شام میں اسرائیلی بمباری میں حزب اللہ کے لیے ایران سے آئی رقوم کے ٹرکوں کو نشانہ بنایا گیا

Source: S.O. News Service | Published on 26th November 2020, 9:11 PM | خلیجی خبریں | عالمی خبریں |

دمشق،26نومبر(آئی این ایس انڈیا)شام میں العربیہ اور الحدث نیوز چینلوں کے خصوصی ذرائع نے تصدیق کی ہے کہ منگل کے روز لبنانی ملیشیا حزب اللہ کو لپیٹ میں لینے والی بم باری میں ایران سے آنے والی مالی رقوم کے ٹرکوں کو نشانہ بنایا گیا۔

ذرائع کے مطابق ایران نے یہ مالی رقوم ایرانی فضائی کمپنی فارس کے طیارے کے ذریعے دمشق بھیجی تھی۔ بعد ازاں رقوم کو حزب اللہ کے ٹرکوں میں رکھتے وقت اسرائیل نے ان پر بم باری کر دی۔

شام میں انسانی حقوق کے نگراں گروپ المرصد نے بدھ کے روز اعلان کیا تھا کہ شام میں اسرائیلی بم باری میں ایران کے ہمنوا 8 افراد ہلاک ہو گئے۔ المرصد کے ڈائریکٹر رامی عبدالرحمن کے مطابق ہلاک ہونے والے افراد غیر شامی باشندے ہیں تاہم ان کی شہریت کا تعین نہیں کیا جا سکا۔

اس سے قبل المرصد نے بتایا تھا کہ منگل اور بدھ کے درمیان نصف شب کے بعد اسرائیلی جنگی طیاروں نے دمشق اور قنیطرہ میں ایران کے زیر انتظام عسکری ٹھکانوں پر بم باری کی۔ یہ رواں سال کے دوران شامی اراضی پر اسرائیل کا 36 واں حملہ تھا۔

شام کی سرکاری خبر رساں ایجنسی SANA کے مطابق اسرائیلی فوج نے شام میں قنیطرہ کے جنوب میں جبل المانع کے علاقے میں فضائی حملے کیے۔

اسی طرح اسرائیلی فوج نے دمشق کے دیہی علاقے میں بھی دیگر فضائی حملے کیے۔ تاہم کارروائی میں ہلاکتوں اور زخمیوں کی تفصیلات کے بارے میں نہیں بتایا گیا۔

شام کے سرکاری ٹی وی نے ایک وڈیو کلپ نشر کیا تھا جس میں شام کے فضائی دفاعی نظام کو جبل المانع کے اطراف اسرائیلی فضائی حملوں کا راستہ روکتے ہوئے دکھایا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

روس کی اسرائیل کو شام میں تعاون کی پیش کش، امریکا سے نہ الجھنے کی یقین دہانی

روس نے اسرائیل پر زور دیا ہے کہ وہ شام میں اگر اپنی سلامتی کے لیے کوئی خطرہ محسوس کرے تو اس کے بارے میں ماسکو کو معلومات فراہم کرے۔ روس شام میں اسرائیل کے لیے خطرہ بننے والے اہداف سے خود نمٹنے کی کوشش کرے گا۔

ایران کے ساتھ مذاکرات میں خلیجی ممالک اور اسرائیل کو شامل کیا جائے گا: بلنکن

امریکا کے نو منتخب صدر جوبائیڈن کے نامزد وزیرخارجہ انتھونی بلنکن نے کہا کہ بائیڈن انتظامیہ ایران کو جوہری ہتھیار حاصل کرنے سے روکے گی۔ان کا کہنا ہے کہ ایران کے ساتھ کسی بھی نوعیت کے جوہری مذاکرات میں خلیجی ریاستوں اور اسرائیل کو شامل کیا جائے گا۔

حکومت مخالف ایرانی مذہبی عالم کا اسرائیل سے مصالحت کا مشورہ

ایران کے ایک سرکردہ مذہبی رہ نما اور حکومت پر سخت تنقید میں شہرت رکھنے والے آیت اللہ عبدالحمید معصومی تہرانی نے کہا ہے کہ اسرائیل کے ساتھ دشمنی رکھنا عقل اور منطق کے خلاف ہے۔ انہوں نے ایرانی حکومت سے زور دیا ہے کہ وہ اسرائیل کے ساتھ صلح کرے جیسا کہ بعض عرب ممالک نے کی ہے۔

جوہری معاہدے کے حوالے سے بائیڈن کی ٹیم اور ایران کے درمیان خفیہ بات چیت

منتخب امریکی صدر جو بائیڈن کی انتظامیہ کے ذمے داران نے جوہری معاہدے میں واپسی کے حوالے سے ایران کے ساتھ خاموشی سے بات چیت کا آغاز کر دیا ہے۔ تہران اور عالمی طاقتوں کے درمیان یہ سمجھوتا جولائی 2015ء میں طے پایا تھا۔ اسرائیلی نیوز نیٹ ورک "چینل 12" اور اسرائیلی اخبار "د ٹائمز آف ...