بی جے پی نے بنگال سے باہر کے غنڈوں کو بلا کر تشدد کو انجام دیا: ترنمول کانگریس

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 16th May 2019, 11:33 AM | ملکی خبریں |

نئی دہلی،16/مئی (ایس او نیوز/یو این آئی) ترنمول کانگریس نے بی جے پی کے صدر امت شاہ پر فرقہ وارانہ صف بندی کا الزام لگاتے ہوئے کولکاتا میں منگل کو ہوئے تشدد اور بنگال کے عظیم مصلح ایشور چندر ودیا ساگر کے مجسمہ کو توڑنے کے لئے بھگوا پارٹی کو ذمہ دار قرار دیا اور ان کے روڈ شو کو مثالی انتخابی ضابطہ کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

ترنمول کانگریس کے رہنما ڈیرک اوبرائن نے بدھ کو یہاں پریس کانفرنس میں کولکاتا میں منگل کو تشدد سے متعلق ویڈیو دکھا کر دعوی کیا کہ بی جے پی نے ریاست سے باہر سے غنڈوں کو بلاکر اس تشدد کو انجام دیا۔

انہوں نے کہا کہ جب شاہ کا روڈ شو ودیا ساگر کالج کے قریب سے گزرا تو طلبا نے سیاہ پرچم دکھائے جو ان کا جمہوری حق ہے۔ اس کے بعد بی جے پی کے غنڈوں نے تشدد شروع کردیا اور پتھراؤ بھی کیا اور بنگال کے عظیم مصلح ودیا ساگر کا مجسمہ توڑ دیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ بنگال کی تاریخ کا سب سے افسوسناک دن ہے جب ایسے شخص کے مجسمہ کو نقصان پہنچایا گیا جو ملک ایک عظیم فلسفی، ماہر تعلیم اور قوم پرستی کی علامت ہے۔

انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے بنگلہ ثقافت اور قدروں پر حملہ کیا ہے۔ شاہ اور ان کے لوگوں کو کیا معلوم کہ ودیاساگر کون ہے۔ ودیاساگر کو وکی پیڈیا سے نہیں جانا جاسکتا۔ وہ بنگال کے گھر گھر میں اور حرف تہجی کی کتابوں میں موجود ہیں اور ہر بنگالی بچپن سے ہی ان کو جانتے ہوئے بڑا ہوا ہے۔

ترنمول لیڈر نے کہا کہ شاہ اور ان کی پارٹی روز جھوٹ بولتی ہے۔ منگل کے تشدد کے بارے میں بھی وہ جھوٹ بول رہے ہیں۔ شاہ نے تو رابندر ناتھ ٹیگور کی جائے پیدائش ویر بھومی بتا دی۔ ان کو یہ بھی پتہ نہیں کہ ٹیگور کہاں پیدا ہوئے تھے۔

انہوں نے الزام لگایا کہ سی آر پی ایف کے لوگ بھی بی جے پی سے ملے ہوئے ہیں اور ووٹنگ میں ان کی مدد کر رہے ہیں۔ انہوں نے الزام کے ثبوت میں ایک تصویر بھی دکھائی جس میں نیم فوجی دستے کا ایک جوان بی جے پی کارکنوں اور بی جے پی ریاستی صدر کے ساتھ ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ پہلے تین مرتبہ اس کی شکایت کرچکے ہیں۔

پریس کانفرنس میں موجود ترنمول کانگریس کے لیڈر اور راجیہ سبھ رکن منیش گپتا نے الزام لگایا کہ شاہ کے رود شو میں پوسٹر اور بڑے بڑے کٹ آوٹ لگانے کی اجازات الیکشن کمیشن نے کیوں دی اور اس شو میں مذہبی نعرے لگائے گئے۔ یہ تو مثالی ضابطہ اخلاق کی سراسر خلاف ورزی ہے۔ انہوں نے الیکشن کمیشن کے ایک نائب کمشنر پر الیکشن کے دوران پولس کے کاموں میں مداخلت کرنے کا بھی الزام لگایا۔

ایک نظر اس پر بھی

گڑگاوں میں مسلم نوجوان سے کہا گیا : اس علاقہ میں ٹوپی پہن کر آنا منع ہے ، جے شری رام نہیں کہنے پر مار پیٹ

رمضان میں دیررات مسجدوں میں تراویح کی نماز پڑھی جاتی ہے ۔ بہار کے بیگوسرائے کا رہنے والا برکت عالم بھی اتوار کی رات صدر بازار گروگرام کی جامع مسجد سے تراویح کی نماز پڑھ کر لوٹ رہا تھا ۔ برکت کا کہنا ہے کہ اسی دوران ایک بائیک پر آئے چار نوجوان اور وہاں سے پیدل گزر رہے دو دیگر ...

لوک سبھا انتخابات میں کانگریس کی شکست کے بعد،ایم پی کے سی ایم کمل ناتھ نے کی استعفیٰ کی پیشکش

 وزیر اعظم نریندر مودی کی لہر کی وجہ سے بھارتیہ جنتا پارٹی نے لوک سبھا انتخابات میں مدھیہ پردیش کی کل 29 سیٹوں میں سے 28 سیٹ پر قبضہ کر کے تاریخی جیت درج کی ہے، جبکہ کانگریس صرف ایک سیٹ چھندواڑہ پر ہی محدود رہ گئی۔

مودی30؍مئی کو وزیراعظم کے عہدے کا حلف لیں گے

نریندرمودی 30مئی کو وزیراعظم کے عہدے کا حلف لیں گے۔ان کے ساتھ مرکزی وزارتی کونسل کے ارکان بھی حلف لیں گے۔راشٹر پتی بھون کے مطابق صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند 30مئی کو شام 7بجے راشٹر پتی بھون میں منعقد ہونے والی تقریب میں مودی اور وزارتی کونسل میں ان کے رفقا کو حلف دلائیں گے۔