حکومت کا رپورٹ کارڈ پارلیمان سے قبل آرایس ایس ایک کے سامنے پیش ہوتا ہے: اشوک گہلوت

Source: S.O. News Service | Published on 17th October 2019, 11:33 AM | ملکی خبریں |

ممبئی،17؍اکتوبر (ایس او نیوز؍ یو این آئی)  بی جے پی حکومت آرایس ایس کے اشارے پرکام کر رہی ہے۔ حکومت کا رپوریٹ کارڈ پارلیمنٹ میں پیش کئے جانے سے قبل آر ایس ایس سربراہ کے سامنے پیش کیا جاتا ہے۔ بی جے پی حکومت کے دور میں ملک کی جمہوریت و آئین پر خطرہ منڈلا رہا ہے، ووٹ کی طاقت کے استعمال سے جمہوریت کو بچانے کا یہی وقت ہے۔ یہ باتیں راجستھان کے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے بدھ کے روز کہیں۔ وہ یہاں راجیو گاندھی بھون میں میڈیا کے نمائندں سے بات کر رہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ کانگریس نے 70سال تک ملک میں جمہوریت کو قائم رکھا اور ملک کے ٹکڑے نہیں ہونے دیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نریندرمودی خود راشٹرواد کا مکھوٹا ڈال کرمخالف پارٹیوں کو ملک دشمن قرار دے رہے ہیں۔ نریندرمودی ملک کے فوجیوں کی بہادری اور قربانیوں کو نیز سائنسدانوں کی کامیابیوں کا سہرا اپنے سر باندھتے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اسمبلی انتخابات کی تشہیر میں بی جے پی حکومت اپنے مینی فیسٹو میں اپنے وعدوں کے بارے میں، اپنے منصوبوں کے بارے میں نیز معیشت کی بہتری کے بارے میں کیا اقدام کرے گی؟ اس کے بارے میں وہ کچھ نہیں بولتے ہیں، صرف جذباتی موضوعات پر بولتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی حکومت کی یہ روایت رہی ہے کہ وہ پرانی جذباتی باتوں کو اچھال کر انتخابات جیتتے آئی ہے۔

اس موقع پر اشوک گہلوت نے مزیدکہا کہ سپریم کورٹ، سی بی آئی، الیکشن کمیشن، یو پی ایس سی، سی اے جی جیسے دیگر آئینی ادارے خطرے میں آگئے ہیں۔ ہندوستان کی تاریخ میں ایسا پہلی بار ہوا کہ سپریم کورٹ کے جج حضرات باہر آکر پریس کانفرنس لئے اور بی جے پی حکومت کوملک کے لئے خطرہ قرار دیا۔

آر بی آئی، ای ڈی، سی بی آئی، آئی ٹی اوراین ایس ایس او جیسے اداروں کی آزادی کو چھین لیا گیا ہے۔ ان تمام اداروں کے استعمال سے حزبِ مخالف لیڈران کوٹارگیٹ کیاجارہا ہے، جوغیرآئینی، غیرجمہوری اورغیراخلاقی ہے۔ اس پریس کانفرنس میں ممبئی کانگریس کے صدر ایکناتھ گائیکواڑ، نائب صدر اور سابق ایم ایل اے چرن سنگھ سپرا، نائب صدر کنور سنگھ راجپوت موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی