کاروارسرکاری پی یوکالج میں لکچرر کی جنسی کرتوت پر مشتعل طالبہ نے لیکچرر کی کی چپل سے دھلائی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 5th March 2021, 5:34 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کاروار:4؍مارچ  (ایس اؤ نیوز)کاروار کی سرکاری پی یوکالج کے ایک لکچرر  کو اپنی ہی کالج کی طالبہ کے ہاتھوں چپل سے مارکھانی پڑی ، یہ واقعہ بدھ کو پیش آیا۔ بتایا گیا ہے کہ متعلقہ لیکچرر نے اُس طالبہ کے  ساتھ جنسی ہراسانی  کی تھی  جس پر ناراض  طالبہ نے  کالج پرنسپال اور دیگر عملے کے سامنے ہی متعلقہ لکچرر کی  چپل سے دھلائی کردی۔

کالج لکچرر کی جنسی حرکات سے بیزار کالج طلبا و عملےنے لکچرر کے تبادلے کی آواز اٹھاتے ہوئے فیصلہ لیاگیا کہ  ودھان پریشد کے اسپیکر بسوراج ہورٹی کو شکایت سونپ کر تبادلہ کیا جائے۔

واقعہ کیا ہے؟:قریب چار روزپہلے کالج میں یہ واقعہ پیش آیا ہے۔ طالبہ حسب معمول روزانہ کی طرح کالج میں پیدل جارہی تھی تو متعلقہ لکچرر نے جان بوجھ کر ٹکر ماری ہے۔ طالبہ  اچانک ٹکر ہوئی ہوگی سمجھ کر خاموش رہی ۔ اس کی تھوڑی دیر بعد متعلقہ لکچرر نے اسی طالبہ کو کلاس روم بلا بھیجا تو کلاس روم گئی۔ وہاں لکچرر بڑی بے شرمی کے ساتھ طالبہ کے جسم کو چھونا شروع کیاتوطالبہ  لکچرر کی اس کرتوت سے حیرت میں پڑ گئی ، لیکن لکچرر مزید آگے بڑھاتو طالبہ گھبرا کر چیخ پکار کرتےہوئےوہاں سے بھاگ  نکلی ۔ سہمی ہوئی طالبہ نے اپنے سابق استاد سے رابطہ کرتےہوئے خوف کی حالت میں  اپنے ساتھ لکچرر کے نازیبا سلوک کا ذکر کیا۔ سابق استاد نے طالبہ کو ہمت سے کام لینے کی تلقین کرتےہوئے اسی کالج کے ایک لکچرر کو واقعہ کی تفصیل بتائی ہے۔ کالج کے لکچرر نے واقعہ کی جانکاری ملتے ہی جنسی ہراسانی کئے لکچرر کے پاس پہنچ کر کہاکہ طالبہ سے معافی مانگیں۔ لیکن لکچرر نے کوئی پراوہ ہی نہیں کی ۔ اس کے بعد طالبہ کی طرف سے پرنسپال کے سامنے شکایت پیش کی گئی ۔ منگل کو پرنسپال کے چیمبر میں سبھی کے سامنے طالبہ نے لکچرر کو چپل سےمارتے ہوئے سبق سکھایا ۔ اس کے بعد لکچرر نے معافی لکھ کر دیاہے۔

واقعہ کی جانکاری پاتے ہی کالج کے طلبا وطالبات نے بھی لکچرر کو کافی کچھ سنایا ہے۔ اسی دوران لکچرر کے خاندان والےکالج پہنچ کر پرنسپال ، اساتذہ اور طلبا سے ہمدردی کی اپیل کی تو طالبہ نے کہاکہ صرف آپ کے گھر والوں کی وجہ سے آج بچ گئےہیں اور تمہیں معطل کرنےکے بجائے تبادلہ کا فیصلہ لینے کی بات کہی۔

