تین نو عمر سعودیوں کی پھانسی کو 10 سال قید کی سزا میں تبدیل کر دیا گیا

Source: S.O. News Service | Published on 8th February 2021, 6:26 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،8 فروری (آئی این ایس انڈیا)سعودہ عرب میں انسانی حقوق کمیشن کی طرف سے جاری ایک بیان میں‌ کہا گیا ہے کہ مملکت میں نئے عدالتی نظام کی تجدید کے بعد تین مجرموں کی سزائوں میں تخفیف کی گئی ہے۔ ان ملزمان کو 10 سال تک سزائیں دی گئی تھیں تاہم سزائوں میں تخفیف کے بعد انہیں آئندہ سال رہا کردیا جائے گا۔

انسانی حقوق کمیشن کے مطابق عدالت نے سزائے موت کے مجرم علی النمر کی سزائے موت قید کی سزا میں تبدیل کی گئی ہے۔ اسے 10 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی جو ملزم پہلے ہی پوری کرچکا ہے۔

انسانی حقوق کمیشن کے مطابق شاہی فرمان کے تحت مارچ 2020ء عدالتی اصلاحات کے نئے نظام کا اعلان کیا تھا جس میں نابالغ مجرموں کو دی گئی سزائے موت ختم کردی گئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ کے بعد 1 کروڑ افراد عمرہ ادا کر چکے ہیں : وزارت حج وعمرہ

سعودی وزارت حج و عمرہ کے اعلان کے مطابق محفوظ عمرہ ماڈل کے نفاذ اور عمرہ، نماز اور زیارت کی بتدریج واپسی کے بعد سے اب تک 1 کروڑ افراد کے لیے عمرے کی ادائیگی کو ممکن بنایا گیا۔ سال 1443 ہجری کے عمرہ سیزن کے آغاز کے ساتھ ہی مختلف ممالک کے لیے جاری عمرہ ویزوں کی تعداد 12 ہزار سے تجاوز کر ...

بھٹکل کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس؛ پروگرام میں "مرحوم زاہد رکن الدین ، ایک فرد ایک انجمن " کتاب کا بھی اجراء

بھٹکل مسلم کمیونٹی جدہ کا سالانہ اجلاس جمعرات مورخہ  26 اگست کو  جدہ کے گرین لینڈ  ہوٹل میں منعقد ہوا جس میں  جدہ جماعت سمیت بھٹکل مسلم خلیج کونسل کے سابق صدر مرحوم  سی اے زاہد رکن الدین صاحب کے  تعلق سے موصولہ تعزیتی قرار دادوں  اور تعزیتی خطوط پر مشتمل ایک کتاب "مرحوم زاہد ...