ہندو پاک کی ممتاز شاعرہ، مترجم اور دانشور فہمیدہ ریاض انتقال کر گئیں

Source: S.O. News Service | By Staff Correspondent | Published on 22nd November 2018, 12:46 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

لاہور،22؍نومبر(ایس او نیوز؍ایجنسی) برِصغیرپاک وہند کی ممتاز شاعرہ، مترجم اور دانشور فہمیدہ ریاض 73 برس کی عمر میں لاہور میں انتقال کرگئیں۔

فہمیدہ ریاض 28 جولائی 1945 کو ہندوستان کے شہر میرٹھ میں پیدا ہوئیں اور ان کے والد ریاض الدین احمد ماہرِ تعلیم تھے۔ پاکستان بننے کے بعد ان کا خاندان سندھ منتقل ہوگیا اور انہوں نے سندھ میں ہی اپنی ابتدائی تعلیم حاصل کی اور یونیورسٹی تک کی ڈگری لی۔ اس کے بعد 1967 میں لندن چلی گئیں اور بی بی سی سے وابستہ ہوئیں۔

انہوں نے 15 سال کی عمر میں ایک نظم کہی جو احمد ندیم قاسمی کے جریدے  ’فنون‘ میں شائع ہوئی۔ سماج سے بغاوت اور ظلم کے خلاف جدوجہد ان کے مزاج کا حصہ رہے جس کی بنا پر صدر جنرل ضیا الحق کے دور میں ان پر ایک درجن سے زائد مقدمات  بنائے گئے ۔ ان کا پہلا شعری مجموعہ پتھر کی زبان بھی 1967 میں منظرِ عام پر آیا۔

فہمیدہ ریاض کی شاعری میں عورتوں کے حقوق اور ان کے مصائب کا تذکرہ ہے یہاں تک کہ انہوں نے عورت سے وابستہ جنسی رحجانات پر بھی لکھا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ وہ ایک ایسی شاعرہ کے طور پر مشہور ہوئیں جو جدید عہد میں مرد اور زن کی برابری کی شدید خواہاں ہیں۔

فہمیدہ ریاض پر جب ضیا الحق کے دور میں مقدمے قائم ہوئے تو انہوں نے خودساختہ جلاوطنی کے تحت ہندوستان میں رہائش اختیار کی اور 1988 میں ضیا الحق کے انتقال کے بعد پاکستان لوٹ آئیں۔ شاعری کے علاوہ انہوں نے نثر اور دیگر تراجم میں بھی اپنا اہم کردار ادا کیا۔

انہوں نے شیخ ایاز اور مولانا جلال الدین رومی کی مثنوی کے کئی تراجم بھی کئے۔ عمر کے آخری حصے میں انہوں نے نثری تخلیقات پر بھی کام کرنا شروع کردیا تھا۔ فہمیدہ نیشنل بک فاؤنڈیشن کی منیجنگ ڈائریکٹر بھی رہیں۔

آدمی کی زندگی، بہ خانہ آب و گل، کھلے دریچے سے، پتھر کی زبان، سب لعل وگہر، آدمی کی زندگی، بدن دریدہ اور خطِ مرکوز ان کی اہم تصانیف ہیں۔ 23 مارچ 2010 کو صدرِ پاکستان نے فہمیدہ ریاض کی خدمات کے اعتراف میں انہیں ستارہ امتیاز عطا کیا۔ اس کے علاوہ حکومتِ سندھ نے شیخ ایاز ایوارڈ اور ادب میں مزاحمت کے اعتراف کے طور پر انہیں ہیمے ہیلمن ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

آسام کے لوگوں کو این آر سی کو لے کر گھبرانے کی بالکل ضرورت نہیں: وزیر اعلی سرباند سونووال 

این آر سی میں مبینہ طور پر غلط نام شامل اور منسوخی کو لے کر بی جے پی کی طرف سے کئی گئی جائزہ کی مانگ کے درمیان حکومت نے حال ہی میں اشارہ دیا تھا کہ وہ اس پر قانون بنانے کا راستہ اختیار کر سکتی ہے،

طلاق ثلاثہ قانون کو جمعیۃعلماء ہند و دیگر مسلم جماعتوں نے سپریم کورٹ میں کیا چیلنج؛ عدالت عالیہ نے مرکز کو جاری کی نوٹس

جمعیۃ علماء ہند اور دیگر مسلم جماعتوں کی جانب سے طلاق ثلاثہ قانون کے خلاف داخل کردہ عرضداشتوں کو آج سپریم کورٹ آف انڈیا نے سماعت کے لئے  قبول کرتے ہوئے مرکزی سرکار کونوٹس جاری کیا ہے۔سپریم کورٹ آف انڈیا کی دو رکنی بینچ کے جسٹس وی این رمنا اور جسٹس اجئے رستوگی نے حال ہی میں ...

اے پی سی آر نے داخل کی انسداددہشت گردی قانون میں ترمیم کے خلاف سپریم کورٹ میں اپیل

مرکزی حکومت نے انسداد دہشت گردی قانون یو اے پی اے میں جو حالیہ ترمیم کی ہے اور کسی بھی فرد کو محض شبہات کی بنیاد پر دہشت گرد قرار دینے کے لئے تحقیقاتی ایجنسیوں کو جو کھلی چھوٹ دی ہے اسے چیلنج کرتے ہوئے ایسوسی ایشن فار  پروٹیکشن آف سوِل رائٹس (اے پی سی آر) نے سپریم کورٹ میں اپیل ...

چدمبرم کی گرفتاری مایوس کن:  ممتا بنرجی

مغربی بنگال کی وزیر اعلی ممتا بنرجی نے جمعرات کو کہا کہ پی چدمبرم کی گرفتاری مایوس کن ہے۔ساتھ ہی الزام لگایا کہ عدلیہ فریاد لگا رہی جمہوری نظام کی مدد کے لئے سامنے نہیں آ رہی ہے۔

مذاہب کے ذریعے حصولِ امن ممکن: جرمن صدر اشٹائن مائر

بین الاقوامی کانفرنس 'مذاہب برائے امن‘ کے دوران اپنے افتتاحی خطاب میں جرمن صدر اشٹائن مائر نے کہا، ’’مذہبی اعتقاد زبردست امکانات کے حامل ہو سکتے ہیں۔ ایک قوت جس سے کوئی فرد اپنی پوری زندگی کو جہت دے سکتا ہے۔

ملائشیا:ذاکر نائک نے متنازع بیان پر معافی مانگ لی

ملائشیا میں، متنازع اسلامی مبلغ ذاکر نائک پرعوامی طور پرتقریر کرنے پر پابندی عائد کردی گئی ہے۔ پولیس کے محکمہ مواصلات کے چیف اور سینئر اسسٹنٹ کمانڈر، داتوک اسماوتی احمد نے کہا، ہاں“ تمام پولیس دستوں کو ایسے احکامات دیئے گئے ہیں اور قومی سلامتی کے لئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے۔ اس ...