ایک نظر اس پر بھی

مینگلور کے قریب کڈبا میں دو نوجوان ندی میں ڈوب کر جاں بحق

مینگلور سے قریب  85 کلو میٹر دور کڈبا تعلقہ کے اِچیلم پانڈے کی ایک ندی میں غرق ہوکر دو نوجوان جاں بحق ہوگئے جن کی نعشیں ندی سے برآمد کرلی گئی ہیں۔ حادثہ پیر کی شام کو پیش آیا جب یہ دونوں ندی میں نہانے کےلئے اُترے تھے۔

بھٹکل: ریاست میں کورونا کے بڑھتے معاملات سےپریشان طلبہ نے پیر سے شروع ہونے والے امتحانات منسوخ کرنے ٹوئیٹر پر چلائی مہم

کورونا کی دوسری لہر میں  بڑھتے کیسس کے دوران ایک طرف  میٹرک اور سکینڈ پی یوسی کے امتحانات ملتوی اور منسوخ کئے جارہےہیں تو وہیں دوسری طرف ویشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے تحت آنے والی کالجس میں کل  پیر سے فرسٹ سیمسٹر کے امتحانات شروع ہورہےہیں۔

بھٹکل میں ماسک نہ پہننے والوں پر کاروائی؛ صبح سے دوپہر تک 68 لوگوں پر عائد کیا گیا جرمانہ؛ باہر سے بھٹکل آنے والوں پر رکھی جارہی ہے نگاہ

بھٹکل ٹاون میونسپالٹی اور جالی پٹن پنچایت کے آفسران نے  ماسک نہ پہننے والوں کے خلاف آج اتوار کو مشترکہ مہم چلاتے ہوئے  68 لوگوں سے 6800 روپیہ جرمانہ وصول کیا ہے۔

سرسی میں آتی کرم ہوراٹا سمیتی کی جانب سے منظوری حق قانون کے متعلق ورکشاپ

فاریسٹ حقوق قانون کی منظوری کی  متعینہ مدت کے اندر منظوری کارروائی کو انجام دیا جائے۔ آج عوامی نمائندوں میں حوصلہ کی کمی کی وجہ سے فاریسٹ حقوق قانون نافذ نہیں ہورہاہے۔ عوامی نمائندے صرف انتخابات کے دوران فاریسٹ کے اتی کرم داروں کے مسائل پر بات کرتے ہیں انتخابات ختم ہوتے ہی ...

 کیا شمالی کینرا میں کانگریس پارٹی کی اندرونی گروہ بندی ختم ہوگئی ؟

ضلع شمالی کینرا کو ایک زمانہ میں پورری ریاست کے اندر کانگریس کا سب سے بڑا گڑھ مانا جاتا تھا، لیکن آج ضلع میں کانگریس پارٹی کا وجود ہی ختم ہوتا نظر آرہا ہے، کیونکہ ضلع کی چھ اسمبلی سیٹوں میں سے صرف ہلیال ڈانڈیلی حلقہ چھوڑیں تو بقیہ پانچوں سیٹوں کے علاوہ پارلیمان کی ایک سیٹ پر بی ...

مینگلور کے قریب کڈبا میں دو نوجوان ندی میں ڈوب کر جاں بحق

مینگلور سے قریب  85 کلو میٹر دور کڈبا تعلقہ کے اِچیلم پانڈے کی ایک ندی میں غرق ہوکر دو نوجوان جاں بحق ہوگئے جن کی نعشیں ندی سے برآمد کرلی گئی ہیں۔ حادثہ پیر کی شام کو پیش آیا جب یہ دونوں ندی میں نہانے کےلئے اُترے تھے۔

مدھیہ پردیش میں کووڈ کا قہر، 30 اپریل تک کورونا کرفیو کا نفاذ

مدھیہ پردیش میں حکومت کی تمام کوششوں کے باوجود کورونا کا قہرجاری ہے۔ ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد جہاں اڑسٹھ ہزار کو تجاوز کر گئی ہیں وہیں پچھلے چوبیس گھنٹےمیں ریاست میں کورونا کے بارہ ہزار دو سو اڑتالیس نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