں گے؟ سدارامیا نے چکمگلور میں ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ”انہوں نے گاندھی کا قتل کیا۔ گوڈسے نے گاندھی کو گولی مار دی۔ اور وہ گوڈسے کی تصویر کی پوجا کرتے ہیں۔ ایسے لوگ پولس کی سیکورٹی کے باوجود میری کار پر انڈے پھینکتے ہیں تو آپ آگے کس بات کی توقع رکھتے ہیں ؟‘‘ سدارمیا نے اپنی حفاظت کے بارے میں تشویش کا بھی اظہار کیا۔

بتایا جارہا ہے کہ سدارامیا کی باتوں کا نوٹس لیتے ہوئے وزیر اعلیٰ بسواراج بومئی نے کہا کہ انہوں نے مسٹر سدارامیا سے ملاقات کی ہے اور انہیں مناسب سیکورٹی اور معاملے کی مکمل تحقیقات کا یقین دلایا ہے۔ انہوں نے تحقیقات کے لیے سدارامیا سے دھمکی آمیز کال کی تفصیلات بھی طلب کیں ہیں۔

بومئی نے کہاکہ انڈے پھینکنے کی جو واردات سدارامیا کے ساتھ پیش آئی ہے، ’’ہم اس معاملے کو سنجیدگی سے لے رہے ہیں۔ ہم نے اس بارے میں پولیس کے ڈائریکٹر جنرل سے بات کی ہے۔ پولیس اس کی تحقیقات کرے گی۔ ہم نے ریاستی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر کو مکمل سیکورٹی فراہم کرنے کی ہدایت دی ہے۔ انہوں نے بی جے پی کارکنان سے کہا کہ وہ ایسا کوئی بیان نہ دے جس سے دوسروں کے ذہنوں میں نفرت پیدا ہوتی ہو۔‘‘

میڈیا رپورٹوں کے مطابق بومئی نے ڈائرکٹر جنرل آف پولیس (لا اینڈ آرڈر) آلوک کمار سے بھی بات چیت کی ہے اور انہیں ہدایت دی ہے کہ وہ حالیہ پیش رفت کے بعد سدارامیا کو اضافی سیکورٹی فراہم کریں۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو:کانگریس لیڈر رماناتھ رائے نے کہا؛ سی ٹی روی کے بیان نے بی جےپی کو ننگا کردیا ہے

بی جے پی میں راؤڈی شیٹر وں کی شمولیت کی حمایت میں سی ٹی روی نے جو بیان دیا ہے، اُس بیان نے بی جے پی کو ننگاکردیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار  سابق وزیر  اور کے پی سی سی کے نائب صدر بی ، رماناتھ رائی  نے کیا۔

مہاراشٹر-کرناٹک سرحد تنازعہ میں شدت، بیلگاوی میں مہاراشٹر کے ٹرکوں پر پتھراؤ، حالات کشیدہ

کرناٹک اور مہاراشٹر کے درمیان جاری سرحد تنازعہ نے بیلگاوی علاقہ میں حالات کو کشیدہ کر دیا ہے۔ سرحدی علاقہ بیلگاوی میں تشدد کے واقعات پیش آ رہے ہیں اور منگل کے روز تو بیلگاوی کے باگیواڑی میں شدید احتجاجی مظاہرہ دیکھنے کو ملا۔ اس دوران کرناٹک رکشن ویدیکے سے جڑے کارکنان نے ...

’مہاراشٹر کے وزراء نے بیلگاوی میں قدم رکھا تو ہوگی قانونی کارروائی‘، کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی نے کیا متنبہ

مہاراشٹر اور کرناٹک کے درمیان سرحدی تنازعہ کو لے کر بیان بازی لگاتار بڑھتی جا رہی ہے۔ تازہ بیان کرناٹک کے وزیر اعلیٰ بسوراج بومئی کا سامنے آیا ہے جس میں انھوں نے مہاراشٹر حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اگر ان کے وزراء نے کرناٹک کے بیلگاوی میں قدم رکھنے کی کوشش کی تو ان کے ...

منڈیا : مالا دھاری بھکتوں نے لگائے سری رنگا پٹن جامع مسجد کو ہنومان مندر بنانے کے نعرے - مسجد میں گھسنے کی کوشش پولیس نے کر دی ناکام  

زعفرانی جھنڈے اٹھائے ہوئے ہزاروں  مالا دھاری ہنومان بھکتوں کا جلوس 'سیکیرتھنا یاترا' کی شکل میں ہنومان مندر کی طرف جاتے ہوئے جب تاریخی سری رنگا پٹن جامع مسجد کے سامنے پہنچا تو نوجوان بھکتوں نے اچانک اشتعال انگیزی شروع کر دی اور جامع مسجد کو ہنومان مندر میں بدلنے کے نعرے لگانے ...

مرکزی حکومت کی طرف سے دلت، پسماندہ اور اقلیتی طلباء کا اسکالرشپ ختم کیا جانا انہیں تعلیمی حقوق سے بتدریج محروم کرنے کی حکمت عملی ہے: ایس ڈ ی پی آئی

سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا کرناٹک کے ریاستی صدر عبدالمجید نے اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں کہا ہے کہ مرکزی حکومت کی طرف سے تعلیمی سال 23۔2022سے ایس سی، ایس ٹی، پسماندہ طبقات، اور اقلیتی برادریوں سے تعلق رکھنے والے پہلی سے آٹھویں جماعت کے تمام طلباء کو کوئی اسکالرشپ ختم ...